بریکنگ نیوز: 8 برسوں کا انتظار ختم۔۔!! سانحہ بلدیہ کیس فیصلہ سُنا دیا گیا

کراچی (ویب ڈیسک) اے ٹی سی کراچی نے سانحہ بلدیہ کیس کا فیصلہ سنادیا۔ رحمان عرف بھولا پر فیکٹری کو آگ لگانے کا الزام ثابت ہوا، اے ٹی سی عدالت نے رحمان بھولا کو سزائے موت سنا دی۔ اے ٹی سی کراچی نے ایم کیو ایم کے رہنما روَف صدیقی کو بری کر دیا۔

سانحہ بلدیہ کیس میں 400گواہان کے بیانات ریکارڈ کیے گئے۔ اے ٹی سی کراچی نے سانحہ بلدیہ کیس کا فیصلہ 8سال بعد سنایا۔ آگ لگانے کی اہم وجہ فیکٹری مالکان سے مانگا گیا بھتہ تھا۔رحمان عرف بھولا اور زبیر چریا پر فیکٹری کو آگ لگانے کا الزام ثابت ہوا۔ 2014میں فیکٹری مالکان ارشد بھائیلہ، شاہد بھائیلہ اورعبدالعزیز دبئی چلے گئے تھے۔ کیس کے 3تفتیشی افسران تبدیل ہوئےور 4سیشن ججزنے سماعت سے معذرت کی۔ رہنما ایم کیو ایم روَف صدیقی نے کہا اعزت بری ہونے پر اللہ کا مشکور ہوں۔اے ٹی سی کی عدالت کی جانب سے سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس کا فیصلہ 17 ستمبر کو سنایا جانا تھا تاہم عدالت نے فیصلہ سنائے بغیر سماعت 22 ستمبر تک موخر کردی تھی۔سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس میں عدالت نے رواں ماہ 2 ستمبر کو فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا تھا جب کہ فروری 2017 میں ایم کیو ایم رہنما رؤف صدیقی، رحمان بھولا، زبیر چریا اور دیگر پر فرد جرم عائد کی گئی تھی، کیس میں ملزمان کے خلاف 400 عینی شاہدین کے بیانات ریکارڈ کیے گئے۔ واضح رہے کہ 11ستمبر 2012 کو بلدیہ فیکٹری آتشزدگی کیس میں 260 افراد جل کر جاں بحق ہوگئے تھے جب کہ فیکٹری مالکان نے آتشزدگی کا ذمہ دار ایم کیو ایم کو قرار دیا تھا۔