Categories
پا کستا ن

چئیرمین نیب دراصل کیوں قائمہ کمیٹی میں پیش نہیں ہوئے،اصل حقیقت سے پردہ اٹھ گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی پارلیمنٹ میں پیشی کے حوالے سے نیب پہلے خط سے دستبردار ہو گئی، نیب نے سیکریٹری قومی اسمبلی کو نیا خط لکھ دیا۔ نیب کا نئے خط میں کہنا ہے کہ خط وزیرِ اعظم عمران خان کو نہیں سیکریٹری اسمبلی کو لکھا گیا تھا۔

خط میں نیب کی جانب سے کہا گیا ہے کہ آپ کے دفتر کو خط لکھ کر آگاہ کیا گیا کہ چیئرمین نیب کےخاندان کا ایک فرد شدید طبی صورتِ حال سے دو چار ہے۔ نیب کے خط میں کہا گیا ہے کہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں ڈی جی نیب ہیڈ کوارٹر کو پرنسپل اکاؤنٹنگ آفیسر کی نمائندگی کے لیے با اختیار بنا کر بھیجا گیا۔ خط میں کہا گیا ہے کہ پارلیمنٹ کے احترام کے طور پر ڈی جی نیب کو پی اے سی میں پیش ہو کر صورتِ حال سے آگاہ کرنے کا کہا گیا ہے۔ نیب نے اپنے خط میں کہا ہے کہ پہلے لکھے گئے خط کے حوالے میں وزیرِ اعظم کا ذکرنا دانستہ اور حادثاتی ہے، چیئرمین نیب پارلیمنٹ کی عزت و تکریم کرتے ہیں اور اسی لیے پی اے سی میں پیش بھی ہو چکے ہیں۔
سیکریٹری قومی اسمبلی کو لکھے گئے نئے خط میں قومی احتساب بیورو نے یہ بھی کہا ہے کہ جب بھی ضرورت ہو چیئرمین نیب پارلیمنٹ میں پیش ہوتے رہیں گے۔

Categories
پا کستا ن

گندم چوری کرنے والے “چوہوں” کو دراصل کس نے پکڑا؟چیئرمین نیب کے بیان کا پوسٹمارٹم کر دیا گیا

کراچی(ویب ڈیسک)سندھ حکومت کے ترجمان سعید غنی کہتے ہیں کہ سندھ کی گندم میں ہیر پھیر کرنے والوں نے انہوں نے پکڑا نہ کہ نیب یا وفاقی حکومت نے۔سعید غنی نے اسد عمر کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا گندم چوری کا نوٹس پیپلزپارٹی کے وزیر نے لیا تھا اور نیب کو تحقیقات کیلئے بھی لکھا۔

سعید غنی کا کہنا تھا کہ ایک چوہا کورونا فنڈ کے چالیس ارب روپے کھا گیا۔ اس چوہے نے ایل این جی خریداری میں قوم کے چھ سو ارب روپے چوری کیے۔ کچھ چوہوں نے ملک میں چینی اور گندم کا بحران پیدا کیا۔اس سے قبل اسد عمر کا کہنا تھا سندھ کے عوام جب مہنگا آٹا خرید رہے تھے، اس وقت سندھ میں گندم چوری ہورہی تھی۔ سندھ میں آٹے کی قیمت پنجاب کے مقابلے میں زیادہ ہے۔ سندھ میں 20 ارب روپے کی گندم چوہے کھا گئے۔ پیپلزپارٹی والے بتائیں کہ سندھ کی گندم انسانی نوعیت کے چوہے کھا گئے یا پھر یہ فالودے اور ربڑی والے جیسے تھے۔

Categories
پا کستا ن

حکومتیں کیخلاف کتنی درخواستیں دائر ہوئی،چئیرمین مین نیب نے سب بتا دیا

لاہور (ویب ڈیسک) چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ جو لوگ نیب پر الزام عائد کرتے ہیں کہ نیب حکومت کے خلاف ایکشن نہیں لیتا تو وہ بتائیں کہ انہوں نے حکومت کے خلاف کتنی درخواستیں دائر کی ہیں ؟۔وہ نیب کی جانب سے فراڈ متاثرین کو رقم واپس دینے کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے

