کرکٹ کے میدان سے بڑی خبر۔۔۔مکی آرتھرنے ایک مرتبہ پھر ہیڈ کوچ کا عہدہ سنبھال لیا

کولمبو (ویب ڈیسک) سری لنکن کرکٹ بورڈ (ایس ایل سی) نے سابق پاکستانی ہیڈ کوچ مکی آرتھر کو دو سال کیلئے اپنی ٹیم کا ہیڈ کوچ مقرر کر دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق مکی آرتھر کا پہلا امتحان دورہ پاکستان ہوگا اور وہ دو ٹیسٹ میچز کی سیریز کیلئے سری لنکن ٹیم کے ساتھ پاکستان آئیں گے

۔ ان کے علاوہ قومی ٹیم کے سابق بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور کو سری لنکن ٹی 20 ٹیم کا بیٹنگ کوچ بھی تعینات کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ ورلڈ کپ میں ناکامی کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے مکی آرتھرکو قومی ٹیم کی کوچنگ سے ہٹا کر مصباح الحق کو چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ مقرر کیا تھا۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ مکی آرتھر کی کوچنگ اور سرفراز احمد کی کپتانی میں قومی ٹیم نے آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی اپنے نام کی تھی۔یاد رہے کہ پاکستان اورسری کے درمیان پہلا ٹیسٹ میچ11 دسمبر سے راولپنڈی میں شروع ہوگا جبکہ سیریز کا دوسرا ٹیسٹ میچ 19 سے 23 دسمبر تک نیشنل سٹیڈیم کراچی میں کھیلاجائے گا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان انڈر 19 کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اعجاز احمد کا کہنا ہے کہ وہ جنوبی افریقہ میں شیڈول ورلڈکپ کیلئے نسیم شاہ کی انڈر 19 میں واپسی کے منتظر ہیں، میں مصباح الحق سے بات کروں گا کہ وہ 16 سالہ نسیم شاہ کو ریلیز کریں تاکہ ورلڈکپ کیلئے انہیں تیار کیا جا سکے۔اعجاز احمد نے کہا کہ ” مصباح الحق اور قومی ٹیم پاکستان آ جائے، تو میں چیف سلیکٹر و ہیڈ کوچ کیساتھ نسیم شاہ کے حوالے سے بات کروں گا۔ سری لنکا کیخلاف سیریز ہوم گراﺅنڈ پر کھیلی جانی ہے اس لئے قومی ٹیم کو اتنے فاسٹ باﺅلرز کی ضرورت نہیں پڑے گی ، مجھے امید ہے کہ نسیم شاہ ہمارے پاس ٹریننگ کیمپ میں ہوں گے۔ “آسٹریلیا کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں نسیم شاہ کی کارکردگی اور ڈیوڈ وارنر کی وکٹ حاصل کرنے پر ان کی تعریف کرتے ہوئے اعجاز احمد کا کہنا تھا کہ ”نسیم شاہ نے برسبین ٹیسٹ میں کچھ غلطیاں کیں اور یقینا ان غلطیوں سے انہوں نے سیکھا ہو گا۔“انڈر 19 ٹیم کے ہیڈ کوچ نے نو بال کے معاملے پر نسیم شاہ کا دفاع کرتے ہوئے کہا ”نسیم شاہ ابھی بہت چھوٹا ہے اور بہت ہی طاقتور ٹیم کیساتھ کھیلا لہٰذا صرف ایک میچ کی بنیاد پر اس کی کارکردگی بارے رائے قائم نہیں کی جا سکتی، وہ ابھی مخصوص کنڈیشنز میں مخصوص کھلاڑیوں کیخلاف باﺅلنگ کے گر جانتا ہے۔“