عدلیہ کا موجد اور سعودی عرب کا شاہ فیصل ایوارڈ40مرتبہ اپنے نام کرنیوالا پاکستانی گرفتارکرلیاگیا کیونکہ ۔ ۔ ۔

جدہ، چنیوٹ(ویب ڈیسک) شاہ فیصل ایوارڈ سعودی عرب کا بڑا ایوارڈ ہے جو ہرسال ان لوگوں کو دیاجاتاہے جن کے کردار کی وجہ سے معاشرے میں مثبت تبدیلیاں آتی ہیں، اس ایوارڈ کو بنیادی طورپر پانچ کیٹگریز میں تقسیم کیاجاتاہے جن میں اسلام کیلئے خدمات، اسلامی تعلیمات، عربی زبان ، سائنس اور میڈیسن شامل ہیں لیکن یہی ایوارڈ 40دفعہ اپنے نام کرنیوالے پاکستانی شہری کوپاکستان کی پنجاب پولیس نے گرفتار کرلیاکیونکہ دراصل وہ ایک فراڈیہ اور جعل ساز تھا، ایوارڈ زکا ڈرامہ صرف اس کے وزیٹنگ کارڈز تک محدودتھا۔
نجی ٹی وی چینل کے مطابق جعلی سائنسدان نے ہفتہ بھرسوشل میڈیا پر دھوم مچائے رکھی لیکن بالآخر پولیس کی گرفت میں آگیا۔نام نہاد پروفیسر ڈاکٹر آر یو عمران احمد کی سائنسدان کے نام سے تشہیری مہم وائرل ہونے پر ڈی پی او چنیوٹ نے ایکشن لیا اور پوچھ گچھ کے دوران انکشاف ہواکہ موصوف نے شہریوں کو متوجہ کرنے کے لئے جعلی ڈگریوں کا سہارا لیا۔
ملزم کے وزٹنگ کارڈ پر 10 نوبل انعام یافتہ 40 شاہ فیصل انعام پذیر ،100 سائنسی کارنامے، 361 قوانین میڈیکل عدلیہ کا موجد جیسے کوائف درج ہیں۔ اسی کارڈ میں دنیا بھر کی ڈگریاں اور بیماریوں کا تذکرہ بھی ہے۔