گاڑی ایجاد ہونے کے بعد نوجوان لڑکیوں میں کیا تبدیلی آئی کہ اس وقت کے والدین نے گاڑیوں کو شیطان کی سواری کہنا شروع کردیا؟ جانیے

نیویارک(ویب ڈیسک) جب گاڑی ایجاد ہوئی تو یہ بغیر چھت کے بنائی جاتی تھیں اور ان میں بیٹھے لوگوں کو باہر موجود لوگ بخوبی دیکھ سکتے تھے۔ کچھ وقت بعد چھت والی بند گاڑیاں بنائی جانے لگیں جو اس دور کی نوجوان نسل، بالخصوص لڑکیوں کے طرز زندگی اور رویوں میں

شدید تبدیلی کا باعث بنیں۔ ویب سائٹ themobmuseum.org کے مطابق ان گاڑیوں نے جہاں لڑکے لڑکیوں کو ملنے جلنے اور اکٹھے سفر کرنے کی آزادی دی وہیں والدین کو بہت فکر مند کر دیا کیونکہ اس بڑی ایجاد نے وہ گھوڑا میدان میں لا کر کھول دیا جس میں لڑکے اور لڑکیاں کھل کر اپنے پر طرح کت جزبات کا ازالہ کر سکیں ۔ چھت والی کاریں آنے پر والدین اپنی اولادوں کے متعلق بہت فکرمند ہو گئے کیونکہ اس سواری کے اندر لوگ جو بھی کرتے رہیں وہ دوسروں کی نظروں سے اوجھل تھا اور اس طرح اس وقت کے جوانوں کے اند آزاد خیال سوچ نے جنم لیا جس پر اکثر والدین نے ان کاروں کو ’شیطان کی سواری‘ قرار دے دیا۔رپورٹ کے مطابق ان کاروں نے لڑکیوں کو آزادی دینے میں بہت بڑا کردار ادا کیا کیونکہ آزاد خیال لڑکے لڑکیاں ایک دوسرے کو اس ایجاد میں بٹھا کر ایک رومانی پیغام دیتے تھے۔ اس سے پہلے وہ کسی لڑکے کے ساتھ جاتے ہوئے خوفزدہ ہوتیں کہ والدین، رشتہ داروں اور نگہبانوں کی نظروں سے بچنا ان کے لیے مشکل ہوتا تھا اور وہ بمشکل ہی کسی لڑکے کے ساتھ کلب، کنسرٹ یا کسی اور ایسی جگہ پر جا سکتی تھیں۔ تاہم ان کاروں کے آنے کے بعد ان کا یہ مسئلہ حل ہو گیا حتیٰ کہ انہیں گاڑی کے اندر لوگوں کی نظروں سے اوجھل رہ کرلڑکوں کے ساتھ تنہائی کے لمحات گزارنے کا موقع بھی مل گیا تھا۔یہی وجہ تھی کہ اس دور کے والدین نے ان گاڑیوں کو شیطان کی سواری کا لقب دے ڈالا۔