Categories
پاکستان

نواز شریف سے ملاقات کے بعد عدنان صدیقی پی ٹی آئی “ٹائیگرز “کے ہتھے چڑھ گئے

کراچی(ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کے بعد سوشل میڈیا پر عدنان صدیقی کا نام پاکستان میں ٹاپ ٹرینڈ میں سے ایک ہے۔ پاکستان میں حالیہ دنوں میں جاری سیاسی ہلچل کے دوران جہاں سیاسی کارکنان اور عام شہری متحرک نظر آئے وہیں ملک کی شوبز انڈسٹری کی شخصیات بھی سیاست میں دلچسپی لیتی نظر آرہی ہیں۔ تاہم

جہاں زیادہ تر شوبز شخصیات عمران خان ساتھ دیتی نظر آرہی ہیں وہیں کچھ لوگوں کا جُھکاؤ دیگر جماعتوں خاص کر ن لیگ کی جانب ہے۔ گزشتہ روز سے سوشل میڈیا پر معروف اداکار عدنان صدیقی اور سابق وزیرِاعظم پاکستان نواز شریف کی لندن میں ملاقات کی ایک تصویر گردش کر رہی ہے جس پر سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے دلچسپ تبصرے سامنے آرہے ہیں۔ اس ملاقات کے بعد سوشل میڈیا پر عدنان صدیقی کا نام پاکستان میں ٹاپ ٹرینڈ میں سے ایک ہے۔ اسی تصویر کو سیٹھ عبداللہ نامی صارف نے بھی شیئر کیا اور لکھا کہ ’ان میں سے ایک عظیم اداکار ہے اور دوسرے عدنان صدیقی۔‘ ایک اور ٹوئٹر صارف نے ہمایوں سعید اور عدنان صدیقی کے مشہور ڈرامے ’میرے پاس تم ہو‘ کا ایک کلپ شیئر کیا اور پی ٹی آئی کے حامیوں کا ری ایکشن مزاح کے طور پر ظاہر کرنے کی کوشش کی۔ اس ویڈیو میں ہمایوں سعید عدنان صدیقی کو تھپڑ مار رہے تھے۔ جبکہ ملاقات کے حوالے سے عدنان صدیقی کا کہنا ہے کہ ’میٹنگ بہت اچھی رہی، میں اپنی فلم کے لئے آیا تھا، ادھر ہم اپنی فلم کی پروموشن کررہے ہیں تو نواز شریف کو مدعو کرنے کے لیے آیا تھا کہ ہماری فلم آکر دیکھیے، ہم نے بڑی محنت کی ہے‘۔عدنان صدیقی کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف نے انہیں بتایا کہ ’ہم آپ کی برادری کے لیے بھی بہت کچھ سوچ رہے ہیں جبکہ ملاقات میں فلم پالیسی کے حوالے سے بھی گفتگو ہوئی‘۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی نے غیر ملکی فنڈنگ تسلیم کر لی!بڑا دعویٰ سامنے آگیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی رکن اکبر ایس بابر کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے وکیل نے غیر ملکی کمپنیوں کی فنڈنگ کو تسلیم کیا۔ اسلام آباد میں الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اکبر ایس بابر نے کہا کہ انور منصور نے تسلیم کیا کہ اگر کوئی بےقاعدگی ہوئی تو تحریک

انصاف ذمہ دار نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ قانون کہتا ہے کہ ڈونیشنز صرف انفرادی طور پر لی جاسکتی ہے، انور منصور نے تسلیم کیا غیر ملکی کمپنیوں سے فنڈنگ ہوئی۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ خوش آئند بات یہ ہے کہ انور منصور نے کہا میرے دلائل مکمل ہوگئے، کل فنانس کے لوگ تفصیلات دیں گے، ان شاء اللّٰہ ہماری تفصیلات ایک دن میں مکمل ہوجائینگی۔ اکبر ایس بابر نے کہا کہ سابق وزیر اعظم عمران خان احتجاج کے ذریعے دباؤ ڈال کر مرضی کا فیصلہ چاہتے ہیں۔ حکمراں جماعت پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے منحرف رکن اکبر ایس بابر کا کہنا ہے کہ غیر ملکی فنڈنگ کیس ایک میگا فنڈنگ اسکینڈل ہے، یہ افراد استعفیٰ دیں، ان کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔ اکبر ایس بابر نے اپنی پریس کانفرنس کے دوران کہا ہے کہ عمران خان کے پاس اب کوئی اخلاقی جواز نہیں وزیر اعظم رہنے کا، سات سال سے پی ٹی آئی غیر ملکی فنڈنگ کیس چل رہا ہے، اسٹیٹ بینک سے پی ٹی آئی کا ریکارڈ اسکروٹنی کمیٹی کے پاس آیا، اسٹیٹ بینک ریکارڈ پہلے ہم سے خفیہ رکھا گیا، اسکروٹنی کمیٹی کی رپورٹ پر پی ٹی آئی نے جواب دینے میں ڈھائی ماہ لگا دیئے۔ اکبر ایس بابر نے کہا کہ مارچ 15 کو پی ٹی آئی نے جواب الیکشن کمیشن کو جمع کرایا، پی ٹی آئی نے کہا کہ اکبر ایس بابر کو ہمارا جواب نہ دیا جائے، اسکروٹنی کمیٹی کی رپورٹ پر پی ٹی آئی نے جواب دینے میں ڈھائی ماہ لگا دیئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی نے اسٹیٹ بینک کے ذریعے آئے 11 اکاونٹس سے اظہار لاتعلقی کی، پی ٹی آئی نے کہا کہ یہ 11 اکاونٹ جو اسٹیٹ بینک سے آئے ہیں وہ نامعلوم ہیں۔

اکبر ایس بابر نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی نے کہا کہ یہ 11 اکاؤنٹس غیرقانونی انداز سے کھولے گئے، 23 ملین روپے رقم ان اکاؤنٹس میں تھی، یہ اکاؤنٹس کن لوگوں نے کھولے؟ یہ اکاونٹس اسد قیصر، شاہ فرمان نے کھولے، یہ اکاونٹس احسن رشید، محمود رشید، سیما ضیاء، جہانگیر رحمٰن نے کھولے۔ اکبر ایس بابر نے پریس کانفرنس کے دوران کہا یہ اکاونٹس نعیم الحق مرحوم ، ظفر الحق نے کھولے، ان لوگوں نےجو اکاؤنٹس کھولے ان سے پی ٹی آئی نے لاتعلقی ظاہر کر دی ہے، پی ٹی آئی نےکہا ان اکاونٹس میں جو پیسہ، آیا پی ٹی آئی اس کی جوابدہ نہیں، پی ٹی آئی قیادت نے یہ جواب جمع کرا کے اپنی لیڈر شپ پر فرد جرم عائد کر دیا ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن ان افراد کو نوٹس جاری کرے، ان سے جواب طلبی ہونی چاہیے، اسد قیصر، شاہ فرمان، عمران اسماعیل پر پارٹی نے الزام لگایا ہے۔

Categories
پاکستان

ابتک کی سب سے بڑی خبر! پی ٹی آئی منحرف ارکان کیخلاف آج فیصلہ محفوظ ہونے کا امکان

اسلام آباد(ویب ڈیسک) تحریک انصاف کے 25 منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کیخلاف ریفرنسز پر آج فیصلہ محفوظ ہونےکا امکان ہے۔ تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں تحریک انصاف کے 25 منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کیخلاف ریفرنسز کی سماعت آج پھر ہوگی۔ چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ سماعت کرے گا ، سماعت میں پی ٹی آئی اور

