بریکنگ نیوز: اہم ترین سرکاری ادارے کی سبسڈی ختم کرنے کافیصلہ، نوٹیفکیشن جاری

لاہور(ویب ڈیسک)پنجاب حکومت نے واسا کی سبسڈی ختم کرنے کافیصلہ کرلیا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق محکمہ ہاﺅسنگ نے کہاہے کہ واسا سے 2 ارب روپے کی سبسڈی واپس لیں گے ،لاہور،راولپنڈی ،فیصل آباد ،گوجرانوالہ اورملتان کی سبسڈی ختم ہو گی ۔محکمہ ہاﺅسنگ کاکہناہے کہ واسا اپنا ٹیرف نہیں بڑھاسکے گا،واساغیرقانونی کنکشنزختم،بلنگ کانظام اورکارکردگی بہتر کریں گے ۔

جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پنجاب حکومت نے وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سےمن پسند ٹھیکیداروں کو نوازنے کی خبریں بے بنیاد قرار دے دیا اور کہا وزیراعلیٰ چیف ایگزیکٹیو ہوتا ہے ٹھیکے ایوارڈ نہیں کرتا۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی جانب سے من پسند ٹھیکیداروں کو نوازے کی خبریں بالکل بے بنیاد ہیں۔ترجمان نے کہا ہے کہ ترقیاتی منصوبےشفاف نظام کےتحت تکمیل کوپہنچ رہےہیں،پ ٹھیکےایوارڈکرنےکےعمل میں ہرمتعلقہ ادارہ خود مختار ہے۔پنجاب حکومت کے ترجمان نے مزید کہا کہ ایل ڈی اے، ٹیپا اور دیگر محکمے پیپرا قوانین کے تحت ٹینڈرز جاری کرتے ہیں، وزیراعلیٰ چیف ایگزیکٹیو ہوتا ہے، ٹھیکےایوارڈ نہیں کرتا۔یاد رہے نجاب کے اہم ترقیاتی منصوبوں میں من پسند ٹھیکیدار کو نوازنے کے الزام میں نیب نےوزیراعلیٰ پنجاب کیخلاف شکایت پرنئی تحقیقات کاآغازکردیا ہے۔ذرائع کا کہنا تھا کہ نیب نے ٹھیکیداروں کو منصوبوں کا ریکارڈ، لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی (ایل ڈی اے) اور دیگر محکموں سے ترقیاتی منصوبوں کا ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔ذرائع کے مطابق ٹھوکرنیازبیگ پرگیٹ وےٹولاہورمنصوبےکی بھی تحقیقات شروع کرتے ہوئے منصوبے کی لاگت ڈھائی سے8کروڑ تک پہنچنے پرایل ڈی اے سے ریکارڈ طلب کرلیا۔