You are here
Home > پا کستا ن > گجر پورہ واقعہ ، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وہ اعلان کر دیا جس کا ہر کوئی انتظار کر رہا تھا

گجر پورہ واقعہ ، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وہ اعلان کر دیا جس کا ہر کوئی انتظار کر رہا تھا

لاہور (ویب ڈیسک)وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی زیر صدارت تحقیقاتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس دوران انہوں نے جلد تحقیقات مکمل کرنے کی ہدایت کر دی ہے ۔انہوں نے کہا کہ موٹروے پولیس کی تعیناتی تک پنجاب پولیس فرائض انجام دے گی ۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ عثمان بزدار کا کہناتھا کہ موٹروے پولیس کی تعیناتی تک پنجاب پولیس

فرائض انجام دے گی ،اس دلخراش واقعہ میں ملوث ملزمان سز ا سے نہیں بچ پائیں گے ، متاثر ہ خاندان کو انصاف کی فراہمی تک چین سے نہیں بیٹھوں گا ، پنجاب حکومت اور پوری قوم متاثرہ خاندان کے ساتھ کھڑی ہے ۔ ان کا کہناتھا کہ متاثرہ خاتون کو فوری طور پر انصاف دلانا ریاست کی ذمہ داری ہے ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری میں مدد دینے والے کو 25 لاکھ انعام دینے کا اعلان کرتا ہوں، 72 گھنٹوں میں دلخراش واقعے کے ملزمان تک پہنچ گئے، ملزمان بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے، متاثرہ خاتون سے بات ہوئی، انصاف کی یقین دہانی کروائی ہے۔ انہوں نے وزراء اور آئی جی پنجاب پولیس کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اور میری ٹیم نے سائنٹیفک طریقے سے کیس کی تحقیقات کیں۔72 گھنٹوں سے بھی کم وقت میں اس دلخراش واقعے کے اصل ملزمان تک پہنچے ہیں۔ میں یقین دلاتا ہوں جن درندوں نے یہ ظلم کیا ہے وہ بہت جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے۔ ملزمان کو قانون کے مطابق قرار واقعی سزا دی جائے گی۔میں پنجاب پولیس اور متعلقہ اداروں کو ہدایت کی ہے کہ آئندہ ایسے واقعے کی روک تھام کیلئے ٹھوس اقدامات کیے جائیں۔ میں نے کچھ دیر قبل متاثرہ خاتون سے بھی رابطہ کیا اور دلی ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔خاتون کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کروائی ہے۔ جب سے یہ واقعہ ہوا ہے ہمارے پولیس افسران مسلسل خاتون کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جن ملزمان کی شناخت ہوئی ہے ان ملزمان کی گرفتاری میں مدد دینے والوں کو 25، 25 لاکھ انعام دینے کا بھی اعلان کرتا ہوں۔ ایسے شخص کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔ اس موقع آئی جی پنجاب پولیس انعام غنی نے بتایا کہ ہم ملزمان کے پیچھے ہیں جلد گرفتار کرلیں گے۔سائنسی ثبوتوں کے ساتھ ملزم عابد کی رات 12 بجے ڈی این اے میچ ہونے کی تصدیق ہوئی۔ جس پر اس کا سارا ریکارڈ اور شناختی کارڈ حاصل کیا۔ پھر معلوم ہوا کہ وہ فورٹ عباس کا رہائشی ہے۔ ہماری ٹیم نے رات کو بڑا اچھا کام کیا اور ریکارڈ حاصل کیا۔ملزم کے نام پر چار سمز تھیں۔ ایک نمبر اس کے استعمال میں تھا لیکن نام پر نہیں تھا۔ملزم عابد کا فون نمبر ملا تو ملزم عابد کے ٹیلیفون کے ذریعے اس کے ساتھی ملزم تک پہنچ گئے۔


Top