منحرف ارکان کے وکلا آج حتمی دلائل دیں گے۔ وکلا کے دلائل کے بعد منحرف ارکان کیخلاف ریفرنسز پر فیصلہ محفوظ ہونے کا امکان ہے، الیکشن کمیشن نے ریفرنسزپر20 مئی تک فیصلہ کرنا ہے۔ گذشتہ روز الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی کے 25 منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کیس کی سماعت کے دوران پی ٹی آئی نے بیان حلفی اور جواب الجواب کی دستخط شدہ کاپی کمیشن کو پیش کی تھی۔ منحرف اراکین کے وکلا کا موقف تھا کہ آرٹیکل 63 اے کے تحت پارلیمانی پارٹی ارکان کو ہدایات جاری کرتی ہے اور پارٹی پالیسی جاری نہ کرنے پر آرٹیکل 63 اے کا اطلاق نہیں ہوتا۔ یاد رہے گذشتہ ہفتے الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پی ٹی آئی کے منحرف ارکان قومی اسمبلی کے خلاف نا اہلی ریفرنس مسترد کردیا تھا۔ فیصلے میں کہا گیا تھا کہ منحرف اراکین کے حوالے سے ٹھوس شواہد نہیں دیے جاسکے اور آرٹیکل 63 اے کے تحت ریفرنس ثابت نہیں کیا جا سکا۔دوسری جانب سابق وفاقی وزیراطلاعات اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پہلے الیکشن کی تاریخ کا اعلان پھر انتخابی اصلاحات پر بات ہوگی۔نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے پہلے الیکشن کی تاریخ کا اعلان کیا جائے، الیکشن کی تاریخ کا اعلان ہوگا تو پھر انتخابی اصلاحات پر بات ہوگی، انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی تبدیلی پر بھی بات ہوگی، اس الیکشن کمیشن کے تحت الیکشن نہیں ہوسکتے، الیکشن کمیشن ایسا ہونا چاہیے کہ کسی کو بھی نتائج پر تحفظات نہ ہوں، نظر آرہا ہے چیف الیکشن کمیشن کا طرز عمل بہت جانبدار ہے، موجودہ الیکشن کمشنر کو تبدیل کرنا ہوگا، موجودہ چیف الیکشن کمشنر نے اپنے عمل سے ثابت کیا وہ غلط چوائس تھے، الیکشن کمیشن ڈھونڈ رہا ہے کہ لوٹوں کو تحفظ کیسے دینا ہے۔ فواد چوہدری نے کہا کہ الیکشن تو کروانے ہیں،

فیصلہ کریں کم نقصان کروا کر کروانے ہیں یا زیادہ، ہم نے کوئی بات نہیں کرنی، واحد بات الیکشن کی تاریخ پر ہونی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاست میں اسٹیبلشمنٹ کا غیر رسمی کردار بہت بڑا ہے، الیکشن کرانے میں تمام اداروں کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے، فوری الیکشن نہ ہوئے تو پاکستان معاشی گرداب میں پھنس جائے گا، 35 دن میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر 16 روپے کم ہوئی، سیاسی بحران کے دوران معیشت بے یارو مددگار ہوگئی، لوگوں کو اعتماد نہیں، پیسہ نکال کر ڈالر میں انویسٹ کررہے ہیں۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی رہنماؤں کی گرفتاریاں،عمران خان نے پورے ملک میں احتجاج کی کال دیدی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے مسیحی برادری کے احتجاج اور عثمان ڈار کی گرفتاری کے بعد جلسے کا مقام سی ٹی آئی سے تبدیل کرتے ہوئے وی آئی پی گراونڈ کر دیا گیاہے، بلااجازت جلسہ کرنے پر پولیس کی جانب سے آپریشن کیا گیا جس میں عثمان ڈار سمیت متعدد پی ٹی آئی کارکنان کو حراست میں لیا گیا،

صورتحال کو دیکھتے ہوئے اب عمران خان خود بھی میدان میں آ گئے ہیں اور انہوں نے ہر صورت سیالکوٹ جانے کا اعلان کر دیاہے، تفصیلات کے مطابق عمران خان نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہماری حکومت نےکبھی انکا کوئی جلسہ،دھرنا یا ریلی وغیرہ نہیں روکی کیونکہ ہم جمہوریت سےمخلص ہیں۔ میں آج سیالکوٹ میں ہوں گا اور اپنےتمام لوگوں کو ہدایات دے رہا ہوں کہ باہرنکلیں اور بعدازنمازِعشاءاپنےشہروں/علاقوں میں اس فسطائی امپورٹڈحکومت کیخلاف احتجاج کریں۔ ‘‘عمران خان کا مزید کا کہناتھا کہ ’’جب بھی اقتدار ملتاہے،SCپر چڑھائی،ماڈل ٹاؤن میں قتلِ عام،ججوں کورشوت دینےاورنواز شریف کیجانب سےخودکوامیر المؤمنین قراردیےجانےجیسی حرکتیں کرتےہیں۔اپوزیشن میں جمہوریت کامنفی استعمال،حکومت میں جمہوری اقدارکا جنازہ نکالتےہیں۔مگرلوگ اب ان کیخلاف کھڑےہوچکے ہیں۔‘‘ سابق وزیراعظم نے ٹویٹر پر جاری پیغام میں کہا کہ ’’کوئی شک میں نہ رہے،میں آج سیالکوٹ جاؤں گا۔امپورٹڈ حکومت نےہماری قیادت اورکارکنان کیخلاف سیالکوٹ میں جو کچھ کیاوہ اشتعال انگیزضرورہےمگرغیرمتوقع ہرگزنہیں۔ ضمانت پررہامجرموں کےاس ٹولے اورلندن میں مقیم ان کےعدالت سےسزا یافتہ قائدنےہمیشہ اپنےمخالفین کیخلاف فسطائی حربےاستعمال کئےہیں۔ادھر سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی سید نیر بخاری نے عمران خان کو فوری طور پر سرکاری تحویل میں لینے کا مطالبہ کردیا۔ تفصیلات کے مطابق سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی سید نیر بخاری نے سیالکوٹ میں صورتحال پر اپنے بیان میں کہا ہے عمران خان کوفوری طور پر سرکاری تحویل میں لیا جائے۔ سید نیر بخاری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے آئینی ہتھیار سےاس سےنجات حاصل کی گئی اور عمران خان نے ماورائے آئین اقدامات کی کوششیں کیں۔ سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی نے مزید کہا کہ عمرانی حکومت سے نجات کیلئے آئینی تبدیلی پر سمجھ داری کا مظاہرہ کیا۔ خیال رہے وفاقی حکومت نے تحریک انصاف کے 70ْ0 رہنماؤں اور کارکنوں کی فہرست تیار کرلی، جنہیں سابق وزیر اعظم عمران خان کے اعلان کردہ لانگ مارچ سے قبل ملک بھر سے گرفتار کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ فہرست میں زیادہ پی ٹی آئی کے کچھ سرکردہ رہنما اور کارکنان بھی شامل ہیں۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کا سیالکوٹ میں ہر صورت جلسہ کرنے کا اعلان، سی ٹی آئی گراؤنڈ گراونڈ کے بعد دوسری جگہ جلسے کی تیاریاں شروع کر دی

