You are here
Home > پا کستا ن > قومی سلامتی کیخلاف بیانیہ، وزیراعظم نے نوٹس لے لیا۔۔۔ اپوزیشن کے خلاف کی کارروائی عمل میں لائی جا سکتی ہے ؟ خبرآ گئی

قومی سلامتی کیخلاف بیانیہ، وزیراعظم نے نوٹس لے لیا۔۔۔ اپوزیشن کے خلاف کی کارروائی عمل میں لائی جا سکتی ہے ؟ خبرآ گئی

لاہور(ویب ڈیسک) معاون خصوصی شہباز گل کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم جلسے میں قومی سلامتی کے خلاف بیانیے کا وزیراعظم عمران خان نے نوٹس لے لیا۔تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی شہباز گل نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اویس نورانی اور پی ڈی ایم نے آج آئین کی سنگین خلاف ورزی کی، کل فیصلہ کریں گے

کہ ان لوگوں کے ساتھ کیا ہونا چاہئے، جو کچھ پی ڈی ایم کے جلسے میں کیا گیا وزیراعظم کے نوٹس میں آچکا ہے۔
شہباز گل کا کہنا تھا کہ یہ لوگ ملک دشمن بیانیے کا حصہ بن رہے ہیں، پی ڈی ایم جلسے میں جو زبان استعمال کی گئی وہ ملک دشمنی ہے۔
انہوں نے کہا کہ نورانی صاحب کے صاحبزادے نے بہت نامناسب، احمقانہ بات کی، یہ دراصل آئین کی سریح خلاف ورزی ہے، اب حکومت کو اس پر جواب دینا پڑے گا، عمران خان اورپوری قوم اپنے چپے چپے کی حفاظت کیلئے پرعزم ہے۔
معاون خصوصی نے کہا کہ 11 چوروں کا ٹولہ ملا ہوا ہے، یہ مل کر بھی حکومت کو ہلا نہیں سکتے، وزیراعظم اور متعلقہ وزیر کل فیصلہ کریں گے کہ کیا ہونا چاہئے۔
شہباز گل نے کہا کہ اس سے فرق نہیں پڑتا کہ پی ڈی ایم 50 جلسے اور کرے، یہ اپنے جلسوں میں ملک دشمن بیانیے کا حصہ نہ بنیں، وزیراعظم اور پوری قوم غم وغصے کا اظہارکررہے ہیں۔
اس سے قبل شہباز گل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ردعمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’اویس نورانی اور پی ڈی ایم نے ریاست توڑنے کی بات کی، ان لوگوں نے سیکشن 124/125 کی صریحاً خلاف ورزی کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اب وکلا برادری اور بار کونسلز کے آگے آنے کا وقت ہے، ملک اور ریاست کے خلاف کسی کو حملہ نہیں کرنے دیں گے، عمران خان ان تمام چوروں کا اکیلا مقابلہ کرے گا۔
واضح رہے کہ پی ڈی ایم کے کوئٹہ جلسے میں جمعیت علما پاکستان (جے یو پی ) کے مرکزی رہنما اویس نورانی بھارت کی زبان بول گئے، ان کا کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ بلوچستان ایک آزاد ریاست ہو، آج بلوچستان کا ماحول ایسا ہے جیسے کوئی پسماندہ علاقہ ہے۔


Top