You are here
Home > پا کستا ن > فیصل واوڈا کو ٹکٹ دیا جائے گا یا نہیں؟ وزیر اعظم عمران خان نے فیصلہ سُنا دیا

فیصل واوڈا کو ٹکٹ دیا جائے گا یا نہیں؟ وزیر اعظم عمران خان نے فیصلہ سُنا دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمانی بورڈ کا اجلاس ختم ہو گیا ہے۔سینیٹ انتخابات اور پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے معاملے پر وزیراعظم عمران خان نے آج سرکاری مصروفیات موخر کر کے اجلاس کی صدارت کی۔پارٹی رہنماؤں کے تحفظات کے بعد سینیٹ انتخابات کے لیے دی گئی ٹکٹوں پر نظرثانی کا فیصلہ کیا گیا ۔

اجلاس میں ٹکٹ حاصل کرنے والے ارکان پر اعتراضات کا جائزہ لیا گیا۔پارلیمانی بورڈ نے فیصل واوڈا کو دیا گیا ٹکٹ برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔سندھ میں فیصل واوڈا سے متعلق کارکنان کے اعتراضات مسترد کر دئیے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم کا کہنا ہے کہ فیصل واوڈا کی پارٹی کے لیے خدمات ہیں۔وزیراعظم نے تنظیم نو کو آج شام ویڈیو لنک پر اعتماد میں لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

خیبر پختونخوا سے لیاقت ترکئی کو پارٹی ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا گیا۔قبل ازیں پارٹی رہنماؤں نے وزیراعظم عمران خان کو اپنے تحفظات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ سیف اللہ ابڑو نیب زدہ ہیں جبک فیصل واوڈا نا اہلی سے بچنے کے لیے سینیٹر بننا چاہتے ہیں۔ کارکنان نے وزیراعظم عمران خان کو اپنے تحفظات سے آگاہ کرتے ہوئے مزید کہا کہ فیصل سلیم پر جعلی سگریٹس بیچنے کا الزام ہے۔

جبکہ نجیہ اللہ خٹک کی پارٹی کے لیے کوئی خدمات نہیں ہیں۔ ذرائع کے مطابق پارٹی کارکنان کے تحفظات کے بعد سندھ سے سیف اللہ ابڑو اور فیصل واوڈا کا ٹکٹ واپس لیے جانے کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا تاہم فیصل واوڈا کو ٹکٹ دینے کا فیصلہ برقرار رکھا گیا ہے۔اجلاس میں پارٹی رہنماؤں اور کارکنان کے تحفظات سننے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پارٹی ٹکٹ میرٹ پر دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہم پارٹی کارکنان کی خواہش کا احترام کرتے ہیں۔کسی پیرا شوٹر کو سینیٹر نہیں بنائیں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے یقین دہانی کروائی کہ چاروں افراد پر عائد الزامات کی خود تحقیقات کروں گا ۔ جس کے بعد پاکستان تحریک انصاف میں سینیٹ انتخابات کی ٹکٹ تقسیم سے متعلق آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران اہم فیصلہ ہونے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ خیال رہے کہ پاکستان تحریک انصاف میں سینیٹ کی ٹکٹوں کی تقسیم پر کافی اختلافات سامنے آئے تھے۔


Top