سیالکوٹ(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف نے سیالکوٹ میں جلسہ گاہ کا مقام تبدیل کر لیا۔ تحریک انصاف نے مسیحی برادری کے احتجاج کے باعث جلسے کا مقام تبدیل کیا۔ پی ٹی آئی پنجاب کے صدر شفقت محمود نے سینیٹر اعجاز چوہدری کے ہمراہ سیالکوٹ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جلسہ گاہ کا مقام تبدیل کرنے کا اعلان کیا۔ شفقت محمود کا

کہنا تھا کہ جلسے کرنا ہمارا جمہوری حق ہے لیکن ہمارے پرامن لوگوں پر تشدد کیا گیا، خواجہ آصف کے کہنے پر انتظامیہ نے تشدد کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جلسہ ہو گا اور ہر صورت ہو گا، آج سیالکوٹ میں وی آئی پی کرکٹ گراؤنڈ میں جلسہ ہو گا۔ پی ٹی آئی پنجاب کے صدر کا کہنا تھا کہ ڈپٹی کمشنر کو کہا ہے عثمان ڈار اور دیگر کو رہا کیا جائے۔ یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے آج سیالکوٹ کے سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسے کا اعلان کیا تھا تاہم ضلعی انتظامیہ نے مسیحی برادری کے احتجاج کے باعث انہیں جلسے کی اجازت نہیں دی تھی۔ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے اجازت نہ ملنے کے باوجود تحریک انصاف کی جانب سے سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسے کی تیاریاں جاری تھیں جس پر پولیس نے کریک ڈاؤن کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار اور علی اسجد ملہی سمیت متعدد افراد کو حراست میں لے لیا تھا۔ دوسری جانب وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ سیالکوٹ میں سی ٹی آئی گراؤنڈ پر جلسے کی اجازت نہیں دیں گے۔ پاکستان تحریک انصاف نے آج سیالکوٹ میں سی ٹی آئی گراؤنڈ پر جلسے کا اعلان کر رکھا ہے تاہم مسیحی برادری کے تحفظات کی وجہ سے ضلعی انتظامیہ نے تحریک انصاف کو اس گراؤنڈ پر جلسے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا۔ ضلعی انتظامیہ کے انکار کے باوجود تحریک انصاف کی جانب سے سی ٹی آئی گراؤنڈ پر جلسے کی تیاریاں جاری تھیں کہ اسی اثناء میں پولیس نے کریک ڈاؤن کرتے ہوئے شیلنگ کی اور جلسہ گاہ سے سامان ہٹا دیا۔ اس حوالے سے لاہور میں ایف آئی اے عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ سیالکوٹ میں سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسہ کرنے پر اقلیتی برادری کو اعتراض ہے،

سی ٹی آئی گراؤنڈ پر جلسے کی اجازت نہیں دیں گے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے تحریک انصاف کو پیشکش کی کہ پی ٹی آئی سیالکوٹ میں کسی اور مناسب جگہ پر جلسہ کرلے ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہے۔ دوسری جانب مسلم لیگ ن کے رہنما عطا تارڑ نے بھی اپنے بیان میں کہا کہ پی ٹی آئی سی ٹی آئی گراؤنڈ پر جلسہ کرنا چاہتی ہے جس پر مسیحی برادری کو تحفظات ہیں، سیالکوٹ میں بہت سے دوسرے گراؤنڈ میں پی ٹی آئی کو پیشکش کرتے ہیں کہ وہاں جلسہ کر لے۔

Categories
پاکستان

مارچ سے قبل پی ٹی آئی کے 700 رہنماؤں کو گرفتار کرنے کا منصوبہ،بڑا انکشاف سامنے آگیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ن لیگی حکومت نے لانگ مارچ سے قبل تحریک انصاف کے 700 رہنماؤں کو گرفتار کرنے کا منصوبہ تیار کرلیا۔نجی نیوز چینل نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کرتے ہوئے کہا ہے کہ تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے تحریک انصاف کے 70ْ0 رہنماؤں اور کارکنوں کی فہرست تیار کرلی، جنہیں سابق وزیر اعظم عمران خان کے اعلان کردہ

لانگ مارچ سے قبل ملک بھر سے گرفتار کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ فہرست میں زیادہ پی ٹی آئی کے کچھ سرکردہ رہنما اور کارکنان بھی شامل ہیں۔ ذرائع نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے 700 افراد میں تین سو پچاس پنجاب، دو سو خیبر پختونخوا اور ڈیڑھ سو سندھ سے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے افراد کی فہرست پولیس کے حوالے کردی گئی ہے۔ واضح رہے کہ وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے حال ہی میں پی ٹی آئی قیادت کو دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ میں چاہوں تو عمران خان اسلام آباد میں 20 ہزار کیا 20 افراد کو بھی اکٹھا نہیں کر سکیں گے۔ وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ مارچ کے حوالے سے نرمی یا سختی کرنا میرا اختیار نہیں ، پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے حوالے سے پالیسی کابینہ بنائے گی۔ادھر چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے سیالکوٹ کی پولیس گردی پر ہنگامی اجلاس طلب کرلیا۔ سیالکوٹ کی صورتحال پر تحریک انصاف کا ہنگامی اجلاس طلب کرلیا گیا، عمران خان کی زیر صدارت اجلاس بنی گالہ میں ہو گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت اجلاس میں شریک ہوگی،اجلاس میں ملکی سیاسی اور سیالکوٹ کی صورتحال کا جائزہ لیا جائےگا۔ عمران خان موجودہ صورتحال پر مرکزی قیادت سے مشاورت کریں گے اور آئندہ کی حکمت عملی پر غور کیا جائے گا۔ اجلاس میں سیالکوٹ اور دیگر شہروں میں جلسوں کی حکمت عملی بھی طے کی جائے گی۔ یاد رہے آج صبح پولیس نے سیالکوٹ میں پی ٹی آئی کی جلسے کی تیاری میں مصروف کارکنوں پر دھاوا بول دیا اور اسٹیج سے کرسیاں سمیت دیگرسامان اٹھا کر پھینک دیا۔ تحریک انصاف کے کارکنوں سے پنڈال خالی کرانے کیلئے پولیس کی آنسو گیس اورلاٹھی چارج کیا، جس کے باعث کئی کارکن زخمی ہوگئے۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کے سخت مخالف صحافی کو اہم عہدہ دے دیا گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیراعظم شہباز شریف نے سینئر صحافی سید فہد حسین کو معاون خصوصی مقرر کرنے کی منظوری دیدی. تفصیلات کے مطابق فہد حسین کی بطور معاون خصوصی وزیراعظم تقرری کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے۔ ان کا عہدہ وفاقی وزیر کے برابر ہوگا،وزیر اعظم کی جانب سے فہد حسین کو جلد قلمدان سونپا جائے گا ۔

