پیر کے روز بڑا سیاسی تہلکہ : عمران حکومت نے کنگ میکر چوہدری برادران پر بڑی بجلی گرا دی

لاہور (ویب ڈیسک) عمران حکومت نے کنگ میکر چوہدری برادران پر بڑی بجلی گرا دی۔ تحریک انصاف اور اتحادیوں میں ناراضگی بڑھنے لگی، حکومتی اتحادیوں کا خیال ہے کہ بعض معاملات میں اب اتحادیوں کے بجائے اپوزیشن کو زیادہ اعتماد میں لیا جانے لگا ہے۔ مشاورت بھی اتحادیوں سے کم اور اپوزیشن سے زیادہ کی جاتی ہے ۔

ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ق کے مونس الٰہی کو وفاقی وزیر بنانے سے انکار کیا ہے تب سے ہی مسلم لیگ ق کی ناراضی ختم ہونے کی بجائے بڑھتی ہی جا رہی ہے ۔ اس حوالے سے جب مسلم لیگ ق پنجاب کے جنرل سیکرٹری کامل علی آغا سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے نجی اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تحریک انصاف کی قیادت سے حکومتی معالات میں مسلم لیگ ق کونہ تو اعتماد میں لیا جاتا ہے اور نہ ہی کسی قسم کی مشاورت کی جاتی ہے اس وقت یہ تعلقات خطرناک اور تشویشن ناک ہو جائیں گے جب ہم یہ کہہ دیں گے کہ اب ہم اس تنخواہ پر کام نہیں کرنا چاہتے ۔ اس سے قبل گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور سے مسلم لیگ ق کےرہنما چوہدری مونس الٰہی نے ملاقات کی ہے۔ملاقات کے دوران گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور اور چوہدری مونس الٰہی نے دونوں جماعتوں کے تعلقات سمیت دیگر امور پر بات چیت کی۔ اس موقع پر گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ حکومت اور اتحادی ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے ہیں، اپوزیشن ہر روز حکومت کے خاتمے کا خواب دیکھتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم ہر سطح پر اتحادیوں کو ساتھ لے کر چلنے کی پالیسی پر گامزن ہیں، احتساب کے معاملے پر کسی قسم کے سمجھوتے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ گورنر پنجاب کا یہ بھی کہنا ہے کہ حکومت اور ہم مل کر ملک کو مسائل سے نجات دلائیں گے، ہم عوام کی خدمت پر یقین رکھتے ہیں اور حکومت کے ساتھ ہیں۔