You are here
Home > پا کستا ن > دو بندے آئے اور کہنے لگے کہ اسد نامی شخص کے ساتھ آپ نے نتیجہ لے کر جانا ہے اور ۔۔!!!“این اے 75 کے پولنگ سٹیشن میں پریزائڈنگ کی ڈیوٹی دینے والے شخص نے ویڈیو پیغام جاری کر دیا

دو بندے آئے اور کہنے لگے کہ اسد نامی شخص کے ساتھ آپ نے نتیجہ لے کر جانا ہے اور ۔۔!!!“این اے 75 کے پولنگ سٹیشن میں پریزائڈنگ کی ڈیوٹی دینے والے شخص نے ویڈیو پیغام جاری کر دیا

لاہور (ویب ڈیسک )الیکشن کمیشن کی جانب سے این اے 75 میں ضمنی انتخاب کی پولنگ مکمل ہونے کے بعد 20 پریزائڈنگ افسروں کے غائب ہونے کے واقعہ کے باعث نتیجہ روک رکھاہے جسے انکوائری کے بعد جاری کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق 19 فروری کو چار حلقوں میں ضمنی انتخاب ہوا جس میں دو قومی اور دو صوبائی اسمبلیوں کی نشستیں شامل تھیں تاہم تین سیٹوں کے نتائج آ گئے لیکن ایک قومی اسمبلی کی نشست این اے 75 کے بیس پولنگ سٹیشنز کے پریزائڈنگ افسر نتائج سمیت غائب ہو گئے اور ہو صبح چھ بجے ریٹرنگ افسر کے دفترپہنچے جس کے باعث الیکشن کمیشن نتیجے کو روکتے ہوئے انکوائری کا حکم دیا ۔

گزشتہ روز بھی ایک دھندلی ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں ایک پریزائڈنگ افسر یہ دعوی ٰکر رہا تھا کہ انہیں کچھ لوگوں نے آ کر ہدایت دی کہ وہ واپسی پر الیکشن کمیشن کی نہیں بلکہ ان کی پرائیویٹ گاڑی میں جائیں گے لیکن اب ایک اور پریزائڈنگ افسر کی ویڈیو سامنے آ گئی ہے جس میں وہ صاف صاف بتا رہے ہیں کہ کس طرح ان سے نتیجہ تبدیل کروانے کیلئے رابطہ کیا گیالیکن انہوں نے فوری طور پر ریٹرنگ افسر کو اس سے آگاہ کر دیا ۔

سینئر صحافی حامد میر نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے وہ ویڈیو شیئر کی جس میں موجود شخص اپنا تعارف تصدق حسین کے نام سے کرواتا ہے اور بتاتا ہے کہ وہ اس وقت پولنگ سٹیشن نمبر 346 پر پریزائنڈنگ افسر کی ڈیوٹی سرانجام دے رہاہے ۔ان کا کہناتھا کہ ایک گھنٹہ پہلے دو ملازم آئے اور کہنے لگے کہ واپسی پر رزلٹ لے کر ہماری پرائیویٹ گاڑی میں جانا ہے جو الیکشن کمیشن نے آپ کو گاڑی دی ہے اس میں نہیں جانا بلکہ ہمارے اسد نامی بندے کے ساتھ جانا ہے ،وہ کہہ رہے تھے کہ میں سپیشل برانچ سے ہوں ، اس نے نہ تو ماسک اتارا اور نہ ہی کوئی اپنا کارڈ دکھایا ،مجھ سے کہنے لگا کہ آپ نے واپسی پر رزلٹ میری گاڑی پر واپس لے جانا ہے ، مجھے خدشہ ہے کہ وہ مجھ سے رزلٹ تبدیل کروائیں گے اور اگر میں نہیں کروں گا تو وہ مجھے دھمکائیں گے ۔

تفصدق حسین کا کہناتھا کہ الیکشن کا طریقہ یہ ہے کہ جس گاڑی میں ہم آئیں اسی گاڑی میں نتیجہ لے کر جائیں گے اور ریٹرنگ افسر کے حوالے کرنا ہے ، اس کے بعد ہم فارغ ہے ، وہ گاڑی ہمیں الیکشن نے فراہم کی ہوئی ہے ،میں نے آر او کو بتا دیاہے ، الیکشن کمیشن نے کہاہے کہ کوئی مسئلہ نہیں ہے ہم آپ کے ساتھ رابطہ کر لیتے ہیں ۔


Top