You are here
Home > اسپشیل اسٹوریز > متفرق واقعات > میاں نواز شریف کا ایسا خفیہ شوق جس کی تکمیل کے لیے انہوں نے قوم کے کروڑوں روپے پھونک ڈالے ؟ حیران کردینے والی تفصیلات آ گئیں

میاں نواز شریف کا ایسا خفیہ شوق جس کی تکمیل کے لیے انہوں نے قوم کے کروڑوں روپے پھونک ڈالے ؟ حیران کردینے والی تفصیلات آ گئیں

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ہم لوگ جانتے ہیں کہ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کھانے پینے کے بہت شوقین ہیں، فن کے دلدادہ ہیں اور کرکٹ سے بھی دلی لگاﺅ رکھتے ہیں لیکن ان کا ایک شوق ایسا بھی ہے جو آج تک کسی کو معلوم نہیں تھا۔ میاں نواز شریف کے (سابق)فوکل پرسن برائے ماحولیات سید رضوان محبوب نے ڈیلی ٹائمزمیں شائع ہونے والے

اپنے آرٹیکل میں انکشاف کیا ہے کہ ”میاں نواز شریف شکار کے بے حد شوقین ہیں اور انہیں جنگلات اور جنگلی حیات سے اس قدر جذباتی وابستگی ہے کہ آج تک ملک کے کسی وزیراعظم میں نہیں دیکھی گئی۔“سید رضوان لکھتے ہیں کہ ”میرا ایک شکاری دوست تھا جس کا نام طہاور علی خان تھاجو اب اس دنیا میں نہیں رہا۔ تب میں محکمہ جنگلات میں آفیسر تھا۔ طہاور کمال کا شکاری تھا اور جنگل اس کی محبوب جگہ تھے۔ مجھے بھی ماحولیات اور جنگلات سے بہت لگاﺅ تھا چنانچہ میں گاہے ان کے گھر چلاجاتا اور گھنٹوں ان سے خلیج بنگال کے ساحلوں پر واقع جنگلات میں شکار کے قصے سنتا رہتا۔ ان کے ہر قصے کا اختتام ایک شخص کے ذکر پر ہوتا۔ یہ شخص میاں نواز شریف تھا جو اس وقت پنجاب کے وزیراعلیٰ تھے۔ طہاور کہتا کہ ”میاں نواز شریف کا نشانہ تو اتنا اچھا نہ تھا لیکن جنگلوں میں گھومنے کے معاملے میں ایسا انتھک آدمی میں نے نہیں دیکھا۔ اسے جنگل میں گھومتے رہنا بے حد پسند تھا۔“وہ مزید لکھتے ہیں کہ ”ایک روز طہاور نے مجھے نواز شریف سے ملاقات کی پیشکش کی۔ انہی دنوں پنجاب حکومت کی جنگلات کے متعلق ایک پالیسی پر میں نالاں تھا چنانچہ میں نے ملنے سے انکار کر دیا۔

کئی سال گزر گئے۔ میں نے نوکری چھوڑ کر صحافت شروع کر دی۔ اسی دوران میری ملاقات میاں نواز شریف سے ہوئی تو میں نے ان سے اس ملاقات نہ کرنے کے واقعے کا ذکر کیا، جس پر وہ ہنس دیئے۔ پھر ایک ملاقات میں انہوں نے مجھے جنگلی حیات، ماحولیات اور موسمیاتی تبدیلیوں کے متعلق شعبے کو سنبھالنے کی پیشکش کر دی۔ انہوں نے تین بار پیشکش کی اور میں نے عزت کے ساتھ تینوں بار انکار کر دیا۔ اس پر انہوں نے مجھے چوتھی بار پیشکش کی۔ اس بار میرے ساتھ بیٹھے میرے ایک دوست نے میرے پاﺅں پر ٹھوکر ماری۔ چنانچہ میں نے ان کی پیشکش قبول کر لی اور ایک شرط رکھی کہ میرے کام میں کوئی دخل نہیں دے گا اور یہ غیرسیاسی رہ کر کام کروں گا۔ انہوں نے فوراً میری یہ شرط منظور کر لی اور میں نے ان کے فوکل پرسن کے طور پر کام شروع کر دیا۔ ان کے ساتھ کام کرنے کے دوران میں نے دیکھا ہے کہ انہیں جنگلات اور جنگلی حیات سے جنون کی حد تک لگاﺅ ہے۔“واضح رہے اس کے ساتھ ساتھ میاں نواز شریف کو کرکٹ کھیلنے کا بھی کافی شوق رہا جس حوالے سے وہ اپنی پرفارمنس کاذکر مختلف محفلوں میں کرتے رہتے ہیں ۔


Top