واضح رہے کہ گزشتہ حکومت میں فہد حسین بطور صحافی پی ٹی آئی اور عمران خان کے شدید ناقد رہے ہیں۔ادھر حکومتی وزیر سابق وزیر اعظم کیخلاف بھی سخت زبان استعمال کر رہے ہیں ،) وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ آخر بلی تھیلے سے باہر آ گئی ، عمران خان وہ شخص ہے جو جس ہاتھ سے کھاتا ہے ، اسی کو کاٹتا ہے۔نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ ان کا کہنا تھا کہ آخر بلی تھیلے سے باہر آگئی عمران خان نے نیوٹرل کرتے کرتے فوج پر براہ راست الزام لگادیا۔ انہیں نیوٹرل ہونے پر تکلیف یہ ہے کہ اس وینٹیلیٹر کے بغیر اُن کی سیاست زندہ نہیں رہ سکتی۔ فوج نے اس کے لیے اپنی ساکھ داؤ پر لگائی اور آج سے میر جعفر کا الزام سننا پڑ رہا ہے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ پچھلی حکومت سے گورننس اور معاشی حالات ٹھیک نہیں ہو رہے تھے ، تو اس میں فوج کا کیا قصور؟ فوج نے عمران خان سے یہ تو نہیں کہا تھا کہ اپنے کرونیز کو کھلی چھٹی دو ، خود ہیلی کاپٹر کے رکشے پر بیٹھ کر اٹھانوے کروڑ کا خرچہ کرو۔ اس کے علاوہ وفاقی وزیر قانون رانا ثناء نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہر روز فوجی قیادت کو دعوت دینے والے نے آج پالش اور برش اٹھالیا، ایک دن گالی، اگلے دن قوالی، باس اور چپڑاسی کی سیاسی زندگی کی کل کہانی یہی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو میں سابق وزیراعظم و پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کہا کہ اسٹیبلشمنٹ سے پیغامات آرہےہیں لیکن میں کسی سے بات نہیں کررہا، میں نے ان لوگوں کے نمبر بلاک کر دیے ہیں، جب تک الیکشن کااعلان نہیں ہوتا،تب تک کسی سےبات نہیں ہو گی۔ صحافیوں سے گفتگو میں عمران خان کا کہنا تھاکہ

شہباز شریف کے علاوہ بھی کردار میر جعفر اور میر صادق ہیں۔ ان سے سوال کیا گیا کہ کیا آپ ان کرداروں کے نام لیں گے؟ ان کا کہنا تھاکہ ابھی کرداروں کے نام لینے کا وقت نہیں آیا، وقت آنے پر ان کرداروں کے نام لوں گا۔) وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ آخر بلی تھیلے سے باہر آ گئی ، عمران خان وہ شخص ہے جو جس ہاتھ سے کھاتا ہے ، اسی کو کاٹتا ہے۔نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ ان کا کہنا تھا کہ آخر بلی تھیلے سے باہر آگئی،

Categories
پاکستان

حکومت کا پی ٹی آئی اور ق لیگ سے ہاتھ،پنجاب اسمبلی کا اہم اجلاس موخر کر دیا

لاہور(ویب ڈیسک) پنجاب اسمبلی کے 16 مئی کو ہونے والے اجلاس کی تاریخ تبدیل کردی گئی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق پنجاب اسمبلی کا اجلاس اب 30 مئی دوپہر ایک بجے طلب کیا گیا ہے۔ اجلاس کی تاریخ تبدیل ہونے سے ڈپٹی اسپیکر دوست محمد مزاری کے خلاف تحریک عدم اعتمادکی کارروائی التوا کا شکار ہے۔ ذرائع کے مطابق 16 مئی کو اسمبلی اجلاس

میں ڈپٹی اسپیکرکے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش ہونا تھی۔ پی ٹی آئی اور ق لیگ نے 6 اپریل کو ڈپٹی اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرائی تھی، ایک ماہ سے زائد عرصہ گزرنے کے باوجود تحریک عدم اعتماد پر کارروائی نہیں ہوسکی۔ ڈپٹی اسپیکرکےخلاف عدم اعتمادپرکارروائی کے بعد اسپیکرپرویزالٰہی کےخلاف تحریک عدم اعتماد پرکارروائی ہوناہے۔ مسلم لیگ ن نے7 اپریل کواسپیکرکےخلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرائی تھی۔ادھر ایک اور خبر کے مطابق متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے صدر خلیفہ بن زاید آل نہیان کے انتقال پر پاکستان میں تین روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا گیا ہے۔ کابینہ ڈویژن کے مطابق یو اے ای کے صدر کے انتقال پر 13 سے 15 مئی تک پاکستان میں قومی سوگ منایا جائے گا اور قومی پرچم سرنگوں رہے گا۔ واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زاید النہیان آج انتقال کرگئے۔ متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے خلیفہ بن زاید النہیان کے انتقال کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ صدر کے انتقال پر 40 روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق شیخ خلیفہ بن زایدالنہیان کے انتقال پر40 روز کےسوگ کے ساتھ 3روز کی عام تعطیل بھی ہوگی جب کہ اس دوران قومی پرچم سرنگوں رہے گا۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کارکنان کی گرفتاری ،عمران خان نے پارٹی کا ہنگامی اجلاس بلا لیا،اہم فیصلے متوقع

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سیالکوٹ میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )کے رہنماعثمان ڈار اور دیگر کارکنوں کی گرفتاری پر عمران خان نے پارٹی کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا ۔ چیئر مین پاکستان تحریک انصاف عمران خان اجلاس کی قیادت کریں گے ،اجلاس میں پارٹی کی مرکزی قیادت شریک ہو گی،ملکی سیاسی اور سیالکوٹ کی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا،

عمران خان موجودہ صورتحال پر مرکزی قیادت سے مشاورت کریں گے ، اجلاس میں آئندہ کے لائحہ عمل پر بھی غور ہو گا۔یاد رہے کہ پی ٹی آئی کی جانب سے اجازت نہ ملنے کے باوجود سیالکوٹ کے سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسے کی تیاریاں جاری تھیں کہ اسی دوران پولیس نے جلسہ گاہ پر کریک ڈاؤن کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنماؤں سمیت متعدد افراد کو حراست میں لے لیا۔ادھر پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شہباز گل کا کہنا ہے کہ امپورٹڈ حکومت کی کانپیں ٹانگ رہی ہیں ،سیالکوٹ میں امپورٹڈ حکومت کی غنڈہ گردی کی مذمت کرتے ہیں۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر پی ٹی آئی رہنماشہباز گل کا کہنا تھا کہ جلسہ کرنا ہمار بنیادی حق ہے اور اس حق سے ہمیں کوئی نہیں روک سکتا،چند دنوں کی مہمان حکومت کی کانپیں ٹانگ رہی ہیں، امپورٹڈ حکومت عوامی دباو¿ کی تاب نہیں لا سکی اور فسطائی ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔یاد رہےدوسری طرف پولیس نے سیالکوٹ میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )کے بلا اجازت سی ٹی آئی گراونڈ میں جلسے کے انتظامات کرنے پر کریک ڈاون کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما عثمان ڈار سمیت متعدد افراد کو گرفتار کر لیا ۔پولیس نے جلسہ گاہ سے رہنما تحریک انصاف علی اسجد ملہی اور سابق ڈی جی اینٹی کرپشن اسلم گھمن کو بھی حراست میں لے لیا۔جلسہ گاہ سے سامان ہٹائے جانے پر پی ٹی آئی کارکنوں کی جانب سے مزاحمت کی گئی جس پر پولیس کی جانب سے کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے آنسوگیس کی شیلنگ کی گئی۔تحریک انصاف کے کارکنوں کے منتشر ہونے کے بعد کرین کی مدد سے جلسہ گاہ سے سامان کو ہٹایا جا رہا ہے۔رپورٹ کے مطابق ڈپٹی کمشنر سیالکوٹ عمران قریشی کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے سی ٹی آئی گراونڈ میں جلسے کی پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کی تھی لیکن اس کے باوجود تحریک انصاف کی جانب سے سی ٹی آئی گراونڈ میں جلسے کی تیاریاں جاری تھیں۔

