You are here
Home > پا کستا ن > پنجاب سے کس نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر لیا؟ حامد میر کے خبر بریک کرتے ہی صوبے میں ہلچل مچ گئی

پنجاب سے کس نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر لیا؟ حامد میر کے خبر بریک کرتے ہی صوبے میں ہلچل مچ گئی

لاہور(نیوز ڈیسک) سینئر صحافی حامد میر کا کہنا ہے کہ سی سی پی او لاہور عمر شیخ کی جانب سے جو غیر ذمہ دارانہ بیان دیا گیا ہے اسکی نہ صرف پاکستان اور دیگر سیاسی جماعتوں کی جانب سے مخالفت کی جا رہی ہے بلکہ وفاقی اور صوبائی حکومت میں موجود

افراد بھی اس بیان کی مخالفت کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر تجزیہ کار و صحافی حامد میر کا کہنا تھا کہ بظاہر یوں ہی لگتا ہے کہ سی سی پی او لاہور عمر شیخ کے پیچھے تگڑی شخصیت کا ہاتھ ہے۔ کیونکہ جو بیان انہوں نے دیا اس کے بعد نہ صرف اپوزیشن اور پاکستانی عوام کی جانب سے مخالفت کی گئی اور شدید غم و غصہ کیا گیا بلکہ وفاق اور پنجاب میں بھی عمر شیخ کی مخالفت کی گئی ۔ پنجاب کی ایک اعلیٰ سیاسی شخصیت جو کہ ایک بہت بڑے عہدے پر فائز ہیں ، یہ عہدہ عمر شیخ کے عہدے سے بھی بہت بڑا ہے۔ انہوں نے اس بیان کے بعد اپنے دوستوں سے صلاح مشورہ کرنا شروع کر دیا ہے کہ یار اگر عمر شیخ استعفیٰ نہیں دیتا تو کیا میں مستعفی ہوجاؤں۔ جس پر پروگرام اینکر نے سوال کیا کہ پنجاب کی اس شخصیت کا تعلق تحریک انصاف سے ہے؟ جس کا جواب دیتے ہوئے حامد میر کا کہنا تھا کہ پنجاب میں جتنے بھی بڑے عہدے ہیں وہ تحریک انصاف کے پاس ہی ہیں اور میرا اشارہ چوہدری پرویز الٰہی کی جانب بالکل نہیں ہے ۔ جس شخص نے مستعفی ہونے کا سوچا ہے وہ بہت بڑے عہدے پر فائز ہیں، وہ عثمان بُزدار نہیں ہیں لیکن انکا عہدہ بہت بڑا ہے اور وہ مستعفی ہونے کا سوچ چکے ہیں۔ حامد میر کا مزید کیا کہنا تھا؟ ویڈیو آپ بھی دیکھیں اور اس خبر کو شیئر کریں:


Top