صنعت کاروں کی سُنی گئی! پنجاب میں پورا ہفتہ 24 گھنٹے کام کرنے کی اجازت دے دی گئی

لاہور(نیوز ڈیسک) پنجاب میں کورونا وائرس کی صورتحال بہتر ہونے پر صنعتوں کے اوقات کار بڑھادیے گئے۔سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر نے صنعتوں کے اوقات کار بڑھانے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا جس کے مطابق تمام انڈسٹریاں اورفیکٹریاں پورا ہفتہ 24 گھنٹے کام کرسکیں گی اور تعمیرات سے متعلقہ تمام شعبہ جات اور

کاروبار بھی پورے ہفتہ کام کریں گے۔سیکرٹری ہیلتھ محمد عثمان نے کہا کہ ایس او پیز پر عمل درآمد کرتے ہوئے کاروبار کھولنے کی اجازت دی گئی ہے لہٰذا حفاظتی تدابیر اختیار نہ کرنے والے کاروبار فوراً بند کر دیے جائیں گے۔سیکریٹری صحت کا کہنا تھا کہ نوٹیفکیشن کا اطلاق فوری طور پر آج سے ہوگا البتہ حکومت پنجاب کی جانب سے لگائی گئی گزشتہ پابندیاں اسی طرح نافذ عمل رہیں گی۔ دوسری جانب وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت وزرائے تعلیم کانفرنس ختم ہوگئی ہے۔تمام صوبوں نے اسکول 15ستمبرسے کھولنے کی تجویز دی ہے۔بین الصوبائی وزرائے کانفرنس میں 15ستمبرسے تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ برقرار رکھا گیا۔کے پی کے حکومت نے تعلیمی ادارے یکم ستمبرسے کھولنے کی تجویز دی جس کی باقی تمام صوبوں نے مخالفت کی۔بعد ازاں تمام صوبوں کی جانب سے سے تعلیمی ادارے 15ستمبرسے کھولنے کی حتمی تجویز دی گئی۔کانفرنس میں ملک بھر میں یکساں نصاب پر بھی مشاورت کی گئی اور فیصلہ کیا گیا کہ تمام صوبے یکساں نصاب سے متعلق اپنی تجاویز سے آگاہ کریں گے۔قبل ازیں صوبائی وزیر زیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس نے اسکولز کھولنے کے حوالے سے اہم اعلان کیا ۔انہوں نے کہا ہے کہ سرکاری اور نجی سکول 15ستمبرسے ہی کھلیں گے۔مراد راس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کی صورتحال بہتر ہونے پر پنجاب بھر کے سرکاری اور نجی اسکولز 15ستمبرسے کھلیں گے۔ اسکول کھولنے کا دارومدار کورونا وبا پر قابو پانے کی صورت میں ممکن ہے۔اس حوالے سے کورونا ایس او پیز مکمل تیار ہیں۔کورونا ایس او پیز کے حوالے سے والدین کو جلد آگاہ کیا جائے گا۔مراد سے مزید کہا کہ پندرہ ستمبر سے قبل سکول کھلنے کی تمام تر خبریں بے بنیاد ہیں۔یہاں پر یہ امر بھی قابلِ ذکر ہے کہ پرائیویٹ سکولز فیڈریشن نے 15 اگست سے سکول کھولنے کا اعلان کیا۔ پرائیویٹ سکولزفیڈریشن اور چیئرمین آل سندھ پرائیویٹ سکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن نے حکومت سے فوری تعلیمی ادارے کھولنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بندش سے کروڑوں طلبہ کا تعلیمی عمل رکا ہوا ہے۔ پرائیویٹ سکولزفیڈریشن کے صدر کاشف مرزا کا کہنا ہے کہ حکومت15اگست سے تمام سکول کھول دے اوراگرحکومت نے ایسا نہ کیا تو خودسکول کھول دیں گے۔سکول کھولنے والے اداروں کو قانونی تحفظ دیاجائے ورنہ لانگ مارچ کیا جائے گا۔ تاریخ میں آج تک کوئی حکومت تعلیم کیلئے سنجیدہ نہیں ہوئی۔ کورونا کے نام پرتعلیم کے ساتھ جوکیاگیاوہ انتہائی افسوسناک ہے۔ سکول کھولنے کے لئے ایس او پیز دئیے گئے مگر حکومت سنجیدہ نہیں۔ سکولوں کی بندش سے 5کروڑ بچے سکول جانے سے محروم ہوچکے ہیں۔ مدارس بچوں سے امتحانات لے سکتے ہیں تو حکومت کیوں نہیں لے سکتی۔