’’ نواب آف کالا باغ ڈیم کے ساتھ سیاسی تصادم کے بعد اکرام اللہ خان نیازی ۔۔۔‘‘ عمران خان کے والد دراصل کس شخصیت کے مالک تھے؟ مجیب الرحمٰن شامی نے بلاول بھٹو کو آئینہ دکھا دیا

لاہور ( مانیٹرنگ ڈیسک) سینئر صحافی مجیب الرحمان شامی کا کہنا ہے کہ عمران خان کے والد کی پاکستان کے لیے بڑی خدمات ہیں ،انکے دادا پیشے کے لحاظ سے ڈاکٹر تھے ، ڈاکٹر عظیم نیازی کی خاندانی لحاظ سے کافی زرعی اراضی تھی، شہری جائیدادیں بھی ہیں، انکی زرعی زمین پنجاب

کے مختلف حصوں میں موجود تھی۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی مجیب الرحمان شامی کا کہنا تھا کہ عمران خان کے والد اکرام اللہ نیازی ایک اعلیٰ تعلیم یافتہ انجینئر تھے، انہوں نے اس دور میں امپریل کالج لندن سے ایم ایس سی کی ڈگری حاصل کی تھی، اکرام اللہ نیازی بڑے ذہین، دیانتدار اور با اصول شخص تھے، جس وقت نواب آف کالا باغ کی حکومت تھی اور جس وقت انکی حکومت کا سیاسی تصادم ہوا۔ کیونکہ اکرام اللہ خان نیازی اور انکے بڑے بھائی محترمہ فاطمہ جناح کے حامی تھے، انہوں نے فاطمہ جناح کا پرچم اُٹھایا ہوا تھا، نواب آف کالا باغ ڈیم سے متصادم کے بعد اکرام اللہ نیازی نے استعفیٰ دیا تھا۔ مجیب الرحمان شامی کا مزید کہنا تھا کہ بالکل بھی ان پر کسی قسم کا کوئی چارج نہیں تھا، وہ خود مستعفی ہوئے، اگر اکرام اللہ نیازی بد دیانت تھے تو پھر مجھے اس ملک میں دیانتدار کو ڈھونڈنے کے لیے کسی دور بین کی ضرورت پڑے گی، اس لیے بلاول بھٹو اور پیپلز پارٹی سے میری گزارش ہے کہ الزامات کی سیاست نہ کریں، پہلے بھی پیپلز پارٹی اور سعید غنی صاحب الزام لگا چکے ہیں، اس لیے میری دست بدستہ گزارش ہے کہ عمران خان سے سیاسی طور پر نمٹیں ، انکے والد اکرام اللہ نیازی کو الزامات سے دور رکھیں کیونکہ اکرام اللہ نیازی سیاست کا حصہ نہیں تھے۔ مجیب الرحمان شامی کا مزید کیا کہنا تھا ؟ ویڈیو آپ بھی دیکھیں :