’’ مارچ میں تبدیلی آجائے گی۔۔‘‘ چوہدری شجاعت حسین کی جانب سے یہ یقین دہانی کسے کرائی گئی، کیا عمران خان واقعی گھر جانے والے ہیں؟ تہلکہ خیز انکشافات

لاہور(نیوز ڈیسک )جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ چودھری شجاعت کو پورا بیان دینا چاہیے تھا، چودھری شجاعت نے کہا تھا کہ مارچ میں تبدیلی آئے گی، چودھری صاحب بتائیں مارچ تک تبدیلی کی بات کہاں چھپ گئی؟ ۔ انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چودھری شجاعت

نے ہم سے مذاکرات کیے اور ہماری سنجیدگی کی تعریف بھی کی ، ہماری وجہ سے اسلام آباد خون خرابے سے بچا۔انہوں نے کہا کہ چودھری شجاعت کو پورا بیان دینا چاہیے تھا۔ چودھری شجاعت کے ذریعے معاملہ طے پایا تھا۔ چودھری شجاعت نے کہا تھا کہ مارچ میں تبدیلی آئے گی، چودھری شجاعت بتائیں مارچ تک تبدیلی کی بات کہاں چھپ گئی؟ انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم پر پیپلزپارٹی کا مئوقف واضح ہے۔آصف زرداری اور بلاول سے اچھی بات چیت ہوئی۔دونوں سے ملاقات میں بہت سے سیاسی معاملات پر بات چیت ہوئی۔ کراچی میں لوڈشیڈنگ بہت زیادہ ہو رہی ہے۔ تمام اپوزیشن جماعتیں متفق ہیں کہ یہ حکومت جعلی ہے۔پاکستان کی معیشت آج بیٹھ چکی ہے۔ سانحہ بلدیہ اور عدالت اس پر کوئی فیصلہ دے سکتی ہے۔ دھاندلی کے ذریعے ناجائز حکومت قوم پر مسلط کی گئی ہے۔


واضح رہے جمیعت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان ایک بار پھر حکومت مخالف تحریک کیلئے متحرک ہوگئے ہیں۔مسلم لیگ ق کے سربراہ چودھری شجاعت حسین نے بھی سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان کو ملاقات کی دعوت دے دی ہے، دونوں سیاسی رہنماؤں میں جلد گجرات میں ملاقات متوقع ہے۔ اسی طرح مولانا فضل الرحمان نے پیپلزپارٹی ، مسلم لیگ ق، مسلم لیگ ن اور ایم کیوایم سمیت دیگر جماعتوں کے قائدین سے ٹیلیفونک رابطے کیے ہیں۔