کل کتنے آدمی تھے کالیا : نواز شریف اور مریم نواز کے استقبال کے لیے راولپنڈی سے کل کتنے لوگ لاہور پہنچے ؟ شرم سے پانی پانی کر دینے والے اعداد وشمار سامنے آگئے

راولپنڈی(ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) راولپنڈی کی مقامی قیادت نااہل سابق وزیر اعظم نواز شریف اور انکی صاحبزادی مریم نواز کی وطن واپسی پر ان کے استقبال کیلئے راولپنڈی میں کارکنوں کو اکھٹا کرنے میں ناکام ہو گئی جبکہ مقامی قیادت کی جانب سے گرشتہ کئی سالوں سے مسلسل نظر انداز کئے

جانے والے کارکنوں نے لاہور ریلی میں شرکت سے معزرت کر لی راولپنڈی سٹی و کینٹ سے 3 قومی اور 7 صوبائی حلقوں کے امیدوار 200 کارکنوں سے بھی کم افراد کا قافلہ لیکر موٹر وے کے زریعے لاہور روانہ ہوگئے، مقامی لیگی قائد ین کی غیر اعلانیہ روانگی کے باعث مسلم لیگ (ن) راولپنڈی کے صدر سردار نسیم درجنوں لیگی خواتین کے ہمراہ سکستھ روڑ پر جبکہ بیشتر کارکنان اندرون شہر مختلف مقامات پر انتظار کرت رہ گئے، نواز شریف اور مریم نواز کی واپسی کے موقع پر انکے استقبال کیلئے اجتماعی طورر پر لاہور ائیر پورٹ جانت کی اعلان کر رکھا تھا، اور کارکنوں کو صبح 8 بجے سکستھ روڈ این اے 62 کے الیکشن آفسر کو ہدایت دی کہ کل 150 خواتین کارکن جمع ہو سکیں، دوسری طرف راولپنڈی کینٹ قومی اسمبلی کے حلقے این اے 61 کے امیدوار ملک ابرار نے کارکنوں کو اپنے مرکزی الیکشن آفس میں جمع پونے کی کال دے رکھی تھی تاہم ملک ابرار کارکنوں کو ساتھ کت جانے کی بجائے سکستھ روڑ چلے گئے، دوسری طرف پولیس نے کارروائی کر کے کاکنوں کو لاہور کے جانے کیلیے بالائی جانے والی دونوں بسیں بھی تھانے نتقل کردیں ، لاہور ایئر پورٹ پر استقبال کر لئے جانے سے معزرت کر لی ہے،

زرائع نے بتایا ہے کہ کسی بھی تصادم سے بچنے کیلئے ممکنہ طور پر سابق وزیر اعظم نواز شریف کی وطن واپسی کے بعد انہیں اڈیالہ جیل قید کرنے کی بجائے انہیں اٹک جیل منتقل کر دیا جائے گا۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق اڈیالہ جیل میں ٹرائل کا حکم قومی احتساب آرڈیننس کی شق 16 کے تحت دیا گیا ہے۔دوسری جانب نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن(ر) صفدر کی سزا کے خلاف اپیلیں اسلام آباد ہائیکورٹ کا عدالتی وقت ختم ہونے کے باعث آج دائر نہ کی جاسکیں۔موسم گرما کی تعطیلات میں عدالتی وقت دن ایک بجے تک ہے جس کے باعث اب پیر کے روز اپیلیں دائر کیے جانے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔واضح رہے کہ ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا یافتہ سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز گزشتہ روز لندن سے براستہ ابوظہبی لاہور پہنچے تھے، جہاں قومی احتساب بیورو (نیب) کی ٹیم نے انہیں ایئرپورٹ سے ہی گرفتار کرکے خصوصی طیارے میں اسلام آباد منتقل کیا اور بعدازاں انہیں اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا۔سپریم کورٹ کے پاناما کیس سے متعلق 28 جولائی 2017 کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے شریف خاندان کے خلاف 3 ریفرنسز احتساب عدالت میں دائر کیے تھے، جو ایون فیلڈ پراپرٹیز، العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ انویسمنٹ سے متعلق ہیں۔(ف،م)