سب سے زیادہ کورونا سے متاثر ہونے والا چین اب کون سے نمبر پر آگیا اور پاکستان کا کون سا نمبر ہے؟ حیرت کے جھٹکے کے لیے تیار ہو جائیں

بیجنگ (ویب ڈیسک) کورونا کی وبا دسمبر 2019 میں چین کے شہر ووہان سے شروع ہوئی اور اب پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے چکی ہے۔ چین نے بہترین حکمت عملی اور عوام کے تعاون سے اس وبا پر بڑی حد تک قابو پالیا جبکہ باقی دنیا ابھی تک اس سے نمٹنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔

چین میں ہفتہ کے روز کورونا کے صرف 11 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کے بعد کورونا کے کیسز کی مجموعی تعداد 83 ہزار 75 ہوگئی ہے۔ چین میں ہفتہ کو رپورٹ ہونے والے کیسز کے بعد دارالحکومت بیجنگ میں سکول ، شاپنگ مالز اور بڑی مارکیٹیں بند کردی گئیں ہیں۔کورونا وائرس چین سے شروع ہوا تھا لیکن چین نے اس پر بڑی حد تک قابو پالیا ہے ، مجموعی کیسز کے اعتبار سے طویل عرصہ تک پہلے نمبر پر رہنے والا چین اب 19 ویں نمبر پر آگیا ہے جبکہ کئی ایسے ممالک بھی چین سے آگے ہیں جن کی آبادی کروڑوں میں بھی نہیں ہے۔دوسری جانب پاکستان میں کورونا تیزی سے پھیلتا جارہا ہے۔ ہفتہ کے روز پاکستان میں ساڑھے 6 ہزار کے قریب کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کی وجہ سے مجموعی کیسز کی تعداد ایک لاکھ 32 ہزار سے بڑھ گئی ہے۔ تیزی سے بڑھتے ہوئے کیسز کے ساتھ پاکستان دنیا میں کورونا سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک کی فہرست میں بھی اوپر جارہا ہے، اس وقت پاکستان کورونا سے متاثر ہونے والا دنیا کا 15 واں بڑا ملک ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لک بھر میں کووڈ19 صورتحال اور ایس او پیز پر عمل درآمد کے حوالے سے جائزہ اجلاس ہوا، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر میں جاری اجلاس کی صدارت وفاقی وزیر اسد عمر نے کی،اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے مْلک کے مختلف حصوں میں ہیلتھ گائیڈ لائینز پر عمل درآمد یقینی بنانے کے لیے کاروائیاں جاری ہیں،ٹیسٹنگ، ٹریسنگ اور کورنٹائن حکمت عملی کے تحت 308600 کی آبادی کے لیے 1292 مقامات پر سمارٹ لاک ڈاؤن لگایا گیا،ایس او پیز کی سب سے زیادہ خلاف ورزی خیبرپختونخوا جبکہ سب سے کم گلگت و بلتستان میں ریکارڈ کی گئی۔تفصیلات کے مطابق نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر میں ہونے والے اجلاس میں مْلک بھر میں جاری ایس او پیز کی خلاف ورزیوں پر ہونے والی کاروائیوں پر بریفنگ دی گئی اور بتایا گیا کہ اسلام آباد میں 255 خلاف ورزیاں, 44 ہوٹلز, 7 کارخانے, 22 ورکشاپس, 42 گاڑیاں اور 120 دکانیں سیل جرمانے عائدکئے گئے۔آزاد کشمیر میں 1037 خلاف ورزیاں 170 گاڑیاں اور 163 دکانیں سیل جرمانے عائدکئے گئے۔گلگت بلتستان میں 231 خلاف ورزیاں, 15 کارخانے, 83 گاڑیاں اور 37 دکانیں سیل جرمانے عائد کئے گئے۔خیبرپختونخوامیں 5798 خلاف ورزیاں،122 گاڑیاں اور 239 دکانیں سیل وجرمانے عائدکئے گئے۔پنجاب میں3753خلاف ورزیاں,9 کارخانے,776 گاڑیاں اور820دکانیں سیل جرمانے عائدکئے گئے۔سندھ میں 1306 خلاف ورزیاں, 1کارخانہ,217گاڑیاں اور 81دکانیں سیل جرمانے کئےگئے۔بلوچستان میں736 خلاف ورزیاں,ایک کارخانہ,217 گاڑیاں اور 81 دکانیں سیل وجرمانے کئے گئے۔