گینگ ختم لیکن بھتہ چالو ۔۔۔ کراچی میں اب پولیس والے بھتہ اکٹھا کرنے لگ گئے ، بڑی گرفتاریاں

کراچی(ویب ڈیسک) شہر قائد میں بھتہ خوری کے الزام میں 4 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا۔اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق کراچی کے علاقے الآصف اسکوائر کے قریب بھتہ خوری کے الزام میں سچل تھانے کے 4 اہلکاروں کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا گیا۔ذرائع کے مطابق جرائم کی سرپرستی


کرنے کے الزام میں ایس ایچ او صفدر عباسی کو بھی ہٹا دیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق مقدمے میں تین کانسٹیبل سمیت ہیڈ کانسٹیبل کے نام شامل ہیں، چاروں اہلکار غیرقانونی سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔واضح رہے کہ رواں سال اپریل میں کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں ایس آئی یو پولیس اور حساس ادارے نے کامیاب کارروائی کرتے ہوئے بھارتی خفیہ ایجنسی را کے لیے کام کرنے والے کراچی پولیس کے اے ایس آئی کو گرفتار کیا تھا۔پولیس حکام کا کہنا تھا کہ اے ایس آئی شہزاد پرویز شاہراہ فیصل تھانے میں تعینات تھا، گرفتار پولیس اہلکار ٹارگٹ کلرز ٹیم کا اہم رکن ہے، ملزم ایم کیو ایم لندن سے وابستہ ہے۔پولیس کا کہنا تھا کہ گرفتار پولیس اہلکار شہزاد پرویز کے قبضے سے 2 دستی بم بھی برآمد ہوئے تھے۔پولیس چیف نے جے آئی ٹی کے لیے محکمہ داخلہ سندھ کو درخواست لکھی تھی، گرفتار اے ایس آئی شہزاد پرویز نے دوران تفتیش سنسنی خیز انکشافات کیے تھے۔