معمول سے زیادہ بارشیں اور ژالہ باری ۔۔!! 2020ء میں مون سون کا آغاز کب سے ہونے جا رہا ہے؟ محکمہ موسمیات نے پاکستانیوں کو آگاہ کر دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) محکمہ موسمیات نے جولائی سے ستمبر کے دوران معمول سے زیادہ مون سون بارشوں کی پیشن گوئی کر دی ہے۔ اس حوالے سے محکمہ موسمیات کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ اس بار ملک میں مون سون بارشیں معمول سے 10 فیصد زیادہ ہوں گی جبکہ کشمیر اور سندھ میں

بارشیں معمول سے 20 فیصد زیادہ ہو سکتی ہیں۔ محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ پاکستان میں جولائی تا ستمبر اب تک معمول کی بارشیں 140 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی ہیں، اس سال معمول سے زیادہ بارشوں کی صورت میں ملک کے مشرقی دریاؤں میں سیلابی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے اور بڑے شہروں میں اربن فلڈنگ کا خطرہ ہے۔محکمہ صحت کی جانب سے جاری کردہ اعلانیہ میں بتایا گیا ہے کہ اس سال ہونے والی بارشیں چاول کی فصل کے لئے مفید ہو سکتی ہیں جبکہ کپاس کی فصل کو اس سال ہونے والی بارشوں کے نتیجے میں نقصان کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔محکمہ موسمیات نے پاور سیکٹر اور زراعت کے لئے پانی وافر مقدار میں موجود ہونے کی نوید بھی سنائی ہے جبکہ ساتھ ہی اس حوالے سے بھی خبردار کر دیا ہے کہ مون سون کے درمیان پیدا ہونے والا موسم ٹڈیوں کی افزائش کے لئے موزوں ماحول فراہم کرے گا جس سے نقصان بھی اٹھانا پڑ سکتا ہے۔خیال رہے کہ اس وقت ملک بھر میں موسم گرما کا آغاز ہو چکا ہے۔ چونکہ لوگ کورونا کی وجہ سے باہر کم نکل رہے ہیں، اس لئے فضائی آلودگی کم ہونے کی وجہ سے اس سال لوگوں پر موسم کے اثرات نہیں پڑ رہے۔ لیکن اب موسم کے حوالے سے محکمہ موسمیات نے پیشن گوئی کر دی ہے جس کے مطابق اس سال مون سون کی بارشیں معمول سے زیادہ ہوں گی۔ بتایا گیا ہے کہ اس بار ملک میں مون سون بارشیں معمول سے 10 فیصد زیادہ ہوں گی جبکہ کشمیر اور سندھ میں بارشیں معمول سے 20 فیصد زیادہ ہو سکتی ہیں۔