نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری میں اہم پیشرفت، اسلام آباد ہائیکورٹ سے بڑی خبر آگئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کے وارنٹس گرفتاری کی تعمیل کے معاملے میں لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن کے افسران نے تحریری بیان اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کرا دیا۔ فرسٹ سیکرٹری دلدار علی ابڑو کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے بیٹے کے سیکرٹری وقار احمد نے

انہیں کال کر کے کہا کہ وہ نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری نواز شریف کی پارک لین لندن رہائش گاہ پر وصول کرے گا، 23 ستمبر کو دن گیارہ بجے ملنے کا کہا گیا ہے، وقار کو بتایا کہ قونصلر اتاشی راؤ عبدالحنان وارنٹس کی تعمیل کے لیے آئیں گے، برطانیہ کے وقت کے مطابق 10 بج کر 20 منٹ پر وقار نے کال کر کے وارنٹس وصولی سے معذرت کرلی۔ راؤ عبدالحنان کے مطابق وہ لندن میں نواز شریف کی رہائش گاہ پر 17 ستمبر کو شام 6 بجکر 35 منٹ وارنٹس کی تعمیل کے لیے گئے، نواز شریف کے ذاتی ملازم محمد یعقوب نے وارنٹ گرفتاری وصول کرنے سے انکار کیا، نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی بائی ہینڈ تعمیل نہیں ہو سکی۔ دوسری جانب برطانیہ میں پاکستانی ہائی کمیشن کے افسران نے العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنسز کے فیصلوں کے خلاف نواز شریف کی اپیلوں پر بذریعہ وڈیو لنک اپنے بیان ریکارڈ کرادیئے ہیں۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنسز پر نوازشریف کی اپیلوں پر سماعت کی، دوران سماعت وڈیو لنک کے ذریعے پاکستان ہائی کمیشن لندن کے افسران فرسٹ سیکرٹری دلدار علی ابڑو اور قونصلر اتاشی راؤ عبدالحنان کا بیان بطور شہادت قلمبند کیاگیا۔ سماعت سے قبل پاکستان ہائی کمیشن لندن کے فرسٹ سیکرٹری دلدار علی ابڑو اور قونصلر اتاشی راؤ عبدالحنان کے الگ الگ تحریری بیان اسلام آباد ہائی کورٹ میں جمع کرائے گئے تھے۔