حکومت کا شاندار اقدام۔!!! وفاقی بجٹ 2020-21میں 695 اشیا کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی بڑھانے، ریگولیٹری ڈیوٹی لگانے کا فیصلہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وفاقی بجٹ 2020-21 میں 695 اشیا کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی کی شرح میں اضافہ کرنے اورریگولیٹری ڈیوٹی بھی عائد کرنے کا اصولی فیصلہ کیا گیا ہے ۔ انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ نے 695 نئی صنعتی اشیا کی ایک فہرست مرتب کر کے ایف بی آر کو ارسال کر دی ،

جس میں مقامی صنعتوں کی پیداوار کو تحفظ دینے کیلئے ان اشیا کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی کی شرح بڑھانے اور ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کرنے کی سفارش کی گئی ہے ۔ اس سے درآمدات کی مد میں بھاری زرمبادلہ کی بچت بھی ہوسکے گی۔ان اشیا میں گلاس شیل، سیلف پرمنگ، سینیٹری فیوج، ہائی پریشر پمپ، ڈیجیٹل پرنٹنگ انک، بال پوائنٹ پین انک، انجیکٹ انک، پنسل شارپنر، بال پوائنٹ پین، مارکر، فائن لائنر پین، فلوٹنگ پیپر، رائٹنگ اور پرنٹنگ پیپر، گلیو سٹک، ایتھائل، میتھائل، سیبٹول ایسی ٹیٹ، ڈبل سٹڈڈ اڈاپٹر، ڈرلنگ سپول، ویکس ایملشن، ایل ای ڈی لائٹس اوربلب، پینٹس اور وارنش، ویلڈنگ راڈ، لیکویڈ آکسیجن، لیکویڈ نائٹروجن، کلیئر گلاس ٹیوب، کولڈ رولڈ کوائل، سٹیل بلڈنگ سٹرکچر، سٹیل اور آئرن کے ٹینک، سٹیل ویسل، پریشر ویسل فار ایل پی جی، ویسٹ ہیٹ ریکوری بوائلر، ہیٹ ریکوری سٹیم جنریٹر، گنے سے پٹرول بنانے کے ایتھانول پلانٹس اور پرزہ جات، ایبزاربشن ٹاور، شوگر پلانٹس اور پرزہ جات، گیس فیول کنڈیشننگ سکڈ، کار ویکس، کار شیمپو، ہیٹنگ ایکسچینج یونٹ، کولڈ سٹوریج کے پینل، کولڈ روم اور کولڈ سٹوریج کے ریفریجریشن یونٹ، ایواپوریٹر ، کنڈنسر، کاپر راڈ، کمبائنڈ سائیکل پاور پلانٹ، مصنوعی کپاس ، مین میڈ فلمنٹ یارن، بجلی کے دھاتی تار ، میٹر سکیورٹی باکس، گیس میٹر، کچن ہڈ، واٹر ڈسپنسر، الیکٹرک واٹر ٹریٹمنٹ، انسٹنٹ واٹر ہیٹر، ہائیڈرالک پمپ، بیلنس یونٹ، شافٹ، سپر گیئر، مائیکرو ویو اوون، رنگ گیئر، سیم لیس سٹیل پائپ لائن، پاور میئرمنٹ ٹول، سمارٹ جی پی آر ایس ٹرمینل،ڈی سی پاور کنٹرولر، کمپیوٹر اورپرزہ جات، جپسم پائوڈر پلاسٹر آف پیرس، الائیڈ ایلومینیم وائر راڈ، ایم وی کیبل، اے بی سی کیبل، سولر کیبل، جنرل ہائوس وائرنگ، ٹیلی فون کیبل، بجلی کے میٹر، چاول پالش کرنے والی مشینیں ، پورٹ لینڈ سیمنٹ،سوپ نوڈل اور دیگر اشیا شامل ہیں۔