کیا انڈیا اور سر لنکا کے درمیان کھیلے جانے والا ورلڈکپ 2011ءکا فائنل فکس تھا ؟ آئی سی سی نے بھی فیصلہ سنا دیا

دبئی (ویب ڈیسک ) انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ورلڈکپ 2011ءکے بھارت اور سری لنکا کے درمیان ہونے والے فائنل کو کرپشن فری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے شواہد نہیں ملے جس کی بنیاد پر تحقیقات کا آغاز کیا جا سکے۔تفصیلات کے مطابق آئی سی سی اینٹی کرپشن یونٹ کے سینئر جنرل منیجر ایلکس مارشل نے کہا ہے

MUMBAI, INDIA – APRIL 02: Indian cricketers pose with the trophy after victory in the Cricket World Cup 2011 final over Sri Lanka at The Wankhede Stadium in Mumbai on April 2, 2011. India beat Sri Lanka by six wickets. (Photo by Naveen Jora/India Today Group/Getty Images)

کہ ورلڈکپ 2011ءکے فائنل میں سری لنکا کے کھلاڑیوں کے میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کا معاملہ سامنے آیا تھا لیکن تاحال کوئی ایسے شواہد نہیں ملے جن کی بنیاد پر تحقیقات کا آغاز کیا جا سکے، اس لئے بھارت اور سری لنکا کے مابین فائنل میچ پر شکوک کی کوئی وجہ نہیں بنتی۔ایلکس مارشل نے مزید کہا کہ آئی سی سی کرکٹ میں کرپشن کو بڑی سنجیدگی سے لیتا ہے، یہ ناقابل برداشت ہے۔ اگر کسی کے پاس ورلڈ کپ 2011ءکے فائنل یا کسی بھی دوسرے میچ میں کرپشن کے شواہد ہوں تو ضرور فراہم کرے، سخت ایکشن لیا جائے گا، سری لنکن بورڈ نے بھی اس حوالے سے کوئی تحریری درخواست یا شواہد پیش نہیں کئے۔واضح رہے کہ 2011ءمیں سری لنکا کے وزیر کھیل کے منصب پر فائز رہنے والے مہندا نندا الوتھگامگے نے ورلڈ کپ کے فائنل میچ میں فکسنگ کے الزامات عائد کئے تھے جس پر ٹیم کے کپتان کمار سنگاکارا، چیف سلیکٹر اروندا ڈی سلوا اور اوپننگ بلے باز اوپل تھرنگا سری لنکن بورڈ کی تفتیشی کمیٹی کے سامنے پیش بھی ہوئے تھے، بورڈ نے شواہد نہ ہونے پر تفتیش ختم کردی تھی۔