سانحہ موٹروے کامرکزی ملزم عابد راجہ جنگ سے اچانک کہاں غائب ہو گیا ۔۔۔ پولیس کا دنگ کر ڈالنے والا بیان

لاہور (ویب ڈیسک) موٹروے کیس کے مرکزی ملزم عابد کو پولیس 12 ویں روز بھی گرفتار نہ کرسکی ، ملزم عابد تک پہنچنے کے لیے تفتیش کا دائرہ کار مزید بڑھا دیا گیا ۔ چیئرمین اسپیشل انوسیٹی گیشن ٹیم اور ڈی آئی جی انویسٹی گیشن لاہور شہزادہ سلطان نے بتایا ہے کہ ملزم عابد کی گرفتاری کے لیے تمام تر وسائل بروے کار لائے جا رہے

، جہاں بھی ملزم جا رہا ہے پولیس اس کے پیچھے ہے تاہم ملزم کی طرف سے اپنی گرفتاری سے بچنے کے لیے سرتوڑ کوششیں کی جارہی ہیں لیکن وہ بچ نہیں سکتا اور جلد قانون کی گرفت میں ہوگا ، اس مقصد کیلئے ملزم کی مختلف تصاویر منظر عام پر آ گئی ہیں جس پر پولیس نے تحقیقات کا دائرہ وسیع کر دیا ہے ، پولیس کی طرف سے ملزم عابد کے زیر حراست بہنوئی کے بھائی کو بھی گرفتار کیا گیا ہے ، اس کے ساتھ ساتھ تمام زیرحراست افراد سے مختلف پہلوؤں سے تفتیش جاری ہے ، جن میں ملزم کے 2 کزن، 1 خاتون اور 2 دیگر عزیز بھی شامل ہیں ، ان سب سے عابد نے فرار ہونے کے بعد رابطہ کیا تھا ۔ خیال رہے کہ ملزم کے بھیس بدلنے کا معاملہ سامنے آنے پر پولیس کی 28 تفتیشی ٹیموں کو ملزم کے 7 مختلف خاکے جاری کیے گئے ، ملزم کی گرفتاری کے لیے راجہ جنگ کے علاقے میں بھی سرچ آپریشن کیا گیا تاہم پولیس کو ناکامی کا سامنا کرنا پڑا لیکن پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ ملزم شفقت اور عابد کی بیوی کی نشاندہی پر ملزم کی ریکی کی جا رہی ہے اور جلد گرفتاری عمل میں آ جائے گی۔ واضح رہے کہ 9 ستمبر کی رات لاہور کے علاقے گجر پورہ کے قریب موٹر وے پر خاتون کو اس کے بچوں کے سامنے غلط کاری کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا تھا ، جہاں پیٹرول ختم ہونے کے باعث خاتون کی گاڑی بند ہوگئی تھی اور وہ اپنے شوہر کے آنے کا انتظار کر رہی تھی ۔