میں مشکل دنوں میں نواز شریف کا ساتھ دینے کو تیار ہوں مگر ایک شرط پر ۔۔۔۔ چکری کے چوہدری نے پھر سب کو چکرا کر رکھ دیا

راولپنڈی(ویب ڈیسک) سابق وزیر داخلہ چوہدری نے کہا ہے کہ نواز شریف کا ساتھ دے سکتا ہوں، مگر ان کے بچوں کے آگے کھڑا نہیں ہوسکتا.ان خیالات کا اظہار انھوں نے چہان میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا. ان کا کہنا تھا کہ ہم جلسے کر رہے ہیں، مگر ہمارے مخالف ابھی تک

جلسی بھی نہ کر سکے.ان کا کہنا تھا کہ ہمارے مخالفین جلسے میں لوگوں کے انتظار میں بیٹھے رہتے ہیں، ہم وقت پر جلسہ کرتے ہیں ،کسی کوانتظار نہیں کراتے.چوہدری نثار نے دعویٰ‌ کیا کہ 25 جولائی کی رات پورا پاکستان دیکھے گا، انشا اللہ جیت ہماری ہوگی.انھوں نے حامیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہر دروازہ ہر گلی کا گھرکھٹکھٹاؤ، :صرف نعرے نہ لگاؤ سب کو بلاؤ.یاد رہے کہ گذشتہ روز انھوں نے ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ انتخابی نشان جیپ لینے کا فیصلہ خود کیا، معلوم نہیں جیپ کے انتخابی نشان کو کیوں اچھالا گیا، میں‌ کسی جیپ کے گروپ کا حصہ نہیں ہوں.دوسری جانب سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار نے کہا ہے کہ انتخابی نشان جیپ لینے کا فیصلہ خود کیا، معلوم نہیں جیپ کے انتخابی نشان کو کیوں اچھالا گیا۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، انھوں نے وضاحت کی کہ میں‌ کسی جیپ کے گروپ کا حصہ نہیں ہوں.گروپ بنانا ہوتا تو بہت لوگ موجود تھے، ایک سال پہلے بنا لیتا۔چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ انتخابی نشان کے لئے کسی سے مشاورت نہیں کی، میرے انتخابی نشان سے متعلق ایک منفی ماحول بنایا گیا.انھوں نے کہا کہ نہیں جانتا، جیپ کا انتخابی نشان لینے والے کتنے لوگ ہیں، سنا ہے، جنوبی پنجاب کے چند افراد نے شیر کا نشان واپس کرکے جیپ کا نشان لیا، معلوم نہیں جیپ کے انتخابی نشان کو کیوں اچھالا گیا. (ش۔ز۔م)