ہم انہیں جلسے کے لیے متبادل جگہ دینے کے لیے تیار ہیں۔سی ٹی آئی گراونڈ میں جلسے کی کال پر مسیحی کمیونٹی سراپا احتجاج ہے ،مسیحی کمیونٹی نے ہائیکورٹ میں سی ٹی آئی گراونڈ میں جلسے کیخلاف درخواست دی تھی، ہائیکورٹ کا حکم ہے کہ گراونڈ میں جلسے کو روکیں۔ضلعی انتظامیہ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ مالکان کی رضا مندی کے بغیر کسی کو جلسے کی اجازت نہیں دے سکتے، سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسے کی کال پر مسیحی کمیونٹی سراپا احتجاج ہے، اجازت کے بغیر جلسہ کرنے سے امن و امان کا خطرہ ہے، سی ٹی آئی گراؤنڈ کے علاوہ کسی اور جگہ جلسہ کرنے کہ درخواست دی جائے

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کا لانگ مارچ،حکومت نے احتجاج روکنے کی کمر کس لی، سینئر رہنماوں کو گرفتار یا نظر بند کرنے کا امکان،فہرست تیار

لاہور(ویب ڈیسک) حکومت نے پاکستان تحریک انصاف کے متحرک اور فعال رہنماؤں کو گھروں میں نظر بند کرنے اور ان کو حراست میں لینے کا فیصلہ کر لیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے ایسے رہنما جو لانگ مارچ اور اپنی تحریک کے دوران قانون کو ہاتھ میں لے سکتے ہیں یا نقص امن کا مسئلہ پیدا کر سکتے ہیں

انہیں مبینہ طور پر 16 ایم پی او کے تحت جیلوں میں ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ مختلف اداروں نے ایسے لوگوں کو شر پسند عناصر کا نام دیکر ان کے ناموں کی فہرست مرتب کرنا شروع کر دی ہے ۔سیکیورٹی اور حساس اداروں نے ایک رپورٹ مرتب کی ہے جو حکومت کو پیش کی گئی ہے جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پی ٹی آئی نے ملک کو جام کرنے، دھرنے دینے اور افراتفری پھیلانے کی منصوبہ بندی کر رکھی ہے ۔ رپورٹ کے بعد حکومت نے تحریک انصاف کی تحریک پر جارحانہ انداز اپنانے کا فیصلہ کیا ہے اور اہم شخصیات کی نظربندی پر غور شروع کر دیا ہے جس سلسلے میں محکمہ داخلہ نے اہم تجاویز تیار کر لی ہیں ۔ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ نے پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے حوالے سے ابتدائی پلان پرمنصوبہ بندی شروع کر دی۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے لانگ مارچ کو روکنے کے لئے حکومت کو اہم تجاویز دے دی ہیں ، سیکیورٹی اداروں نے موقف اختیار کیا کہ اگر پی ٹی آئی والے لانگ مارچ کے لئے سڑکوں پر نکل آئے تو پھر روکنا مشکل ہو گا لہٰذا تجویز ہے کہ لانگ مارچ کو نکلنے ہی نہ دیا جائے، رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ پی ٹی آئی ملک میں ویسا ہی ماحول پیدا کرنے کی کوشش کر رہی ہے جیسا سری لنکا میں ہوا ہے، سیکیورٹی اداروں نے پی ٹی آئی اور دیگر اپوزیشن جماعتوں کے اہم رہنماؤں کی نظربندی کی تجویز بھی دی ہے ، پی ٹی آئی کے متحرک کارکنوں اور سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ کی گرفتاریاں عمل میں لائے جانے کا بھی امکان ہے۔ ہے ۔ مختلف اداروں نے ایسے لوگوں کو شر پسند عناصر کا نام دیکر ان کے ناموں کی فہرست مرتب کرنا شروع کر دی ہے ۔سیکیورٹی اور حساس اداروں نے ایک رپورٹ مرتب کی ہے جو حکومت کو پیش کی گئی ہے جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پی ٹی آئی نے ملک کو جام کرنے، دھرنے دینے اور افراتفری پھیلانے کی منصوبہ بندی کر رکھی ہے

Categories
پاکستان

توہین مذہب کے مقدمات !پی ٹی آئی کو اسلام آباد ہائیکورٹ سے بڑا ریلیف مل گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلام آباد ہائیکورٹ نے مسجد نبویﷺ واقعے پر پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کے خلاف مزید مقدمات کے اندراج سے روکتے ہوئے ریمارکس دیے کہ مذہب کو سیاسی مقصد کیلئے استعمال کرنا خود توہین مذہب ہے ۔ اسلام آباد ہائیکورٹ میں جسٹس اطہر من اللہ نے مسجد نبویﷺ واقعے پر اندراج مقدمات سے متعلق قاسم سوری ، فواد چودھری ، شہباز گل کی درخواستوں پر سماعت کی ،

فواد چودھری عدالت میں پیش ہوئے اور کہا کہ میں حاضر ہو گیا ہوں، حیرت ہے کہ مارشل لاء کے ادوار بھی آئے مگر کسی حکومت نے توہین مذہب کے قانون کو اس طرح استعمال نہیں کیا ، وزیر قانون پر شدید حیرت ہے ۔ عدالت نے پی ٹی آئی رہنماؤں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنےسے روکتے ہوئے کہا کہ حکام ایف آئی آر درج نہیں کریں گے ، مدینہ منورہ میں جو ہوا ، وہ نہیں ہونا چاہئے تھا۔مذہب کو سیاسی مقصد کیلئے استعمال کرنا خود توہین مذہب ہے ، توہین مذہب کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کرنے سے کیسے روکا جا سکتا ہے ، وفاقی حکومت یہ نہیں کہہ سکتی کہ ہم کچھ نہیں کر سکتے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے فواد چودھری سے مکالمہ کرتے ہوئے استفسار کیاکہ آپ کو اس عدالت پر اعتماد ہے ، یہ عدالت کیس میں کارروائی کو آگے چلائے ؟۔ فواد چودھری نے کہا کہ عدالت پر اعتماد نہیں ہوگا تو کس پر ہوگا ؟۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ مذہب کا سیاسی مقسد کیلئے استعمال خود توہین مذہب ہے ، اس طرح 2018 میں ہوا پہلے بھی ہوتا رہا ، ایک غیر ملکی کو سیالکوٹ میں مارا گیا ، مشال خان واقعے بھی سب کے سامنے ہے ، یہاں پر بھی جو مقدمات درج ہو رہے ہیں ، وہ درست معلوم نہیں ہوتے ۔ عدالت نے قاسم سوری کی درخواست پر وفاق و دیگر کو نوٹس جاری کر دیا۔ ایف آئی اے کی جانب سے عدالت میں جواب جمع کرایا گیا جس میں کہا گیا کہ مسجد نبوی ﷺ واقعے پر کاؤنٹر ٹیرر ازم ونگ اور سائبر کرائم ونگ نے کوئی کارروائی نہیں کی ، عدالت نے ریمارکس دیے کہ واقعے پر مقامی پولیس نے کارروائیاں کی ہیں ۔ عدالت نے پولیس کو واقعے پر مزید مقدمات درج نہ کرنے کا حکم جاری کر دیا۔

