بریکنگ نیوز: بینظیر کیخلاف متنازع ٹوئٹس۔۔!!! امریکی شہری سنتھیا رچی ایک اور بڑی مشکل میں پھنس گئیں، عدالت سے بڑا حکم آگیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) اسلام آباد کی سیشن کورٹ نے سابق وزیرعظم بینظیر بھٹو پر الزامات سے متعلق بیان پر امریکی شہری سنتھیا رچی کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست پر سنتھیا رچی کو نوٹس جاری کر دیا ہے۔ اسلام آباد کے ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے امریکی شہری سنھتیا ڈی رچی

کے خلاف پیپلز پارٹی اسلام آباد کے صدر شکیل عباسی ایڈوکیٹ کی جانب سے دائر مقدمہ اندراج کی درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار کی جانب سے ریاست علی آزاد ایڈوکیٹ پیش ہوئے جب کہ ایف آئی اے کی جانب سے تحریری جواب جمع کرایا گیا کہ شکیل عباسی نے مقدمہ اندراج کی درخواست دی تو انہیں وضاحت کی گئی تھی کہ وہ متاثرہ فریق نہیں، قانون کے مطابق صرف متاثرہ شخص یا اس کا سرپرست ہی یہ شکایت داخل کر سکتے ہیں، شکیل عباسی اس معاملے میں شکایت کنندہ بن کر مقدمہ درج کرانے کا حق نہیں رکھتے۔ ریاست علی آزاد ایڈوکیٹ نے کہا اس سے متعلق قانون واضح ہے، اس نکتے پر عدالت کی معاونت کروں گا، بینظیر بھٹو کے خلاف نازیبا ٹویٹ سے پیپلز پارٹی کا ہر کارکن متاثرہ فریق ہے۔ پی ٹی اے کے ڈی جی لا نے کہا اس کیس کے حوالے سے کوئی نوٹس موصول نہیں ہوا، میڈیا سے ملنے والی معلومات کے تحت آج اپنے طور پر عدالت آئے ہیں، عدالت نے کہا یہ معاملہ سپریم کورٹ تک جا سکتا ہے، آپ کو درخواست میں فریق بنایا گیا ہے تو جواب بھی داخل کرا دیں ۔ عدالت نے پی ٹی اے کی جواب داخل کرانے کے لیے مہلت کی استدعا منظور کرتے ہوئے سنتھیا ڈی رچی کو بھی نوٹس جاری کر دیا کیس کی مزید سماعت 13 جون تک ملتوی کر دی گئی۔ اسلام آباد پولیس نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کے خلاف مقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا جب کہ ایف آئی اے نے بھی اندراج مقدمہ کے لیے دائر درخواست خارج کرنے کی استدعا کردی۔
پیپلز پارٹی اسلام آباد کے صدر افتخار شہزادہ نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کے خلاف مقدمے کے اندراج کے لیے رجوع کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق اسلام آباد پولیس کے لیگل سیکشن کا کہنا ہے کہ سنتھیا رچی بظاہر تعزیرات پاکستان کے سیکشن 500 کے تحت بے نظیر بھٹو کی توہین کی مرتکب ہوئی۔ لیگل سیکشن کے مطابق سنتھیا رچی کے خلاف کارروائی وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے دائرہ کار میں آتی ہے۔