چیئرمین نیب نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کچھ لوگ نیب کی بنیاد پر سیاست میں زندہ رہنا اہتے ہیں ، ان کی صبح بھی نیب سے شروع ہوتی ہے اور رات بھی نیب پر ہوتی ہے ، نیب کو متنازع بنانے کیلئے بعض اوقات نان ایشوز کو بھی ایشوز بنایا گیا ہے ، ایک صاحب نے مجھے کہا کہ نیب کے کچھ افسران رشوت لیتے ہیں ، میں آج ان صاحب سے کہتا ہوں کہ اگر ان کے پاس ثبوت ہیں تو مجھے دیں میں 48 گھنٹے میں کارروائی کروں گا۔ جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ صرف الزام لگا دینا غلط روایت ہے ، نیب میں ایک ایک پائی کا حساب رکھا جاتا ہے ، ہم نے تاجروں میں موجود دھوکے باز پکڑے ، تاجر برادری کو تو اس بات پر فخر ہونا چاہئے کہ ہم نے ان کی صفوں میں موجود کالی بھیڑوں کو پکڑا جو ان کا تشخص بھی خراب کر رہے تھے ۔ کچھ لوگ تصور بھی نہیں کر سکتےتھے کہ ان کو بلا کر پوچھا جا سکتا تھا ، اگر مسلمانوں کے خلیفہ سے سوال پوچھا جا سکتا ہے کہ آپ کے پاس دو چادر یں کہاں سے آئیں اور انہوں نے جواب بھی دیا ، تو نیب ان سے بالکل پوچھ سکتا ہے کہ آپ کے پاس اربوں کھربوں روپے کہاں سے آئے ۔

Categories
پا کستا ن

’’ نیب اور پاکستان تو ساتھ چل سکتے ہیں مگر۔۔۔‘‘ جسٹس(ر) جاوید اقبال کا دو ٹوک اعلان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )چیئرمین قومی احتساب بیورو (نیب) جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب اور پاکستان تو ساتھ چل سکتے ہیں لیکن نیب اور کرپشن ساتھ نہیں چل سکتے۔

چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی زیر صدارت نیب کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا جس میں ڈپٹی چیئرمین نیب، پراسیکیوٹر جنرل اکاؤنٹیبلیٹی نیب اور ڈی جی نیب آپریشن ڈویژن سمیت دیگر افسران شریک ہوئے۔

اجلاس میں چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ بڑی مچھلیوں کے خلاف اربوں روپے کی بدعنوانی کے ریفرنس احتساب عدالتوں میں دائر کیے ہیں، ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ اور بدعنوان عناصر سے لوٹی گئی رقوم کی واپسی اولین ترجیح ہے۔

جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا کہ نیب بزنس کمیونٹی کی ملک کی ترقی کے لیے خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے، نیب اور پاکستان تو ساتھ چل سکتے ہیں لیکن نیب اور کرپشن ساتھ نہیں چل سکتے۔ انہوںنے کہاکہ نیب کا تعلق کسی سیاسی جماعت، گروہ یا فرد سے نہیں بلکہ ریاست پاکستان سے ہے، نیب کسی دباؤ اور دھمکی کی پرواہ کیے بغیر آئین اور قانون کے مطابق کام کرتا رہیگا۔

انہوں نے کہا کہ نیب کا ایسے تمام افراد کو مشورہ ہے کہ نیب پر بلا جواز تنقید نہ کریں، اپنا وقت اپنے خلاف ٹھوس شواہد کی بنیاد پر دائر ریفرنسز کے دفاع میں خرچ کریں، قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ ان کا ادارہ کئی اسکینڈلز کے ملزمان سے عوام کی لوٹی گئی رقوم کی واپسی کے لیے کاوشیں کر رہا ہے، نیب کی کارکردگی کو معتبر قومی اور بین الاقوامی اداروں نے بھی سراہا، خصوصاً ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل پاکستان اور پلڈاٹ نے نیب کی کارکردگی کو سراہا، کارکردگی کو سراہنا نیب کے لیے اعزاز ہے۔