Categories
پاکستان

فردوس عاشق اعوان کے بعد شاہ محمود قریشی بھی منظر سے غائب،کیا دونوں نے پارٹی راہیں جدا کر لیں؟؟

لاہور(ویب ڈیسک) تحریک عدم اعتماد کے نتیجے میں حکومت ختم ہونے کے بعد سابق وزیر خارجہ اور پی ٹی آئی کے وائس چیئرمین شاہ محمودقریشی کے منظر نامے سے غائب ہونے پر ان کے پی ٹی آئی چھوڑنے کی افواہیں زیر گردش ہیں۔ شاہ محمود قریشی پیپلزپارٹی اور عمران خان کی حکومت میں پاکستان کے وزیر خارجہ رہے۔ 31 مارچ 2008ء

تا فروری 2011ء پیپلز پارٹی کے فعال رکن رہنے والے شاہ محمود قریشی نے زرداری حکومت سے بدظن ہو کر وزارت خارجہ سے استعفیٰ دے دیا اور نومبر 2011ء میں پارلیمان سے بھی مستعفی ہو گئے جس کے بعد انہوں نے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لی۔2018 سے اپریل 2022 میں عمران خان کی حکومت کے خاتمے تک عمران خان کی کابینہ میں وزیر خارجہ پاکستان رہے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے سیاسی کیریئر کا آغاز 1990 میں کیا ۔ 2002 میں مسلم لیگ (ق) کے ٹکٹ پر خواتین کی مخصوص نشست پر قومی اسمبلی کی رکن منتخب ہوئیں۔ 2008 میں پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پراین اے 111 سیالکوٹ II سے قومی اسمبلی کے لیے منتخب ہوئیں۔ مئی 2017 میں تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی ۔ 2018 کے عام انتخابات میں این اے 72 سے الیکشن میں ناکام رہیں تاہم سابق وزیر اعظم عمران خان اور بعد ازاں سابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی معاون خصوصی رہیں تاہم گزشتہ دو سال سے مکمل طور پر سیاسی منظر نامے سے غائب ہیں۔ تحریک عدم اعتماد کے بعد درجنوں پی ٹی آئی ارکان اسمبلی پارٹی سے کنارہ کشی کرچکے ہیں جس پر پارٹی نے الیکشن کمیشن سے ان کی نااہلی کی درخواست کر رکھی ہے جبکہ دوسری جانب وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی جو اس مبینہ امریکی سازش کے مرکزی کردار ہیں ان کا منظر سے غائب ہونا سیاسی حلقوں کی آنکھوں میں کھٹک رہا ہے۔ سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان اور دیگر رہنماؤں کے بعد اب شاہ محمود قریشی بھی پی ٹی آئی کی کشتی سے چھلانگ لگانے کی تیاری کرچکے ہیں اور شنید یہ بھی ہے کہ بہت جلد فواد چوہدری بھی پی ٹی آئی کو چھوڑنے کا فیصلہ کرنے والے ہیں۔ ان افواہوں میں کس حد تک صداقت ہے یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا

تاہم موجودہ صورتحال میں چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے ساتھ محض چند دیرینہ ساتھی ہی کھڑے دکھائی دے رہے ہیں جبکہ مرکزی عہدوں پر براجمان رہنماء منظر نامے سے غائب ہیں۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کا استعفوں کی تصدیق کے لیے سپیکر کے سامنے پیش نہ آنے کا فیصلہ،سپیکر کے سامنے کتنے افراد استعفوں کے فیصلے سے ہٹ سکتے ہیں ؟؟اند کی خبر سامنے آگئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے سپیکر قومی اسمبلی کے سامنے پیش ہو کر استعفوں کی تصدیق نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سپیکر کے سامنے پیش ہو کر استعفوں کی تصدیق نہیں کی جائے گی، انہیں ایسے ہی استعفوں کو قبول کرنا ہوگا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر ارکان کو فرداً فرداً سپیکر کے سامنے پیش ہو کر استعفوں کی تصدیق کا کہا گیا تو دو درجن سے زائد ارکان اس سے انکار کرسکتے ہیں۔ اس حوالے سے عمران خان کو رپورٹ پیش کردی گئی ہے۔ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ خیبر پختونخوا کے بعض ارکان استعفوں کی تصدیق کیلئے سپیکر کے سامنے پیش نہیں ہوں گے۔ادھر حکومت اور اپوزیشن کے درمیان تلخیاں دن با دن بڑھتی جا رہی ہیں ، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نےگورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ کو ہٹانےکی وزیراعظم کی ایڈوائس مسترد کردی۔ ایون صدر سے جاری اعلامیے کے مطابق صدر مملکت کا کہنا ہےکہ گورنر پنجاب کو صدر پاکستان کی منظوری کے بغیر نہیں ہٹایا جاسکتا، آئین کے آرٹیکل 101کی شق 3 کے مطابق گورنر، صدرکی رضامندی تک اپنے عہدے پر رہےگا۔ صدر مملکت کا کہنا ہےکہ گورنر پر بدانتظامی کاکوئی الزام ہے نہ کسی عدالت سے سزا ہوئی، گورنر پنجاب نے نہ ہی آئین کے خلاف کوئی کام کیا، اس لیے انہیں ہٹایا نہیں جا سکتا، صدرکا فرض ہے کہ آئین کےآرٹیکل 41 کے مطابق پاکستان کے اتحاد کی نمائندگی کرے۔ صدر عارف علوی کا کہنا ہےکہ گورنر پنجاب نے پنجاب اسمبلی میں پیش آنے والے ناخوشگوار واقعات پر رپورٹ ارسال کی تھی، گورنر پنجاب نے وزیراعلٰی پنجاب کے استعفے اور وفاداریوں کی تبدیلی پر رپورٹ ارسال کی تھی، مجھے یقین ہےکہ گورنرکو ہٹانا غیر منصفانہ اور انصاف کے اصولوں کے خلاف ہوگا، آرٹیکل 63 اے ممبران اسمبلی کو خریدنے جیسی سرگرمیوں کی حوصلہ شکنی کرتا ہے۔ صدر پاکستان کا کہنا ہےکہ اس مشکل وقت میں دستور پاکستان کے اُصولوں پر قائم رہنے کے لیے پرعزم ہوں، گورنر پنجاب کو ہٹانے کی وزیر اعظم کی ایڈوائس کومسترد کرتا ہوں، ضروری ہے کہ موجودہ گورنرصاف جمہوری نظام کی حوصلہ افزائی کے لیے عہدے پر قائم رہے

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کو بڑا جھٹکا،عمران خان اور شیخ رشید کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا فیصلہ،قراداد بھی پیش کر دی گئی

لاہور(ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کی خواتین ارکان نے عمران خان اور شیخ رشید کے خلاف قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی۔ مسلم لیگ (ن) کی رکن اسمبلی سمیرا کومل، سعدیہ تیمور اور حنا پرویز نے عمران خان اور شیخ رشید کے خلاف قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرائی۔ قرارداد کے متن میں کہا گیا ہےکہ یہ ایوان اداروں کے

