You are here
Home > پا کستا ن > چاچو!!! آپ نے مجھے لنڈن کی عدالت لیجانے کا وعدہ ایک سال پہلے کیا تھا جو پورا نہ ہو سکا لیکن میں آ پ کو۔۔۔ عمران اینڈ کمپنی نے چھوٹے میاں کو حیران کن سرپرائز دے دیا

چاچو!!! آپ نے مجھے لنڈن کی عدالت لیجانے کا وعدہ ایک سال پہلے کیا تھا جو پورا نہ ہو سکا لیکن میں آ پ کو۔۔۔ عمران اینڈ کمپنی نے چھوٹے میاں کو حیران کن سرپرائز دے دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) مشیر داخلہ برائے احتساب شہزاد اکبر نے اپوزیشن لیڈر کو مشورہ دیا ہے کہ وہ سلمان شہباز کو واپس بلا لیں کہ کہیں وہ گرفتار ہی نہ ہو جائیں۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر جاری بیان میں شہزاد اکبر نے لکھا کہ شہبازشریف نےمجھےلندن کی عدالت لےجانےکاوعدہ کیاتھا، شہبازشریف کاوعدہ ایک سال


بھی وفانہ ہوسکا، شہبازشریف کاوعدہ ایسےتھاجیسےزرداری کوگلیوں میں گھسیٹنےکاعزم کیاتھا۔شہزاد اکبر نے کہا کہ ویسے اب تک منی لانڈرنگ کا ریفرنس بھی فائل ہوچکا ہے، شہبازشریف کومشورہ ہےسلمان کوواپس بلالیں کہیں وہاں پکڑنہ ہوجائے۔خیال رہے شہباز خاندان کے خلاف7ارب35 کروڑ کی منی لانڈرنگ کاریفرنس دائر ہے۔نیب نے منی لانڈرنگ ریفرنس میں شہباز شریف خاندان کیخلاف گواہی دینے والے 110 افراد کی فہرست تیار کرلی ہے ، گواہ نیب کے مؤقف کی تائید کریں گے۔گواہوں میں بینکوں کےنمائندے،ایف بی آر،پٹواری اورسرکاری محکموں کےافراد ، نیب کے اسٹنٹ ڈائریکٹر،انویسٹی گیشن آفیسر بھی شامل ہیں ، دستاویزات میں بتایا گیا کہ شہبازشریف خاندان کےخلاف110گواہ نیب کے مؤقف کی تائید کریں گے۔شہباز شریف خاندان کے خلاف 4وعدہ معاف بھی نیب کےمؤقف کی تائیدکریں گے ، وعدہ معاف گواہوں میں مشتاق چینی،یاسرمشتاق ،شعیب قمراور محبوب علی شامل ہیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری میں مدد دینے والے کو 25 لاکھ انعام دینے کا اعلان کرتا ہوں، 72 گھنٹوں میں دلخراش واقعے کے ملزمان تک پہنچ گئے، ملزمان بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے، متاثرہ خاتون سے بات ہوئی، انصاف کی یقین دہانی کروائی ہے۔ انہوں نے وزراء اور آئی جی پنجاب پولیس کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اور میری ٹیم نے سائنٹیفک طریقے سے کیس کی تحقیقات کیں۔72 گھنٹوں سے بھی کم وقت میں اس دلخراش واقعے کے اصل ملزمان تک پہنچے ہیں۔ میں یقین دلاتا ہوں جن درندوں نے یہ ظلم کیا ہے وہ بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے۔ ملزمان کو قانون کے مطابق قرار واقعی سزا دی جائے گی۔میں پنجاب پولیس اور متعلقہ اداروں کو ہدایت کی ہے کہ آئندہ ایسے واقعے کی روک تھام کیلئے ٹھوس اقدامات کیے جائیں۔ میں نے کچھ دیر قبل متاثرہ خاتون سے بھی رابطہ کیا اور دلی ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔خاتون کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کروائی ہے۔ جب سے یہ واقعہ ہوا ہے ہمارے پولیس افسران مسلسل خاتون کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جن ملزمان کی شناخت ہوئی ہے ان ملزمان کی گرفتاری میں مدد دینے والوں کو 25، 25 لاکھ انعام دینے کا بھی اعلان کرتا ہوں۔ ایسے شخص کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔ اس موقع آئی جی پنجاب پولیس انعام غنی نے بتایا کہ ہم ملزمان کے پیچھے ہیں جلد گرفتار کرلیں گے۔سائنسی ثبوتوں کے ساتھ ملزم عابد کی رات 12 بجے ڈی این اے میچ ہونے کی تصدیق ہوئی۔ جس پر اس کا سارا ریکارڈ اور شناختی کارڈ حاصل کیا۔ پھر معلوم ہوا کہ وہ فورٹ عباس کا رہائشی ہے۔ ہماری ٹیم نے رات کو بڑا اچھا کام کیا اور ریکارڈ حاصل کیا۔ملزم کے نام پر چار سمز تھیں۔ ایک نمبر اس کے استعمال میں تھا لیکن نام پر نہیں تھا۔ملزم عابد کا فون نمبر ملا تو ملزم عابد کے ٹیلیفون کے ذریعے اس کے ساتھی ملزم تک پہنچ گئے۔


Top