فاطمہ سہیل کی ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے کا الزام ۔۔۔۔ محسن عباس اور نازش جہانگیر اس وقت کہاں اور کس حال میں ہیں ؟ ایف آئی اے نے تصدیق کردی

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان کے نامور اداکار و گلوکار محسن عباس حیدر نے سابق اہلیہ فاطمہ سہیل کی شکایت پر وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے سائبر کرائم ونگ کی جانب سے گرفتار کرنے کی خبروں کی تردید کردی۔ دوسری جانب اداکار محسن عباس نے انسٹاگرام پر 2 مختلف پوسٹس کیں

جن پر مداحوں نے ان سے گرفتاری کی خبروں سے متعلق دریافت کیا جس کی انہوں نے تردید کی۔اداکار کی انسٹا پوسٹ پر ایک صارف نے پوچھا کہ سنا ہے آپ قید میں ہیں جس پر محسن عباس نے کہا کہ ٹھیک سے پڑھیں قید نہیں جم میں ہوں۔انہوں نے مختلف کمنٹس میں کہا کہ سابق اہلیہ سستی شہرت کے لیے ایسا کررہی ہیں۔گرفتاری کی خبریں پھیلانے سے متعلق صارف کے سوال پر محسن عباس نے کہا کہ کیونکہ لوگوں کے پاس کرنے کو کوئی کام نہیں ہے اور رشوت، سفارش، جھوٹ ان کا خاصا ہے۔ماڈل نازش جہانگیر نے بھی فاطمہ سہیل کی جانب سے دونوں کی گرفتاری کی پوسٹ کو جھوٹی خبر قرار دیا۔نازش جہانگیر نے اپنی انسٹاگرام اسٹوری میں لکھا کہ شہرت حاصل کرنے کا ایک نیا طریقہ ہے، جھوٹ بولنے سے متعلق فاطمہ سہیل کے اعتماد کو مانتی ہوں۔علاوہ ازیں ایف آئی اے کا کہنا ہے کہ اداکار محسن عباس اور ناز جہانگیر کو گرفتار نہیں کیا گیا بلکہ ان کے خلاف سابق اہلیہ کی شکایت پر تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے۔اس حوالے سے ایف آئی اے ذرائع نے بتایا کہ شکایت کنندہ نے الزام لگایا تھا کہ ان کی ایک ویڈیو لیک کی گئی تھی اور انہیں اس میں سابق شوہر محسن عباس اور نازش جہانگیر کے ملوث ہونے کا شبہ ہے۔