پاکستانیوں کے لیے سال 2018 کی سب سے بڑی خوشخبری ۔۔۔۔۔ امیر ترین پاکستانی شخصیت نے اپنے کل اثاثوں کا 25 فیصد حصہ ڈیم فنڈ میں دینے کی پیشکش کر ڈالی

اسلام آباد (ویب ڈیسک ) سپریم کورٹ میں بحریہ ٹاؤن کراچی نظر ثانی درخواست کی سماعت کے دوران ملک ریاض کے وکیل زاہد بخاری نے کہا ہے کہ بحریہ ٹاؤن ڈوبا تو پاکستان ڈوب جائے گا ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کتنی مرتبہ پانی کی بڑی لائنوں کو بحریہ ٹاؤن کیلئے تبدیل کیا گیا،

ڈیمز کیلئے پندرہ سو بلین دے دیں آپ کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔ ملک ریاض نے کہا کہ کل اثاثوں کا پچیس فیصد دینے کیلئے تیار ہوں ۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی پانچ رکنی لارجر بنچ نے نظرثانی درخواست کی سماعت کی ۔ چیف جسٹس نے ملک ریاض سے کہا کہ ایک ہزار بلین روپے دے دیں ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ملک ریاض صاحب، آپ کی ورتھ تین ہزار بلین روپے ہے ۔ملک ریاض نے کہا کہ میری ورتھ سو بلین یا پچاس بلین بھی نہیں ۔ وکیل زاہد بخاری نے کہا کہ بحریہ ٹاؤن ڈوبا تو پاکستان ڈوب جائے گا ۔چیف جسٹس نے اس بات پر سخت ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا اللہ محافظ ہے، پاکستان کی عدالتیں اس کی محافظ ہیں، میری عدالت میں پاکستان ڈوبنے کی بات نہ کریں ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ مجھے پتہ چلا کہ آپ سارا دن بحریہ ٹاؤن کا جہاز لے کر پھرتے رہتے ہیں ۔ چیف جسٹس نے بحریہ ٹاون اور ملک ریاض کے وکیلوں سے کہا کہ آپ نے بحریہ کے جہاز کو ٹیکسی بنا رکھا ہے ۔واضح رہے کہ .وزیراعظم عمران خان کی جانب سے زرمبادلہ ذخائر کی صورتحال بہتر کرنے اور نئے ڈیموں کی تعمیر کیلئے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں

سے ڈالرمیں عطیات بھیجنے کی اپیل کے بعد بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے رقوم بھیجنے کا سلسلہ شروع ہو گیا۔وزیراعظم نے بیرون ملک سے ڈیم کے لئے فنڈ جمع کرنے کی ذمہ داری سینیٹر فیصل جاوید کو سونپ دی ۔ جنہیں پاکستان نژاد امریکی شہری نے ایک ارب ڈالرعطیہ کی یقین دہانی کرائی ہے۔تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے وزیراعظم عمران خان کو بتایا کہ امر یکہ میں مقیم پاکستانی شہری ایک ارب ڈالرعطیہ کرنا چاہتا ہے۔ عمران خان نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اوورسیز پاکستانیوں کے جذبے کو سراہا۔ بیرون ملک پاکستانی سفارت خانے بھی ڈیم فنڈ کے حوالے سے فعال ہو گئے۔ بنکاک اورکینیڈا سمیت کئی ملکوں میں پاکستانی سفارتخانوں نے پریس ریلیز جاری کئے ہیں جن میں ڈیم فنڈز کے اکاونٹس کی تفصیلات فراہم کی گئی ہیں۔ پاکستان میں بھی ڈیم فنڈ کے لئے عطیات کا سلسلہ جاری ہے۔ ارکان قومی اسمبلی اور وزراءنے اپنی تنخواہیں دینے کا اعلان کیا ہے۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے اپنی پہلی تنخواہ ڈیم فنڈ میں دینے کا اعلان کردیا۔ پاکستان فرنیچر کونسل نے فنڈ میں10 لاکھ روپے دیئے ہیں۔ ڈیم فنڈمیں جمع ہونے والی رقم بڑھ کر ایک ارب 98کروڑ76 لاکھ 48 ہزار روپے ہو گئی۔