”مسجد حرام اور اس کے صحنوں میں استعمال ہونے والے قالینوں کی تعداد کتنے ہزار ہے اور ان کی تبدیلی اور دھلائی کس طرح ہوتی ہے؟“ پڑھیے ایک معلوماتی تحریر

ریاض(این این آئی)مسجد حرام اور مسجد نبوی کے امور کی جنرل پریذیڈنسی میں مسجد حرام کی صفائی اور غالیچوں سے متعلق انتظامیہ یہاں قالینوں کی براہ راست نگرانی کرتی ہے۔ ان معاملات میں حرم شریف میں موجود قالینوں کی صفائی اور انہیں معطر کرنے کے علاوہ ضرورت کے وقت خراب ہو جانے والے قالین کو

تبدیل کرنا ،سال میں پانچ مرتبہ مسجد حرام کے تمام قالینوں کی تبدیلی اور مستقل بنیادوں پر ان کی دْھلائی شامل ہے۔سعودی خبر رساں ایجنسی کے مطابق مسجد حرام میں صفائی اور غالیچوں کی انتظامیہ کے ڈائریکٹر انجینئر محمد بن سلیمان الوقدانی نے بتایا کہ حرم شریف میں قالینوں کی فراہمی کا عمل کئی ادوار پر مشتمل رہا۔ اس دوران اعلی ترین معیار کو یقینی بنانے کے واسطے عالمی سطح پر بہترین کارخانوں کا تعاون حاصل کیا گیا۔پہلا دور 1402 ہجری سے 1409 ہجری تک تھا جس میں بیلجیئم سے سْرخ رنگ کے قالین درآمد کیے گئے۔ دوسرا دور 1409 ہجری سے شروع ہو کر 1416 ہجری تک رہا اور اس دوران جرمنی سے سْرخ رنگ کے قالین منگوائے گئے۔ تیسرا دور 1416 ہجری سے 1420 ہجری تک رہا اور اس دوران لبنان سے سْرخ قالین درآمد کیے گئے۔ اس کے بعد 1420 ہجری سے 1434 ہجری تک چوتھا دور جاری رہا جس میں مملکت کے اندر ہی سْرخ رنگ کے قالین تیار کیے گئے۔ 1434 ہجری سے اب تک پانچواں دور جاری ہے جس میں مملکت کے اندر ہی سبز رنگ کے قالین تیار کیے جا رہے ہیں۔الوقدانی نے باور کرایا کہ مسجد حرام کے لیے مملکت میں تیار کیا جانے والا قالین عالمی سطح پر بہترین اور اعلی ترین قسم کے قالینوں میں سے ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مسجد حرام اور اس کے صحنوں میں استعمال ہونے والے قالینوں کی تعداد 25 ہزار تک ہے۔