Categories
پا کستا ن

بریکنگ نیوز:حمزہ شہباز کے خلاف نیب نے بڑا قد م اٹھا لیا

لاہور (ویب ڈیسک)نیب نے حمزہ شہبازشریف کی ضمانت کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیاہے ۔تفصیلات کے مطابق نیب کی جانب سے حمزہ شہباز کی ضمانت منسوخی کیلئے درخواست سپریم کورٹ میں دائر کر دی گئی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیاہے کہ ہائیکورٹ کا چوبیس فروری کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے حمزہ شہباز

کی ضمانت منسوخ کی جائے ، ہائیکورٹ نے حقائق کو نظر انداز کیاہے ، حمزہ شہبازکا کیس ہارڈ شپ کا نہیں بنتا ۔

Categories
بڑی خبر پا کستا ن

نواز شریف کی تمام جائیدادیں نیلام کرنے کا فیصلہ

لاہور(نیوز ڈیسک ) نیب نے اشتہاری ملزم سابق وزیراعظم نواز شریف کی تمام جائیدادیں نیلام کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی جائیداد نیلام کرنے کے لئے احتساب عدالت میں درخواست دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

نیب رپورٹ کے مطابق نواز شریف کے ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ چار کمپنیوں میں شیئرز ہیں،محمد بخش ٹیکسٹائل ملز میں نواز شریف کے 4 لاکھ 67 ہزار 950 شیئرز ہیں۔حدیبیہ پیپر ملز میں نواز شریف 3لاکھ 43 ہزار 425 شیئرز کے مالک ہیں۔

حدیبیہ انجینئرنگ کمپنی میں نواز شریف کے شیئرز کی تعداد 22 ہزار 213 ہے ۔اسی طرح اتفاق ٹیکسٹائل ملز میں نواز شریف 48ہزار 606 شیئرز کے مالک ہیں۔ نیب رپورٹ کے مطابق نواز شریف کے مختلف نجی بینکس میں 3 غیر ملکی کرنسی سمیت 8 اکاؤنٹس شامل ہیں۔

سابق وزیراعظم کے 5 بینک اکاؤنٹس میں 6 لاکھ 12 ہزار روپے موجود ہیں۔غیر ملکی کرنسی والے اکاؤنٹس میں 566 یورو، 698 امریکی ڈالرز اور 498 برطانوی پاؤنڈز موجود ہیں۔ ایل ڈی اے ، لاہور اور شیخو پورہ کے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز، مری کے اسسٹنٹ کمشنر اورگلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے بھی رپورٹ دی۔

نواز شریف اور ان کے زیر کفالت افراد کے نام لاہور، شیخو پورہ ، مری اور ایبٹ آباد میں جائیدادیں ہیں۔ مری میں بنگلہ، چھانگلہ گلی ایبٹ آباد میں 15 کنال کا مکان اور اپر مال لاہور پر جائیداد شامل ہے۔نواز شریف اور ان کے زیر کفالت افراد کے نام 1752 کنال سے زائد زرعی اراضی شامل ہے۔

لاہور کے موضع مانک میں 936 کنال ،موضع بڈوکسانی میں 299 کنال زرعی اراضی ہے۔لاہور کے موضع مال رائے ونڈ میں 103 کنال، موضع سلطانکے میں 312 کنال اراضی شامل ہے ۔ اسی طرح ضلع شیخو پورہ کے موضع منڈیالی میں 14 کنال اور موضع فیروزوطن میں 88 کنال اراضی شامل ہے۔

Categories
پا کستا ن

سرکاری فنڈ ز میں 75کروڑ روپے کا غبن! اس بار ملکی خزانے کو کون لوٹتا رہا؟ پکا ثبوت نیب کے ہاتھ لگ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )نیب نے بلوچستان میں 75 کروڑ روپے کے سرکاری فنڈز میں مبینہ غبن اور اختیارات کے ناجائز استعمال پر بعض افسروں کے خلاف تحقیقات شروع کی ہیں ۔

روزنامہ جنگ میں طاہر خلیل کی شائع خبر کے مطابق ڈپٹی کمشنر لسبیلہ نے سرکاری خزانے 75 کروڑ روپے نیشنل بنک سے کراچی کے ایک پرائیوٹ بنک میں جمع کرا دیئے تھے ۔ جس پر صوبائی محکمہ خزانے نے کارروائی کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر لسبیلہ کو سرکاری خزانے کے 75کروڑ روپے واپس نیشنل بنک اوتھل برانچ میں جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

