کھیل کے میدان سے بڑی خبر : پاکستان میں چوری چھپے پریکٹس کرنے والا وہ افغان کھلاڑی جس کا سنٹرل کنٹریکٹ معطل کردیا گیا

کابل (ویب ڈیسک) افغان کرکٹ بورڈ نے پاکستان میں چوری چھپے پریکٹس کرنے پر وکٹ کیپر بلے باز محمد شہزاد کا سنٹرل کنٹریکٹ معطل کردیا۔افغان کرکٹ بورڈ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ حکام نے کسی بھی کھلاڑی کو کسی دوسرے ملک میں کھیلنے کی اجازت نہیں دی ، محمد شہزاد نے بغیر اجازت کے پاکستان میں

پریکٹس کرکے قواعد کی خلاف ورزی کی ہے جس کی بنا پر ان کاکنٹریکٹ غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردیا گیا ہے۔ افغان کرکٹ بورڈ نے محمد شہزاد کو جلد بورڈ کے سامنے پیش ہونے کا حکم بھی دیا ہے۔خیال رہے کہ جمعہ کو یہ انکشاف سامنے آیا تھا کہ محمد شہزاد سمیت افغان کرکٹ ٹیم کے کئی کھلاڑی پشاور میں چوری چھپے پریکٹس کرتے ہیں۔ صحافیوں نے جب پریکٹس کرتے ہوئے محمد شہزاد کی ویڈیو بنانے کی کوشش کی تو انہوں نے ترلے شروع کردیے اور کہا تھا کہ اگر معاملہ بورڈ کے علم میں آیا تو ان کیلئے مشکل ہوسکتی ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وفاقی کابینہ نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے نئے آئین کی منظوری دیدی۔نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہونےوالے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے۔ رواں سال جون میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے نئے آئین کا مسودہ منظوری کے لیے وزارت بین الصوبائی رابطہ کو بھیجا تھا جہاں سے منظوری کے بعد اب اسے وفاقی کابینہ میں حتمی منظوری کیلئے پیش کیا گیا،ڈومیسٹک کرکٹ کا نیا ڈھانچہ منظوری کیلئے وزارت بین الصوبائی رابطہ بھیج دیا گیا ہے۔ وفاقی کابینہ نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے نئے آئین کی منظوری دیدی ہے جس کے بعد اب ڈپارٹمنٹل سسٹم ختم کردیا گیا ہے، نئے آئین میں ڈپارٹمنٹس کی جگہ اب صوبائی ٹیمیں ڈومیسٹک کرکٹ کا حصہ ہوں گی۔نئے آئین کے تحت پنجاب، جنوبی پنجاب، سندھ، کے پی کے، بلوچستان اور کیپٹل ایریاز کے نام سے 6 ٹیمیں فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ کھیلیں گی اور ہر ریجن کی ایک ایک ٹیم گریڈ 2 ٹورنامنٹ میں کھیلے گی جس کے میچ 3 روزہ ہوں گے۔