You are here
Home > اسپشیل اسٹوریز > متفرق واقعات > جہاں بھی گئے داستان چھوڑ آئے: ملکہ برطانیہ نے تین پاکستانیوں کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئے بڑے اعزاز سے نوازنے کا اعلان کر دیا

جہاں بھی گئے داستان چھوڑ آئے: ملکہ برطانیہ نے تین پاکستانیوں کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئے بڑے اعزاز سے نوازنے کا اعلان کر دیا

جہاں بھی گئے داستان چھوڑ آئے: ملکہ برطانیہ نے تین پاکستانیوں کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئے بڑے اعزاز سے نوازنے کا اعلان کر دیا

لاہور(ویب ڈیسک)تین باصلاحیت پاکستانی نوجوان ملکہ برطانیہ کی طرف سے دیئے جانے والے مشہور کوئینز ینگ لیڈر ایوارڈ 2018 کیلئے منتخب ہوگئے۔پاکستان سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں ہارون یاسین، حسن مجتبیٰ زیدی اور ماہ نور سید کو ملکہ برطانیہ الزبتھ دوئم ایوارڈ سے نوازیں گی۔اپنے اپنے شعبوں میں نمایاں کارکردگی اور صلاحیتوں کا بہترین مظاہرہ کرنے والے

نوجوان پاکستانیوں، ہارون یاسین، حسن مجتبیٰ زیدی اور ماہ نور سید دنیا بھر سے منتخب کیے گئے ان خوش قسمت نوجوانوں میں سے ہیں جنہیں ملکہ برطانیہ بکنگھم پیلس میں کوئینز ینگ ایوارڈ سے نوازیں گی۔یہ ایوارڈز دولت مشترکہ کے ممالک سے چنے گئے ان نوجوانوں کیلئے ہے جن کی عمریں 18 سے 29 سال کے درمیان ہیں جبکہ کوئینز ینگ ایوارڈز جیتنے والوں کو لندن میں تربیت اور راہنمائی دی جائے گی۔کوئینز ینگ لیڈرز ایوارڈ 2018 جیتنے والے ہارون یاسین غریب و بے سہارا بچوں کو اپنی تنظیم ’’اورینڈا‘‘ کے ذریعے زیور تعلیم سے آراستہ کررہے ہیں اور انہیں ان ہی خدمات کے اعتراف میں ایوارڈ سے نوازا گیا ہے۔ حسن مجتبیٰ ’’ڈسکورنگ نیو آرٹسٹس‘‘ نامی تنظیم کے بانی ہیں جو پسماندہ علاقوں کے بچوں کو مفت تعلیم کی فراہمی کے لیے سرگرم عمل ہے۔حسن مجتبیٰ ’’ڈسکورنگ نیو آرٹسٹس‘‘ نامی تنظیم کے بانی ہیں جو پسماندہ علاقوں کے بچوں کو مفت تعلیم کی فراہمی کے لیے سرگرم عمل ہے۔ماہ نور سید اپنے علاقے میں تنظیم ’’اسپریڈ دا ورڈ‘‘ کے ذریعے مختلف اسکولوں اور تعلیمی اداروں کے اشتراک سے بچوں کے لیے غیر نصابی ورکشاپ منعقد کرتی ہیں۔وہ ان ورکشاپس کے ذریعے ڈانٹ ڈپٹ، جنسی زیادتی اور ذہنی و جسمانی صحت کے حوالے سے بچوں کو آگاہی فراہم کرتی ہیں۔پاکستان میں برطانیہ کے ہائی کمشنر تھامس ڈریو نے ایوارڈز جیتنے والے پاکستانی نوجوانوں کو مبارک دی ہے جبکہ برطانوی شہزادوں ولیم اور ہیری نے بھی ایوارڈ جیتنے والوں سے ملاقات کی اور ان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔برطانوی شہزادوں کا کہنا تھا کہ کوئینز ینگ لیڈرز ایوارڈ جیتنے والے دیگر نوجوانوں کیلئے مشعل راہ ہیں۔


Top