خلاف ہرزہ سرائی کی مذمت کرتا ہے، کوئی بھی محب وطن شہری اداروں کے خلاف بیانات کو برداشت نہیں کرے گا۔ قرارداد میں مطالبہ کیا گیا ہےکہ عمران خان اور شیخ رشید کےخلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے اور ان کے نام ای سی ایل میں ڈالے جائیں۔دوسری جانب وزیر اعظم شہباز شریف کا بھی کہنا ہے کہ عارف علوی کے خلاف آئینی پٹیشن دائر کی جا سکتی ہے۔ وزیراعظم شہباز شریف نے صدر مملکت عارف علوی کو آڑے ہاتھوں لے لیا۔ ایک بیان میں شہباز شریف نے کہا کہ عارف علوی پاکستان تحریک انصاف کے آلہ کار بن گئے ہیں، صدر نے آئینی اور قانونی خلاف ورزیاں کیں ۔ وزیراعظم نے کہا کہ عارف علوی کے خلاف آئینی پٹیشن بھی دائر کی جا سکتی ہے لیکن ہم نے آئینی پٹیشن کے معاملے پر صبر وتحمل کی پالیسی اپنائی ہوئی ہے۔ دوسری جانب وزیر اعظم شہباز شریف نے روس سے معاہدوں سے متعلق بھی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے وزیراعظم نے روس سے سستے تیل اور گیس کا کوئی معاہدہ نہیں کیا، ہمیں معاہدے کا کوئی کاغذ نہیں ملاتحریک انصاف کا کام تو جھوٹ بولنا ہے۔ انہوں نے واضح کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا حکومت آٹے پر سبسڈی دے ورنہ ہم دیں گے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ایٹمی دھماکوں کے وقت نواز شریف نے ملک کے وقار کی خاطر امریکا کو ایبسولیوٹلی ناٹ نہیں کہا بلکہ طریقے سے کلنٹن کو جواب دیا، امریکا سپر پاور ہے اس سے بگاڑ نہیں سکتے ۔،وزیر اعظم شہباز شریف نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے کہا کہ عارف علوی کے خلاف آئینی پٹیشن بھی دائر کی جا سکتی ہے لیکن ہم نے آئینی پٹیشن کے معاملے پر صبر وتحمل کی پالیسی اپنائی ہوئی ہے۔ ہمیں معاہدے کا کوئی کاغذ نہیں ملاتحریک انصاف کا کام تو جھوٹ بولنا ہے۔

Categories
پاکستان

عمران خان ڈی جی آئی ایس آئی کو کیوں نہیں بدلنا چاپتے تھے؟؟اہم ادارے اور پی ٹی آئی میں کب دراڑ آئی،سابق وزیر اعظم نے کھل کر بتا دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت گرانے کی سازشوں کی وجہ سے ڈی جی آئی ایس آئی نہیں بدلنا چاہتا تھا۔ منحرف ہونے والے اپنے پرانے ساتھیوں جہانگیر ترین اور علیم خان سے اختلافات کی وجوہات سے پردہ اٹھادیا۔ انہوں نے کہا کہ

ملکی مفادات پر سمجھوتہ کیے بغیر امریکا سے دوستی چاہتا ہوں، میرا جرم آزاد خارجہ پالیسی تھی۔ عمران خان نے کہا کہ میرے خلاف بہت بڑی سازش ہوئی کہ پاکستان میں موجود میرجعفر و میرصادق نے انکا ساتھ دیا، ہمیشہ یقین رکھتا ہوں کہ میرا ملک مضبوط، آزاد ہے اور وہ کبھی کسی کے سامنے نہیں جھکے گا۔ انہوں نے کہا کہ عدلیہ نے از خود نوٹس بھی لے لیا اور رات 12 بجے عدالتیں کھل گئیں لیکن منحرف ارکان کیخلاف کوئی کارروائی نہیں کی۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ جہانگیر ترین اور علیم خان نے پارٹی کی کامیابی کے لیے بہت محنت کی لیکن ان کے آئیڈیلز وہ نہیں تھے جو میرے تھے، ان کا اقتدار میں آنے کا کچھ اور مقصد تھا، اسی لیے آج وہ چوروں کے ساتھ کھڑے ہیں، ان کا مقصد اقتدار میں آکر فائدہ اٹھانا تھا۔ عمران خان نے زور دیا کہ اب جس کو ٹکٹ دوں گا اس سے حلف لوں گا کہ اگر کاروبار کرنا ہے تو اقتدار میں نہ آئیں، یہ نہ سمجھنا میں آپ کے کاروبار کو غیرقانونی فائدہ پہنچاؤں گا۔ انہوں نے بتایا کہ چینی مہنگی ہوئی تو شوگر مافیا کیخلاف کارروائی پر جہانگیر ترین سے اختلافات ہوئے، علیم خان نے راوی میں 300 ایکڑ زمین لے لی جسے وہ قانونی کروانا چاہتے تھے ، ان کے خلاف نیب میں بھی کیسز تھے، وہ مجھ سے چاہتے تھے جو کام نواز شریف اور زرداری کرتے تھے میں بھی وہی کروں یعنی غلط کام کو جائز کرنا، اس پر مجھ سے ان کے اختلافات ہوئے۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی کو کراچی سے بڑا دھچکاچ سے بلاول بھٹو کو ہرانے والے اہم ایم این اے کا سیاست چھوڑنے کا اعلان،مگر وجہ کیا بنی؟؟

کراچی(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی شکور شاد نے سیاست سے کنارہ کشی کا اعلان کردیا۔ شکور شاد نے گزشتہ عام انتخابات میں لیاری کراچی سے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کو شکست دی تھی تاہم اب شکور شاد نے سیاست سے کنارہ کشی کا فیصلہ کرلیا ہے۔

شکور شاد کا کہنا تھا کہ وہ طبیعت کی خرابی کی وجہ سےآئندہ سیاسی سرگرمیاں جاری نہیں رکھ سکتے لہٰذا انہوں نے سیاسی سرگرمیوں سے مکمل لاتعلقی کا اعلان کردیا ہے، وہ آئندہ انتخابات میں حصہ نہیں لیں گے۔

Categories
پاکستان

پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت،پی ٹی آئی اور الیکشن کمشنر آمنے سامنے آگئے،چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے بڑا اعلان کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کا کہنا ہے کہ ان کا ادارہ کسی قسم کا پریشر لینے کو تیار نہیں ہے، فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ میرٹ پر ہو گا۔پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں ہوئی۔

