کرکٹ کے میدان سےبڑا تہلکہ:انگلش کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان، تاریخ کا اعلان کر دیا گیا

لاہور (ویب ڈیسک ) چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ احسانی مانی نے کہا ہے کہ اپنے ہوم میچز پاکستان میں کھیلیں گے یا نہیں کھیلیں گے۔ برطانوی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں احسان مانی نے کہا کہ 2022ء میں انگلینڈ کے دورہ پاکستان نہ کرنے کا کوئی جواز نہیں لگتا، پاکستان اب ایک محفوظ ملک ہے اور

یہاں کا دورہ کرنے والی ٹیموں کو سربراہ مملکت جتنی سکیورٹی دیتے ہیں۔احسان مانی نے کہا کہ ہماری ہوم سیریز اب کبھی نیوٹرل مقام پر نہیں ہو گی، اپنے ہوم میچز پاکستان میں کھیلیں گے یا نہیں کھیلیں گے، ایم سی سی کی ٹیم نے یہاں گالف کھیلی، تاریخی مقامات اور ریسٹورنٹس بھی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ جب 2 سال بعد انگلینڈ کرکٹ ٹیم آئے گی تو حالات اور بھی بہتر ہوجائیں گے۔یاد رہے کہ انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے ہیڈکوچ کی جانب سے پاکستانی شائقین کرکٹ کو بڑی خوشخبری سنائی گئی ۔ان کا کہنا تھا کہ دورہ پاکستان کے لیے تیار ہیں اور مستقبل قریب میں انگلینڈ ٹیم دورے کرنے کو تیار ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ کبھی پاکستان نہیں گئے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں پاکستان کا سفر کرنے میں کوئی مسئلہ نہیں ، اچھا ہے ہم وہاں کی پچز پر بھی خود کو آزما لیں گے۔ ہیڈکوچ نے کہا کہ ہمیں وہاں جانا چاہیے اور ذاتی طور پر مجھے وہاں جانے میں کوئی دقت نہیں، میں کبھی پاکستان نہیں گیا اس لیے ہمیں وہاں جا کر دیکھنا چاہیے اور ٹیم کو وہاں کی پچز پر آزمانا بھی چاہیے۔دوسری جانب پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی ) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر وسیم خان نے ایک مرتبہ پھر انگلینڈ سے امیدیں وابستہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ 2022ء کے شیڈول ٹور سے قبل انگلش ٹی ٹونٹی ٹیم بھی پاکستان آسکتی ہے اگرچہ انگلش کرکٹ بورڈ (ای سی بی) نے واضح الفاظ میں اس بات کی وضاحت کردی کہ اس بابت کوئی بات چیت نہیں ہو رہی ہے ۔ وسیم خان نے ایک کرکٹ ویب سائٹ سے گفتگو میں بھی تصدیق کی کہ ای سی بی حکام اپنی ٹی ٹونٹی ٹیم پاکستان بھیج سکتے ہیں لیکن ساتھ ہی یہ بھی تسلیم کیا کہ اس مرحلے پر فیوچر ٹور پروگرام میں وقت نکالنا کافی کٹھن ہو سکتا ہے لیکن کورونا وائرس کی صورتحال میں بہتری کے بعد انگلینڈ لائنز کا پاکستان ٹور طے کرلیا جائے تو یہ بھی بہترین متبادل ثابت ہو سکتا ہے ۔