ذرائع نے انکشاف کرتے ہوئے بتایا ہے کہ حکومت بلوچستان نے زمینوں کے معاوضے کے حوالے سے پونے ایک ارب (75کروڑ روپے)کی خطیر رقم گزشتہ سال ڈپٹی کمشنر لسبیلہ کے سرکاری اکائونٹ میں بھجوائی۔

تاہم ذرائع کے مطابق ڈپٹی کمشنر آفس اور محکمہ خزانہ کے بعض افسران کی مبینہ ملی بھگت سے ایک مبہم قسم کا اجازت نامہ حاصل کیا گیا جس کے تحت ڈپٹی کمشنر لسبیلہ کے دفتر نے 75کروڑ روپے کی مذکورہ رقم جو کہ امانت کے طور پر انکے سرکاری اکائونٹ میں منتقل کی گئی تھی اسے کراچی میں اپنابنک کے نام سے واقع نجی بنک میں جمع کرادیئے گئے۔

Categories
پا کستا ن

احتسابی عملہ خود شکنجے میں آگیا! نیب حکام کا بھی احتساب شروع کر دیا گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )پاکستان کے کرپٹ افراد کا احتساب کرنے والا ادارہ نیب اب خود بھی احتسابی عملہ کے شکنجہ میں آگیا ہے ۔لوٹی ہوئی دولت کی ریکوری سے وصول کئے گئے اربوں روپے کا آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیاگیا ہے اور اس مقصد کے لئے نیب سے تمام متعلقہ ریکارڈ بھی طلب کیا جائے گا ۔

نیب نے اب تک ملک بھر کے کرپٹ افراد سے اربوں روپے ریکور کئے ہی اور اس ریکوری سے نیب کو احتساب ایکٹ کی رولز کے تحت اربوں روپے فراہم کئے گئے ہیں احتساب ایکٹ کے تحت ریکور کی گئی رقوم میں سے نیب حکام کا ایک حصہ مقرر ہے جو وزارت خزانہ انہیں فراہم کرتی ہے اور اب تک دو ارب سے زائد کی فنڈز نیب کواس مد میں ادا کئے گئے ہیں ۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ حکومت نے اس مد میں حاصل کئے گئے اربوں روپے کا باقاعدہ کا باقاعدہ آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کی ذمہ داری آڈیٹر جنرل کو دی جائے گی اور اس بات کی تحقیقات کی جائیں گی کہ یہ اربوں روپے کہاں خرچ ہوئے ہیں اور اس مقصد کیلئے نیب سے تمام ریکارڈ بھی طلب کیا جائے گا ۔

Categories
پا کستا ن

شہباز شریف کی مشکلات میں اضافہ! نیب نے مسلم لیگ (ن) کے صدر کو بڑا جھٹکا دے دیا

لاہور(نیوز ڈیسک ) بینک آف پنجاب کی تقرریوں میں بے ضابطگیوں کا الزام، نیب نے سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کیخلاف ایک اور کیس کھول دیا۔ نیب راولپنڈی نے احتساب عدالت میں شہباز شریف سے جیل میں بینک آف پنجاب کیس میں تفتیش کرنے کی درخواست دائر کی، احتساب کورٹ کے ڈیوٹی

جج شیخ سجاد احمد کی عدالت کو بتایا گیا کہ شہباز شریف نے اپنے دور میں جو تقرریاں کیں اس میں بے ضابطگیاں سامنے آئی ہیں، اس حوالے سے ان سے تفتیش کرنی ہے، عدالت نے نیب راولپنڈی کو جیل میں تفتیش کرنے کی اجازت دے دی، ٹیم کسی بھی وقت شہباز شریف سے تفتیش کرنے کوٹ لکھپت جیل پہنچ جائے گی، جیل کوٹ لکھپت کو اطلاع کر دی گئی۔دوسری جانب منی لانڈرنگ کیس میں گرفتار شہباز شریف کی درخواست ضمانت پر سماعت آج ہوگی، لاہور ہائیکورٹ نے چیئرمین، ڈی جی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر رکھا ہے۔جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر اور جسٹس اسجد جاوید گھرال پر مشتمل دو رکنی بنچ آج سماعت کرے گا، درخواست گزار کی طرف سے امجد پرویز اور اعظم نذیر تارڑ ایڈووکیٹ پیش ہوں گے۔درخواست میں چیئرمین اور ڈی جی نیب کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نیب نے بدنیتی سے آمدن سے زائد اثاثوں کا کیس بنایا اور شہباز شریف کو گرفتار کیا۔ حکومت نے اپوزیشن کی آواز دبانے کیلئے شہباز شریف کیخلاف مقدمات کی سیریز شروع کی ہے، نیب نے اہلخانہ کو بدنیتی سے بے نامی دار قرار دیا ،4 وعدہ معاف گواہوں میں سے کسی ایک گواہ نے بھی شہباز شریف کو اپنے بیان میں نامزد نہیں کیا، درخواست گزار28 ستمبر 2020 سے گرفتار ہے، حراست کی وجہ سے بطور اپوزیشن لیڈر فرائض میں دشواری کا سامنا ہے، منی لانڈرنگ کیس میں حمزہ شہباز سمیت دیگر شریک ملزموں کی ضمانت ہو چکی ہے۔

