ورلڈ کپ 2019: شاداب خان کے صحت یاب ہونے کے بعد پہلی پریس کانفرنس،ایسی بات کہہ دی کہ شائقین کرکٹ خوشی سے جھوم اٹھے

لاہور ( ویب ڈیسک ) پاکستان کرکٹ ٹیم کے لیگ سپنر شاداب خان نے کہا ہے کہ آج کل کرکٹ اس قدر تیز ہو گئی ہے کہ ناصرف پاور پلے بلکہ مڈل آورز میں بھی وکٹیں لینے کی ضرورت ہوتی ہے، کوشش ہے کہ انگلینڈ جا کر جلد ہی کنڈیشنز کیساتھ ہم آہنگ ہو جاﺅں۔

تفصیلات کے مطابق یرقان سے چھٹکارا پانے کے بعد پہلی کانفرنس کرتے ہوئے شاداب خان نے کہا کہ میں مکمل طور پر فٹ ہوں اور ورلڈکپ میں شرکت کروں گا۔ وائرس کا پتہ چلنے پر شروع میں تھوڑی پریشانی ضرور ہوئی لیکن اس مشکل وقت میں سب سے بہت سپورٹ کیا اور ٹیم کے کھلاڑیوں نے بہت حوصلہ افزائی کی۔ انگلینڈ میں قومی ٹیم کی کارکردگی سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ باﺅلرز اچھی پرفارمنس نہیں دے پا رہے لیکن کوچز باﺅلرز پر خوب محنت کرتے ہیں اور پوری ٹیم انگلینڈ میں محنت کر رہی ہیں، قومی ٹیم آئندہ میچز جیتنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ انگلینڈ کیخلاف پاکستان کے بیٹسمین اچھا سکور کر رہے ہیں لیکن باﺅلرز کی کارکردگی متاثر کن نہیں رہی البتہ پوری امید ہے کہ باﺅلرز بھی ورلڈکپ میں ردھم میں آ جائیں گے۔ آج کل کی کرکٹ بہت تیز ہو گئی ہے اور اس میں وکٹیں لینے کی ضرورت ہوتی ہے۔ ورلڈکپ کی کنڈیشنز سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ تین سال سے انگلینڈ جا کر کھیل رہے ہیں اس لئے وہاں کی کنڈیشنز میں ڈھلنا مشکل نہیں ہو گا اور کوشش کروں گا کہ جلد ہی کنڈیشنز کیساتھ ہم آہنگ ہو جاﺅں۔ تفصیلات کے مطابق ورلڈ کپ کرکٹ ٹورنامنٹ سے قبل پاکستان ٹیم کے آل راؤنڈر شاداب خان فٹ ہوگئے، وہ پاکستان ٹیم کو جوائن کرنے جمعرات کی صبح لندن روانہ ہورہے ہیں۔ شاداب کا نام ورلڈ کپ کیلئے پاکستان کی 15 رکنی ٹیم میں شامل تھا لیکن

ان فٹ ہونے کے بعد ان کی جگہ یاسر شاہ ٹیم کا حصہ بنے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے منگل کی شام باضابطہ اعلان کیا کہ شاداب خان ورلڈ کپ کیلئے فٹ ہوگئے ہیں۔ شاداب خان 17 مئی کو ڈاکٹر پیٹرک کینیڈی سے معائنہ کرائیں گے اور 20 مئی کو برسٹل میں ٹیم جوائن کریں گے۔اس حوالے سے شاداب کا کہنا ہے کہ میں خوش ہوں کہ خون میں وائرس منفی آیا ہے۔ پاکستان کرکٹ کیلئے یہ ایک شاندار خبر ہے۔ پی سی بی کے ایم ڈی وسیم خان نے کہا کہ شاداب خان کا انگلینڈ میں ماہر ڈاکٹر سے چیک اپ کرایا گیا ۔ شاداب خان کی ورلڈ کپ وارم اپ میچ میں شرکت فٹنس اور منیجمنٹ کے فیصلے پر منحصر ہے۔ وارم اپ میچز 24 اور 26 مئی کو افغانستان اور بنگلہ دیش کے خلاف ہوں گے۔ شاداب خان ورلڈ کپ اسکواڈ میں شامل تھے لیکن خون میں ہیپاٹائیٹس سی کے وائرس کی تشخیص کے باعث باہر ہو گئے تھے ۔ شاداب خان کی جگہ 15 رکنی اسکواڈ میں یاسر شاہ کو شامل کیا گیا تھا۔ شاداب خان کے فٹ ہونے پر اب یاسر شاہ کو جگہ خالی کرنا ہوگی۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے لیگ اسپنر شاداب خان کے فٹ ہونے کی تصدیق کردی ہے۔ 2 روز قبل ان کے خون کے نمونے لیے گئے تھے جن میں ہیپاٹائیٹس سی کا وائرس نہیں پایا گیا۔ شاداب خان کا کہنا ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ سے دوری ایک مشکل مرحلہ تھا لیکن پوری امید تھی کہ فٹ ہوکر دوبارہپاکستان ٹیم کا حصہ بنوں گا۔