نبیؐ نے جنگ احد میں جب اپنے چچا حضرت امیر حمزہؓ کو دیکھا ان کی لاش کا مسئلہ بنا پڑا تھا، ان کا دل نکال لیاگیا تھا اور ان کی۔۔۔ پڑھیئے ایک اسلامی واقعہ

لاہور (ویب ڈیسک) نبیؐ نے جنگ احد میں جب اپنے چچا حضرت امیر حمزہؓ کو دیکھا ان کی لاش کا مسئلہ بنا پڑا تھا، ان کا دل نکال لیاگیا تھا اور ان کی آنکھیں نکال لی گئیں تھیں، کان کاٹ دیے گئے تھے، ہند ہ نے ان کا ہار بنا کر اپنے گلے میں

یہ خبر پڑھںک :‌کاڑ عمران خان وزیر اعظم بن جائںت گے اگر ایسا ہوا تو انہںہ اپنے وعدے پورے کرنے کے لےr پہلا کام کاڑ کرنا چاہےھ ؟ پاک فوج کے (ر) کرنل نے تجاویز پش کر دیں
یہ خبر پڑھں : کسی کو حق نہںی کہ پدنا ہونے سے پہلے ہی پاکستانی بچے کو مقروض کردے۔۔۔۔ چفں جسٹس آف پاکستان نے یہ ریمارکس کس کس مںی جاری کےے ؟ خبر آ گئی
یہ خبر پڑھں : فلموں کے شائقنی کے لےک شاندار خبر : خوبصورت ترین بالی وڈ اداکارہ اپنی اگلی فلم مںم اکھاڑے مںئ کبڈی کھیتیا نظر آ ئںم گی ، نام آپ کو دنگ کر ڈالے گا
پہنا تھا اب سوچئے پیچھے لاش کاکیاحال ہو گا، نبی کریمؐ نے دیکھا تو آپؐ بہت آزردہ ہوئے آنکھوں میں سے آنسو آ گئے اور آپؐ نے اس وقت پابندی لگا دی کہ میری پھوپھی حضرت حمزہؓ کی بہن آپؓکو دیکھنے کے لیے آئے گی دوسری عورتوں کی طرح ایسا نہ ہو کہ وہ دیکھے اور اسے صدمہ پہنچے، گھر کی عورتیں اپنے اپنے مردوںکو دیکھنے کے لیے آ گئیں کہ نہلائیں دفنائیں تو اس وقت میں آپ کی پھوپھی جو تھی وہ بھی آ گئیں مگر صحابہؓ نے روک دیا کہ

نبی کریمؐ نے منع فرما دیاہے کہ آپؓ اپنے بھائی کی لاش نہیں دیکھ سکتیں. انہوں نے پوچھا: نبی کریمؐ آپ نے کیوں منع فرما دیا؟ آپؐ نے فرمایا کہ تم اس کی لاش کو دیکھنے کاحوصلہ نہ رکھو گی، پوچھنے لگی اے اللہ کے نبیؐ! میںاپنے بھائی کی لاش پر رونے کے لیے نہیں آئی، میں تو اپنے بھائی کو مبارکباد دینے کے لیے آئی ہوں، جب نبی کریمؐ نے یہ الفاظ سنے تو فرمایا: اچھا پھر تمہیں دیکھنے کی اجازت ہے۔سوچئے کتنا بڑا دل کر لیا کہ میں تو اپنے بھائی کو مبارکبادی دینے کے لیے آئی ہوں. صبر پر بھی اور شکر پر بھی ایک بیوی بہت خوبصورت تھی جب کہخاوند بہت بدصورت اورشکل کا انوکھا تھا، رنگ کالاتھا بہرحال زندگی گزر رہی تھی، نیک معاشرے میں زندگیاں گزر جایا کرتی ہیں، ایک موقع پر خاوند نے بیوی کی طرف دیکھا تو مسکرایا خوش ہوا بیوی دیکھ کر کہنے لگی کہ ہم دونوں جنتی ہیں، اس نے پوچھا یہ آپ کو کیسے پتہ چلا، بیوی نے کہا: جب آپ مجھے دیکھتے ہیں خوش ہوتے ہیں شکریہ ادا کرتے ہیں اور جب میں آپ کو دیکھتی ہوں تو صبر کرتی ہوں شریعت کا حکم ہے صبر کرنے والا بھی جنتی ہے اور شکر کرنے والا بھی جنتی ہے۔(ف،م)