سانپ کے زہر کا تریاق کیسے بنتا ہے ؟ قران کریم میں پیاسے اونٹ کے تذکرے میں انسانوں کے لیے کیا سبق موجود ہے ؟ سورۃ واقعہ کی آیت نمبر 55 کی یہ تفسیر آپ کے رونگٹے کھڑے کر ڈالے گی

لاہور (انتخاب : شیر سلطان ملک ) کیا یہ اونٹ کونہیں دیکھتےاس کوکیسے پیدا کیاگیا: “ھیام” اونٹ کولگنے والی ایک بیماری کا نام ہے اس بیماری کے لگنے پراونٹ کھانا پینا ترک کرکے مرتے دم تک مشرق سے مغرب تک سورج کو دیکھتا رہتا ہے، اس کا علاج سانپ کونگلنا ہے۔

یہ بھی معروف ہے کہ بعض دفعہ خود اونٹ سانپ کوکھالیتا ہے جس کے زہر کی وجہ اس کو شدید پیاس لگتی ہے اور اس کی آنکھوں سے آنسو نکلتے ہیں اور ان آنسووں کو چمڑے کی چھوٹی تھیلی میں محفوظ کیا جاتا ہے یہ آنسو دوسرے آنسوں سے مختلف ہوتے ہیں کیونکہ یہ آنسو سانپ کے ڈسنے کا مجرب”تریاق”ہیں۔ سبحان اللہ قرآن کریم کہتا ہے:( فشاربون شرب الھیم)”جہنمی پیاسے اونٹ کی طرح(کھولتا ہوا پانی) پئیں گے” گویا کہ انہوں نے سانپ کا زہر کھایا ہوا ہے اور اونٹ کے پیاس کے اس بیماری کو”ھیام” کہا جاتا ہے۔ اور اللہ فرماتا ہے:( افلاینظرون الی الابل کیف خلقت)” کیا یہ اونٹ کو نہیں دیکھتے جس کوکیسے پیدا کیا گیا”۔ سورۃ واقعہ(آیت نمبر 55)