اب مہینوں کیا دو دن میں مکان مکمل طور پر تعمیر مگر کیسے ؟ حیرت انگیز ٹیکنالوجی متعارف کروا دی گئی

ریاض سعودی عرب میں ٹیکنالوجی کی مدد سے صرف 48 گھنٹوں کے دوران ایک مکان مکمل طورپر تعمیر کرلیا گیا۔عرب ٹی وی کے مطابق انتہائی کم وقت میں مکان کی تعمیر کا یہ کارنامہ بلڈنگ ٹیکنالوجی اینڈ موٹی ویشن انی شی ایٹیو کی جانب سے انجام دیا گیا ۔ یہ اقدام ملک میں

اعلیٰ معیار کی تیز رفتار تعمیرات کو یقینی بناتے ہوئے شہریوں کے وسائل اور قیمتی وقت کا تحفظ کرنا ہے اور ساتھ ہی ساتھ مملکت میں ہائوسنگ کے شعبے میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال پرانحصار کرتے ہوئے روایتی تعمیراتی طریقوں سے جان چھڑانا ہے۔اڑتالیس گھنٹے میں مکان کی تعمیر کا کام کاٹیرا نامی ایک تعمیراتی فرام کی جانب سے کیا گیا۔ انتہائی کم وقت میں تعمیر کے بعد سعودی عرب کی اہم شخصیات نے اس کا وزٹ بھی کیا۔ گذشتہ روز سعودی عرب کے ہائوسنگ کے وزیر ماجد الحقیل، توانائی اور معدنی وسائل کے نائب وزیر انجینیر عبدالعزیز العبد الکریم، مقامی پیداواری کمیٹی اور اسپیشل سیکٹر کے چیئرمین فہد السکیت نے بھی مکان کا معائنہ کیا۔ دوسری جانب الپوری( ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ کے علاقے گاؤں چکٹ اور برکانا میں ایس آر ایس پی پیس پراجیکٹ کی جانب سے دو پن بجلی گھر منصوبوں پر کام مکمل ڈپٹی کمشنر شانگلہ عبدالحمید خان نے افتتاح کرلیا ان علاقوں کے لوگ بغیر لوڈشیڈنگ کی کم نرخ پر بجلی سے فائدہ اُٹھائنگے یورپی یونین فنڈ سے بنائے گئے ان منصوبوں پر ایک کروڑ پانچ لاکھ روپے خرچ کئے گئے ان منصوبوں کو مقامی تنظیم ایس ار یس پی نے کمیونٹی اشتراک سے کام مکمل کیا عوا م نے بھی اپنا حصہ ڈالا اس موقع پر چکٹ یونین کونسل ڈھیری اور برکاناشاہپور میں مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر شانگلہ عبدالحمید خان نے ایس ار ایس پی تنظیم کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ان پن بجلی گھروں سے شانگلہ کے عوام فائدہ اُٹھائنگے اور یہ علاقے روشنیوں میں بدل جائنگے سب سے اچھی بات ان منصوبوں میں کمیونٹی اشتراک کا ہے اس لئے یہ منصوبے کم لاگت میں تعمیر ہوئے اگر ہمارے عوام اسی طرح شراکت سے ترقیاتی منصوبوں میں شامل ہوجائے تو وہ دن دور نہیں کہ ہم ترقی کی منزل کو نہیں پاسکے انھو ں نے مقامی تنظمیوں کی کارکردگی کو سراہا کہ ایس ار ایس پی جیسی تنظمیں لوگوں کی زندگی میں بہتری کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے ایس ار ایس پی کے پروگرام منیجر عبدالقہار نے کہا کہ یورپی یونین ایس ارایس پی پیس پراجیکٹ کی مالی معاونت سے شانگلہ میں 45 چھوٹے پن بجلی گھروں کی تعمیر کررہے ہیں جسمیں 28 منصوبوں پر کام کمپلیٹ کردیا گیا ہے اور باقی مارچ تک کمپلیٹ ہوجائنگے ان منصوبوں سے شانگلہ کے بیشتر علاقوں میں انتہائی کم ریٹ پر بجلی فراہم کردی گئی ہے انہوں نے کہا کہ پائیدار ترقی کے لئے ترقیاتی منصوبوں میں لوگوں کا اشتراک لازمی ہے کمیونٹی ان بجلی گھروں کی بہتر دیکھ بھال کرے گی تقریب سے علاقائی نمائندوں نے ایس ار ایس پی کا شکریہ ادا کیا کہ انھوں نے شانگلہ میں پن بجلی گھروں کے علاوہ بہت سے ترقیاتی منصوبوں میں کام کیا ہے جس سے علاقے کے لوگ ترقی کے راہ پر گامزن ہے ان منصوبوں میں روڈ ،سسپنشن پل وغیرہ کے منصوبے شامل ہے۔۔