ہاں ناں کا کھیل ختم ۔۔۔۔!!!! تعلیمی ادارے کب سے کھولے جا رہے ہیں ؟ تما م سرکاری ونجی سکولوں کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری

کراچی (ویب ڈیسک) سندھ حکومت نے رواں ماہ 15 ستمبر سے تمام تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کرتے ہوئے تمام سرکاری ونجی سکولوں کیلئے ایس اوپیز جاری کردیئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے 15 ستمبر سے تعلیمی ادارے دوبارہ کھولنے کا اعلان کرتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری کردیا، جس میں کہا کہ تمام سرکاری ونجی سکولز

ایس اوپیز کیساتھ کھولے جائیں گے۔ سندھ حکومت نے سکولوں کی انتظامیہ، طلبا، اساتذہ کیلئے ایس او پیز جاری کئے ہیں، جس پر سکول مالکان و انتظامیہ کو عمل درآمد کرانا ضروری ہو گا ۔ سکولوں کی انتظامیہ کو کہا گیا ہے کہ سکولوں کی عمارتوں، کلاس رومز میں باقاعدگی سے جراثیم کش سپرے کیا جائے، کلاس روم میں طلبہ کے بڑے اجتماع سے بچنے کے لئے سکول کے دن اور اوقات مقرر کریں اور پری پرائمری، پرائمری، لوئر سیکنڈری اور اپر سیکنڈری کے طلبا کو شفٹوں میں تقسیم کیا جائے۔ طلبہ اور اساتذہ کیلیے ماسک پہننا لازمی ہوگا اور صبح کی اسمبلی متعلقہ کلاس روم میں ہونی چاہئے جبکہ کوویڈ۔19 علامات کے حامل طلبا، اساتذہ اور دیگر عملے کو سکولوں میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔ ایس او پیز کے مطابق اساتذہ کھانسی کے وقت طلبا کو منہ اور ناک ڈھانپنے کا درس دیں اور یقینی بنائیں کہ کلاس روم کا فرنیچر مناسب فاصلے کے ساتھ رکھا گیا ہے،طلبا سفر اور کلاس میں ماسک پہنیں، اپنے ہاتھ بار بار دھوئے، چہرے کو مت چھوئیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو فوری گرفتاری دینے کا حکم دے دیا ہے، عدالت نے کہا کہ نوازشریف آئندہ سماعت سے قبل گرفتاری دیں،قانون کی بالادستی ہرصورت قائم رہنی چاہیے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کی اپیل پر سماعت ہوئی، جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے اپیل کی سماعت کی۔نوازشریف کی جانب سے وکیل خواجہ حارث پیش ہوئے۔عدالت نے سماعت کے بعد اپنے حکم نامے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کی فوری گرفتاری کا حکم جاری کردیا ہے۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے حکم نامے پر دستخط کیے۔حکم نامے میں کہا گیا کہ العزیزیہ ریفرنس میں نوازشریف کی ضماعت ختم ہوچکی ہے۔قانون کی بالادستی ہرصورت قائم رہنی چاہیے۔نوازشریف نے بیرون ملک جانے سے قبل آگاہ نہیں کیا۔ لہذانوازشریف آئندہ سماعت سے قبل گرفتاری دیں۔ نوازشریف کو سرنڈر کرنے کیلئے 9روز کی مہلت ہے، نوازشریف سے متعلق اپیل پر مزید سماعت 10ستمبر کو ہوگی۔ نیوز ایجنسی کے مطابق ایون فیلڈ ریفرنس میں سزاؤں کیخلاف نواز شریف، مریم نواز اورکیپٹن (ر) صفدر کی اپیلوں پر جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اخترکیانی پر مشتمل بینچ نے سماعت کی ۔دور ان سماعت سابق وزیر اعظم نوازشریف بیرون ملک ہونے کی وجہ سے عدالت میں پیش نہ ہوسکے تاہم سابق وزیراعظم صاحبزادی مریم نواز عدالت میں پیش ہوئیں ان کے ہمراہ کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر اور سینیٹر پرویزر شید بھی کمراہ عدالت میں موجود تھے ۔ قومی احتساب بیورو (نیب)کی جانب سے فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کی بریت کے خلاف اپیل کی بھی سماعت کی گئی۔