You are here
Home > پا کستا ن > پی ٹی آئی کی جانب سے ٹکٹ واپس لینے کا فیصلہ ۔۔!!!وزیراعلیٰ بلوچستان نے سینیٹ انتخاب لڑنے والے محمد عبدالقادر کی حمایت کا اعلان کردیا

پی ٹی آئی کی جانب سے ٹکٹ واپس لینے کا فیصلہ ۔۔!!!وزیراعلیٰ بلوچستان نے سینیٹ انتخاب لڑنے والے محمد عبدالقادر کی حمایت کا اعلان کردیا

لاہور (ویب  ڈیسک) وزیراعلیٰ بلوچستان نے سینیٹ انتخاب لڑنے والے محمد عبدالقادر کی حمایت کا اعلان کردیا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پی ٹی آئی کی جانب سے محمد عبدالقادر سے سینیٹ ٹکٹ واپس لینے کے فیصلے کے بعد عبدالقادر نے آزاد امیدوار کی حیثیت سے ٹکٹ جمع کروایا تھا۔ پی ٹی آئی کی جانب سے ٹکٹ واپس لینے کے بعد بلوچستان عوامی پارٹی کے سربراہ وزیراعلیٰ جام کمال خان نے آزاد حیثیت سے سینیٹ انتخاب لڑنے والے محمد عبدالقادر کی حمایت کردی ہے۔

اس حوالے سے وزیراعلیٰ جام کمال کا کہنا ہے کہ عبدالقادر کو پی ٹی آئی اور بی اے پی نے مشترکہ طور پر سینیٹ امیدوار منتخب کیا تھا، پی ٹی آئی پیچھے ہٹ گئی ہے تاہم بی اے پی ان کی حمایت برقرار رکھے گی۔

وزیراعلیٰ بلوچستان نے مزید کہا کہ عبدالقادر آج سے نہیں 2004 سے سینیٹ میں آنے کی کوشش کررہے ہیں۔ بہت سے لوگوں کو شاید یہ پتہ بھی نہیں کہ عبدالقادر کا تعلق کوئٹہ سے ہے۔

جام کمال کا کہنا تھا کہ آج اگر بلوچستان اسمبلی میں بی اے پی کے24 اراکین ہیں تو ہوسکتا ہے آنے والے دنوں میں بی اے پی کی نمائندگی بلوچستان میں کم اور کسی اور صوبے میں زیادہ ہو۔ واضح رہے کہ تحریک انصاف نے بلوچستان سے سینیٹ کا ٹکٹ عبدالقادر سے واپس لے لیا، معاون خصوصی شہباز گل نے کہا کہ بلوچستان سے سینیٹ کا ٹکٹ ظہورآغا کو جاری کیا جا رہا ہے، کپتان ہمیشہ اپنے پارٹی ورکر کی آواز سنتا ہے۔

انہوں نے ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ بلوچستان سے سینیٹ کا ٹکٹ قادر صاحب سے واپس لے کر ظہور آغا کو جاری کیا جا رہا ہے۔ کپتان ہمیشہ اپنے پارٹی ورکر کی آواز سنتا ہے۔ واضح رہے تحریک انصاف کے سنٹرل ریجن بلوچستان کے صدر ڈاکٹر منیر بلوچ نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ عبدالقادر کا تحریک انصاف سے کوئی تعلق نہیں ہے، اس بندے کو راتوں رات ٹکٹ دیا گیا، پی ٹی آئی کے ورکرز کو کیا جواب دیں گے؟ عمران خان سے اپیل ہے اپنے فیصلے پر نظرثانی کریں۔

انہوں نے کہا کہ ہم 24 سالوں سے پی ٹی آئی میں ہیں، بعد میں جو لوگ شامل ہوئے ان کی قربانیاں ہیں، لیکن یہ نہیں ہوسکتا کہ ایک بندے کو راتوں رات ٹکٹ دے دیا جائے، ہم اس پر خاموشی سے نہیں بیٹھ سکتے، ہم عمران خان سے مل نہیں سکتے، فیصلے پر نظرثانی کیلئے ہمارا یہی مئوقف سمجھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ عبدالقادر کا پی ٹی آئی سے کوئی تعلق نہیں ہے، پی ٹی آئی کے ورکرز کو کیا جواب دیں گے؟ عمران خان سے اپیل کرتے ہیں اپنے فیصلے پر نظرثانی کریں، عامر کیانی نے ہمیں یقین دہانی کروائی لیکن راتوں رات عبدالقادر کو ٹکٹ دے دیا گیا ہے، عبدالقادر بی اے پی سے پہلے ن لیگ میں تھے،بلوچستان عوامی پارٹی کے اپنے مسئلے مسائل ہیں، بی اے پی ہماری اتحادی ہے ہم اس کو سپورٹ کرتے ہیں۔


Top