تحریک انصاف کے وکیل انور منصور خان نے کہا کہ جب تک باقی کیس اس جگہ نہیں آتے پی ٹی آئی غیر ملکی فنڈنگ کیس نہیں چل سکتا۔وکیل احمد حسن نے کہا کہ میری درخواست پر یہ کہتے ہیں کہ اکبر ایس بابر پی ٹی آئی کیس میں مداخلت نہ کریں جبکہ باقی جماعتوں پر پی ٹی آئی وکیل کہہ رہے ہیں میں مداخلت کروں، یکساں مواقع یہ نہیں کہ ‎سب کیس ساتھ چلیں، اس کا مطلب ہے سب کو برابری کے مواقع ملنے چاہئیں، ان کی بات سے تو یہ مطلب ہے کہ قتل کے سب مقدمات اکھٹے چلیں، اس رویے پر پی ٹی آئی کو بھاری جرمانہ کیا جائے۔ممبر الیکشن کمیشن نے کہا کہ کمیشن کو اپنا مینڈیٹ معلوم ہے، انور منصور صاحب، آپ چاہتے ہیں سب جماعتوں کے ساتھ پی ٹی آئی کا کیس سنیں؟ سب کیسز برابری کے ساتھ ہی سنے جائیں گے۔چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ انور منصور صاحب، آپ کی مرضی کی تاریخ ہمیشہ دی تھی، اسلام آباد ہائیکورٹ کے آرڈر کے پابند ہیں،انہوں نے کمیشن کو سماعت سے نہیں روکا، ہمارے سامنے تین طرح کے کیسز ہیں۔سکندر سلطان راجہ نے کہا کہ 101 سیاسی جماعتوں کی اسکروٹنی کی، 17 کے اکاؤنٹس میں تضاد تھے، اسلام آباد ہائیکورٹ میں الیکشن کمیشن اپنا تفصیلی مؤقف دے گا جبکہ الیکشن کمیشن اپنی سماعت جاری رکھے گا۔چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ پی ٹی آئی کا کیس 8 سال پرانا ہے، آپ کی قیادت نے کہا ہے کیس جلدی نمٹائیں، ہائیکورٹ کے آرڈر سے پہلے بھی ہم کیس نمٹانے کی طرف جا رہے تھے،

کمیشن اپنا پروسیجر خود بناتا ہے، آپ سمجھتے ہیں کمیشن تاریخیں بھی دوسری عدالت سے لے؟پی ٹی آئی کے وکیل نے کہا کہ آپ کیس کو عید کے بعد رکھ لیں، مجھےآپ کے سامنے ثابت کرنا ہے کہ فنڈ دینے والے پاکستانی تھے، ثابت کرنا ہے کہ ساری کمپنیاں سنگل ملکیت کی کمپنیاں ہیں، میرے دلائل تو اب شروع ہوئے ہیں، مجھے ملین ڈالرز کا حساب دینا ہے۔چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ آپ کے دلائل اگر متعلقہ ہیں تو بے شک 6 ماہ دلائل دیں، جس پر انور منصور خان نے کہا کہ دو ہفتے کے بعد میں اپنے دلائل مکمل کر لوں گا۔سکندر سلطان راجہ نے پی ٹی آئی کے وکیل سے کہا کہ آپ اپنی مرضی کی تاریخ بتائیں، جس پر انور منصور خان نے کہا کہ عید کے بعد کی تاریخ دے دیں، میں ایک ہفتے میں دلائل مکمل کر لوں گا۔اکبر ایس بابر کے وکیل نے کیس میں التوا پر اعتراض اٹھایا، جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ آپ نے پہلے بھی 8 سال کیس سنا ہے، کوئی فرق نہیں پڑتا کہ ہفتہ دو تاخیر کر لیں۔چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ میرٹ پر فیصلہ ہو گا،کمیشن کسی قسم کا پریشر لینے کو تیار نہیں ہے، کسی جماعت کے ساتھ زیادتی نہیں ہو گی، ہم نے نہیں دیکھنا کہ باہر پانچ بندے آئے ہیں یا 5 لاکھ۔سکندر سلطان راجہ نے کہا کہ ہم انور منصور خان کی بات کا احترام کرتے ہیں، آپ نے کہا ہے کہ آپ کیس پر دلائل ایک ہفتے میں مکمل کر لیں گے۔الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی غیر ملکی فنڈنگ کیس کی سماعت 10 مئی تک ملتوی کر دی۔

Categories
پاکستان

فارن فنڈنگ کیس میں پوری پی ٹی آئی فارغ ہو جائیگی،نواز شریف بھی بول پڑے

لندن(ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ اگر پی ٹی آئی کے خلاف آیا تو پوری پارٹی ختم ہوجائے گی۔ سابق وزیراعظم نواز شریف نے لندن میں مولانا فضل الرحمان کے بھائی ضیا الرحمان سے ملاقات کے

بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ پی ٹی آئی کے خلاف آتا ہے تو پوری پارٹی ختم ہوجائے گی ممبر شپ ختم ہوجائے اس لیے پہلے سے ہی استعفے دلا دیے تاکہ لگے کہ پہلے ہی استعفے دیے تھے۔ انہوں نے کہا کہ صدر ملک کا ہوتا ہے اسے ملک کا سوچنا چاہیے، صدر کیسے حلف لینے سے انکار کرسکتا ہے، عارف علوی کے اقدام کو قوم کیسے تسلیم کرے گی۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ کبھی نہیں سوچا تھا کہ پاکستان اس حال کو پہنچے گا جس حال میں آج ہے، ملک میں لوگ بھوک سے مر رہے ہیں، لوگ بچوں کو پال نہیں سکتے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے بڑی محنت سے پاکستان کو کھڑا کیا تھا اسحاق ڈار نے معیشت کھڑی کی، نواز شریف نے عمران خان کا نام لیے بغیر کہا کہ اس شخص نے زمین بوس کردی۔ ن لیگی قائد نے کہا کہ اس نے الیکشن سے پہلے بھی جھوٹے وعدے کیے اور اس کے بعد بھی جھوٹے وعدے کیے گئے۔

Categories
اسپیشل سٹوریز

جنرل الیکشن میں تاخیر سے پی ٹی آئی ختم ہو جائے گی،سینئر تجزیہ کار نجم سیٹھی نے بڑا دعویٰ کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سینئر تجزیہ کار نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ جیسے ہی پیچھے ہٹی، ایک دن بھی عمران خان کی حکومت نہ بچ سکی۔ عمران خان کو پتہ ہے اگر الیکشن جلدی نہیں ہوتے تو ان کو ابھی جو تھوڑی بہت حمایت حاصل ہے وہ نہیں ملے گی،

عمران خان کی ساری جدوجہد کا مقصد جلد انتخابات، اگر ایسا نہ ہوا تو ووٹ بینک نہیں بچے گا۔ایک انٹر ویو کے دوران ان کا کہنا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ نے ملکی مفاد میں سوچا کہ عمران خان بندہ بڑا خطرناک ہے، ہمیں اب اس سے پیچھے ہٹ جانا ہی بہتر ہے۔ملک کی سیاسی صورتحال پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کے بیان کے بعد کے ان کا گھیراو کرو شہروں میں ہمیں تشدد ہوتا نظر آرہا ہے۔ لیگی رہنما عطا تارڑ نے بھی کہا ہے کہ اگر دوبارہ ایسی حرکت ہوئی تو ہم اپنے کارکنوں کو کہیں گے کہ بھرپور جواب دیا جائے۔ ادھر فوج نے کہا ہے کہ اگر ادارے کو اٹیک گیا تو ہم ایکشن لیں گے۔ تو حکومت کیا کرے گی چپ کرکے بیٹھے گی اور گالی سنے گی؟نجم سیٹھی نے کہا کہ جس طرح کی ابھی یہ نئی حکومت بنی ہے اس میں سب جماعتوں کو خوش کرنا پڑے گا۔ 8 جماعتیں اس اتحاد میں شامل ہے۔ دو سیٹوں والا بندہ بھی کہتا ہے ہمیں دو وزارتیں دو۔ شہباز شریف ون مین شو ہیں۔ انہوں نے پنجاب چلایا ہے، پاکستان نہیں چلایا۔ شہباز شریف اپنا سارا کام بیوروکریسی سے لیتے، منسٹرز تو صرف نمائشی ہوتے تھے۔