روس نے معروف سرچ انجن گوگل پر مقدمہ کرادیا

ماسکو(ویب ڈیسک) روس نے معروف سرچ انجن گوگل کیخلاف سول مقدمہ بنادیا اور الزام عائد کیا ہے کہ وہ اپنے سرچ کے نتائج میں سے کچھ اینٹریز ڈیلیٹ کرنے میں ناکام رہا، اگر امریکی سرچ انجن پر الزام ثابت ہوگیا تو اسے سات لاکھ ربلز(چودہ لاکھ روپے سے زائدتقریباً)جرمانہ ہوسکتا ہے۔

حکومت نے کہاہے کہ گوگل نے سٹیٹ رجسٹری میں شمولیت اختیار نہیں کی جس میں پابندی کا سامنا کرنیوالی ویب سائٹس شامل ہیں یا پھر روس کا یہ خیال ہے کہ ان ویب سائٹس کے پاس غیرقانونی معلومات ہوتی ہیں اور یوں یہ قانون کو توڑرہی ہیں۔ بتایاگیاہے کہ اس مقدمے کا حتمی فیصلہ دسمبر میں متوقع ہے تاہم گوگل نے اس پر کسی بھی قسم کا تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔

عرب میڈیاکے مطابق گزشتہ پانچ سالوں میں روس نے انٹرنیٹ قوانین میں بتدریج سختی کی ہے جن کے تحت سرچ انجنز کو ملک میں موجود سرورز سے سرچ کے نتائج کو بھی ڈیلیٹ کرنا ہے ۔