یہ ہوئی ناں بات : کشمیر اور کشمیریوں کی خاطر مہوش حیات نے ایسا کام کر ڈالا کہ قوم کا سر فخر سے بلند ہو گیا

ناروے ( ویب ڈیسک) حکومت ناروے کی جانب سے معروف اداکارہ مہوش حیات کو حسن کار کردگی کے اعزاز سے نواز دیا گیا۔مہوش حیات نے حال ہی میں ناروے کے شہر اسلو میں ہونے والی تقریب میں شرکت کی جہاں انہیں حکومت نارووے کی جانب سے اپنے شعبے میں بہترین خدمات پر حسن کار کردگی کے اعزاز

سے نوازا گیا۔مہوش حیات کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر ایک پوسٹ کی گئی جس میں تقریب سے خطاب کرتی نظر آرہی ہیں۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی بتایا کہ یہ میرے لئے بہت اعزاز کی بات ہے کہ اوسلوم میں ہونے والی امن سے وابستہ تقریب میں موجود مہمانوں اور ناروے کی قابل احترام وزیر اعظم میڈم ارنا سولبرگ کی موجودگی میں خطاب کرنے کا موقع ملا۔مہوش حیات نے کہا کہ تقریب میں مجھے اپنے شعبے میں گراں قدر خدمات پر حسن کارکردگی کا ایوارڈ بھی دیا گیا جب کہ میرے لئے فخر کی بات ہے کہ مجھے بہترین تقریب میں امن کے فروغ میں سنیما کے کردار پر بات کرنے کا موقع ملا۔اداکارہ کا کہنا تھا کہ بالی ووڈ محبت کو فروغ دینے کی بجائے نفرتوں کو پروان چڑھا رہا ہے اپنی فلموں کے ذریعے پاکستان کو ولن دکھانے کی کوشش کر رہا ہےجیسا کہ وہ کرتے آرہے ہیں۔انہیں فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے کہ آیا ان کے نزدیک قوم پرستی اہم ہے یا پر امن مستقبل۔واضح رہے کہ کچھ ماہ قبل حکومت پاکستان کی جانب سے بھی مہوش حیات کو تمغہ امتیاز سے بھی نوازا گیا تھا انہوں نے تقریب سے جرأتمندانہ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کس طرح ہالی ووڈ اور بالی ووڈ نے پاکستان کے تصور کوبین الاقوامی سطح پر نقصان پہنچایا ۔تقریر کے دوران اداکارہ نے معصوم کشمیریوں کے حق میں بھی آواز بلند کی اور کہا کہ ہمارے بھائی اور بہنیں کئی سالوں سے ظلم وستم کا سامنا کر رہے ہیں۔ عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے۔ بھارت کو فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے کہ انہیں ’ قوم پرستی ‘ چاہیے یا پر امن ۔