You are here
Home > پا کستا ن > عُمر شیخ پھر متنازعہ حرکت کر گئے

عُمر شیخ پھر متنازعہ حرکت کر گئے

لاہور (نیوز ڈیسک) سی سی پی او لاہور عمر شیخ ایک بار متنازعہ حرکت کر بیٹھے، صحافی کا سی پی او سے سانحہ رنگ روڈ کے مرکزی مرکزی ملزم عابد کی گرفتاری سے متعلق سوال کو ہنسی میں ٹال گئے ۔تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے رپورٹر کی طرف سے جب

سی سی پی او لاہور سے سوال کیا گیا کہ سانحہ رنگ روڈ کےملزم عابد کو کب تک گرفتار کر لیا جائے گا ؟ اس سوال پر سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے ہنستے ہوئے جواب دیا کہ عجیب آدمی ہو یار ، بس کردو! .دوسری جانب سانحہ رنگ روڈ،مرکزی ملزم عابد علی ملہی کے بہنوئی عارف علی اور اس کے بھائی صابرعلی کو حراست میں لے لیا گیا ۔ پولیس ذرائع کے مطابق ملزم عابد علی ملہی قصور سے گرفتار کیے گئے اس کے بہنوئی عارف علی سے کچھ دن پہلے رابطے میں تھا۔ جس کی بنا پر تفتیش کو آگے بڑھایا گیا اور آج سانحہ رنگ روڈ کے مرکزی ملزم عابد علی ملہی کے رشتہ داروں کو حراست میں لے لیا گیا ۔یہاں پر یہ امر بھی قابلِ ذکر ہے کہ سانحہ گجر پورہ کا مرکزی ملزم عابد علی ملہی شیخوپورہ اور قصورکے بعد ننکانہ پولیس کو بھی چکمہ دے کر فرار ہوگیا، پولیس 10 فٹ پر موجود عابد کو نہ پکڑ سکی، ملزم سالی سے پارک میں ملنے آیا تھا، مکینوں کی پولیس کو اطلاع، ایس ایچ او صرف 3 اہلکار ساتھ لایا۔پولیس نے ملزم کی سالی کشور اور 2سالوں کو پکڑ کر پوچھ گچھ کی اور رہا بھی کردیا، علاقے میں سرچ کا کام بھی بے سود رہا۔ تفصیلات کےمطابق مرکزی ملزم عابد علی ملہی جمعرات کو سہ پہر 4بجے پرانا ننکانہ میں اپنی سالی کشور بی بی سے ملنے آیا تھا۔ملزم عابد علی رائے بلار پارک میں سالی کشور سے بیوی بشریٰ کے متعلق پوچھ رہاتھا کہ اہل محلہ نے 15 پر کال کرکے پولیس کو ملزم عابد علی کی موجودگی کی اطلاع دی، حسب روایت پولیس25 منٹ تاخیر سے پہنچی۔عینی شاہدین کا کہناکہ ایس ایچ او تھانہ سٹی ننکانہ صاحب عبدالخالق صرف 3 پولیس اہلکاروں کے ہمراہ موقع پرپہنچاتو فون کرنے والے نے ایس ایچ او تھانہ سٹی ننکانہ صاحب کو بتایا کہ یہ عابد علی ہے۔ یہ سنتے ہی ملزم عابد علی پولیس کے ہاتھوں سے نکل گیا حالانکہ پولیس اور ملزم کا درمیانی فاصلہ صرف دس فٹ کا تھا جبکہ تھانہ سٹی اور رائے بلار بھٹی پارک کا درمیانی راستہ صرف پانچ منٹ کا ہے۔


Top