وہی ہوا جس کا ڈر تھا! ملک بھرمیں سخت ترین احتجاج اور اینٹ سے اینٹ بجانے کی دھمکی دیدی گئی

کراچی (نیوز ڈیسک )حکومت اہلسنّت کو دیوار سے لگانا چھوڑ دے ورنہ اس کے خطرناک نتائج برآمد ہونگے، ان خیالات کا اظہار تحریک محبان اعلیٰ حضرت کے صدر محمد وسیم عطاری نے مفکر اسلام قائداہلسنّت ڈاکٹر اشرف آصف جلالی کی جھوٹے مقدمے میں گرفتاری پر اپنا سخت ردعمل دیتے ہوئے کیا۔

وسیم رضا نے کہاکہ پنجاب حکومت دانستہ طور پر حالات خراب کررہی ہے اور ملک کو فرقہ وارانہ فسادات کی آگ میں جھونکنا چاہتی ہے، حکومت پنجاب ہوش کے ناخن لے اور فوری طور پر قائداہلسنّت کو رہا کرنے کے احکامات جاری کرے، بصورت دیگر عوام اہلسنّت ملک بھرمیں سخت ترین احتجاج کرتے ہوئے مخالفین کی اینٹ سے اینٹ بجادینگے۔وسیم رضا نے کہا کہ مخالف فرقے کے لوگ ہوش میں رہیں کسی میں اتنی ہمت نہیں کہ وہ مرکزاہلسنّت کی طرف میلی نظر اٹھا کر دیکھے، ہماری امن پسندی کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے ہم امن پسند ضرور ہیں مگر بزدل وبے غیرت نہیں۔ وسیم رضا کا کہنا تھا کہ صحابہ اکرام کی شان میں توہین کرنے والے سرعام گھوم رہے ہیں ان کی تقاریر نیٹ پر بطور ثبوت موجود ہیں اگر حکومت واقعی اس معاملے میں مخلص ہے تو ان گستاخوں کے خلاف کاروائی کیوں نہیں کرتی؟ خیال رہے کہ آصف جلالی کو شانِ اہلیبیت کے الزام میں جیل بھیج دیا گیا ہے، کل اشرف جلالی کو ماڈل ٹاؤن کچہری میں پیش کیا گیا جہاں پر جوڈیشل مجسٹریٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے اشرف جلالی کو جیل بھیج دیا، اس موقع پر احاطہ عدالت کے اندر اور باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی، سائلین جن کے عدالت میں کیس لگے ہوئے تھے انہیں بھی کاغذات کو چیک کرنے کے بعد ہی داخلے کی اجازت دی جارہی تھی، کسی بھی قسم کے ہنگامی حالات سے نمٹنے کے لیے قانون نافذ کرنے واللے ادارے مکمل طور پر متحرک تھے اور عدالت آنے اور جانے والے راستوں پر سخت چیکنگ کی جار ہی تھی/۔