You are here
Home > پا کستا ن > کہانی میں نیا موڑ !!! خاتون سے زیادتی کاواقعہ موٹروے پر پیش نہیں آیا بلکہ ۔۔۔۔ ایسا دعویٰ ، جان کر آپ بھی سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

کہانی میں نیا موڑ !!! خاتون سے زیادتی کاواقعہ موٹروے پر پیش نہیں آیا بلکہ ۔۔۔۔ ایسا دعویٰ ، جان کر آپ بھی سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وفاقی وزیر برائے مواصلات مراد سعید نے قومی اسمبلی میں دعویٰ کیا ہے کہ خاتون سے زیادتی کا واقعہ موٹروے پر پیش نہیں آیا۔قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے مراد سعید نے کہا کہ پوری قوم کو موٹر وے واقعے پر غم ہے، افسوس ہے کہ بحث اس پر نہیں ہورہی کہ مجرموں


ی جائے لیکن دو قسم کی بحثیں ہورہی ہیں کہ موٹروے واقعے پر وزیرمواصلات مستعفی ہو اور ڈی اے این لیب کا کریڈٹ کس کو دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ کیا یہ بات اہمیت رکھتی ہے کہ واقعہ کراچی میں ہوا یا موٹر وے پر؟ یہ واقعہ موٹر وے پر نہیں ہوا لیکن بحثیت مرد میں اس واقعہ کی ذمہ داری لیتا ہوں، میں اس ایوان کا حصہ ہوں جس نے خواتین کو حقوق دلانے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ کہاجارہا ہے کہ خاتون نے جب 130 پر فون کیا تو کہا گیا کہ ہمارا دائرہ اختیار نہیں، میں نے وہ فون کال سنی، یہ نہیں کہا گیا کہ دائرہ اختیار نہیں۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سانحہ گجر پورہ کے حوالے سے خاتون صحافی فریحہ ادریس کا انکشاف، ملزمان واردات کے بعد گاڑی میں 1 ہزار روپے چھوڑ کر گئے، متاثرہ خاتون نے پولیس سے رابطہ کر کے لوکیشن شیئر کی، 1 ہزار روپے کا پٹرول مانگا، 2 گھنٹے انتظار کے بعد پولیس کی بجائے ڈاکو آگئے، زیادتی واقعے کے بعد مجرمان جاتے ہوئے گاڑی کے ڈیش بورڈ پر 1 ہزار روپے کا نوٹ چھوڑ کر گئے۔ خاتون صحافی اور اینکر پرسن فریحہ ادریس کی جانب سے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے گفتگو کرتے ہوئے بڑا انکشاف کیا گیا ہے۔ فریحہ ادریس کا بتانا ہے کہ موٹروے پر جب متاثرہ خاتون کا پٹرول ختم ہوا تو انہوں نے پولیس کو کال کر کے ایک ہزار روپے کا پٹرول مانگا تھا، جبکہ وہاں واردات ہوئی تو مجرمان واپس جاتے ہوئے 1 ہزار روپے کا نوٹ گاڑی کے ڈیش بورڈ پر چھوڑ کر گئے۔فریحہ ادریس کا بتانا ہے کہ وہ متاثرہ خاتون سے رابطے میں ہیں۔ خاتون کی گاڑی خراب ہوئی تو انہوں نے پولیس سے رابطہ کیا لیکن 2 گھنٹے تک وہاں کوئی نہیں آیا۔ خاتون نے بذریعہ وٹس ایپ پولیس سے اپنی لوکیشن بھی شیئر کی تھی۔ مدد کیلئے رابطہ کیے جانے پر پولیس نے خود خاتون سے لوکیشن کی تفصیلات مانگی تھیں تاہم مدد کیلئے کوئی نہیں آیا۔ خاتون نے باقاعدہ ویڈیو بھی بنائی کہ جب انہوں نے مدد طلب کی تو اس کے 2 گھنٹے تک پولیس نہیں آئی۔خاتون نے اب دوران تفتیش پولیس سے وہ نمبر بھی شیئر کیا ہے جس پر لوکیشن شیئر کی گئی تھی۔ جبکہ متاثرہ خاتون نے تصدیق کی ہے کہ گرفتار ملزم شفقت نے دوران تفتیش جو تفصیلات بتائی ہیں وہ کافی حد تک درست ہیں۔ واضح رہے کہ سانحہ گجر پورہ کا شفقت نامی ایک ملزم گرفتار کیا جا چکا، جبکہ مرکزی ملزم عابد کی گرفتاری کیلئے کوششیں جاری ہیں۔ پنجاب پولیس اور صوبائی حکومت کا دعویٰ ہے کہ ملزم عابد علی جلد پولیس کی تحویل میں ہوگا۔


Top