Categories
پا کستا ن

نیب کی نوا ز شریف اور مریم نواز کے خلاف درخواست! اسلام آباد ہائیکورٹ نے بڑا حکم جاری کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی اپیلیں مقرر کرنے کی درخواستیں نمٹا دیں۔تفصیلات کےمطابق ۔نواز شریف اور مریم نواز آواز نے احتساب عدالت کی طرف سے دی گئی سزا کے خلاف اپیل دائر کر رکھی ہیں۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے ریمارکس دیئے کہ

رجسٹرار آفس کورونا کے دوران عدالت کی پالیسی کے مطابق اپیل مقرر کرے۔عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ نواز شریف تو مفرور ہیں ،نیب عدالت کی معاونت کرے ،ان کی دونوں اپیلوں کو کیسے چلانا ہے۔ نواز شریف کا کوئی نمائندہ مقرر کرنا ہے۔جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ تمام اپیلیں سنی تو اکٹھی ہی جائیگی الگ نہیں کر سکتے۔نیب نے درخواست میں کہا ہے کہ سپریم کورٹ ہدایات جاری کر چکی ہے کہ کرپشن کیسز پر روز سماعت کی جائے۔اس لیے انصاف کے تقاضوں کو پورا کرنے کے لیے اپیل جلد سنی جائیں۔نیب نے نواز شریف کی اپیل جلد سماعت کے لئے مقرر کرنے کی درخواست میں کہا ہے کہ 9 دسمبر 2020 کے بعد کیس سماعت کے لیے مقرر نہیں ہوا ،اب جلد کیس کی سماعت کی جائے۔خیال رہے کہ نیب نے نواز شریف کی اپیلیں جلد سماعت کے لیے مقرر کرنے کے لیے درخواست دائر کی تھی۔اسلام آباد ہائی کورٹ میں نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے متفرق درخواست دائر کی گئی جس میں کہا گیا کہ العزیزیہ ریفرنس ،فلیگ شپ ریفرنس اور ایون فیلڈ ریفرنس اپیلیں جلد سماعت کیلئے مقرر کیں جائیں، 9 دسمبر 2020 کو نواز شریف کی اپیلوں پر آخری سماعت تھی جس کے بعد سے مقرر نہیں ہوئیں، سپریم کورٹ نے بھی کیسز کو جلد نمٹانے سے متعلق بھی ہدایات جاری کیں ہیں۔نیب نے درخواست میں کہا کہ 2 دسمبر کو نواز شریف کو تینوں کیسز میں اشتہاری قرار دیا گیا، نیب نے تینوں اپیلوں میں اپنا جواب تیار کیا ہے اور اس پر دلائل کے لیے تیار ہے، نیب پراسیکیوٹر عدالت کو یقین دہانی کراتا ہے کہ وہ ہر سماعت پر کیس کی پیروی کے لیے موجود ہوگا۔نیب نے موقف اختیار کیا کہ مریم نواز کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس اپیل بھی جلد سماعت کے لیے مقرر کی جائے، سپریم کورٹ ہدایات جاری کر چکی ہے کہ کرپشن کیسز پر روز سماعت کی جائے، انصاف کے تقاضوں کو پورا کرنے کیلئے اپیلیں جلد سنی جائیں۔