بھارت میں سکھوں کے خالصتان کے حق میں مظاہرے شروع!!! سکھوں کا بھارتی پرچم نزر آتش کرنے کا اعلان، اپنی کرنسی نکال لی

امرتسر (ویب ڈیسک) بھارت میں خالصتان تحریک مزید مضبوط ہوتی چلی جا رہی ہے اور اپنے آخری مراحل میں داخل ہوگئی ہے، 6 جون کو بڑا جمے غفیر نکلنا طے شدہ ہے۔ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو خفیہ ایجسنیوں نے اطلاعات پہنچائی ہیں کہ آنے والےدنوں میں کیا ہونے والا ہے؟۔

نجی ٹی وی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رانا عظیم نے انکشاف کیا کہ بھارت ٹوٹ گیا، اس سے زیادہ پریشانی نریندر مودی، آر ایس ایس،اسرائیل، سی آئی اے اُن تمام قووتوں جو بھارت کو آگے لگا کرسب کچھ کرنا چاہتی تھی، پوری دنیا پر راج کرنا چاہتی تھی، خاص کر بھارت کو چوہدری بنانا چاہتی تھی، ان سب کیلئے بڑی مشکل کھڑی ہوچکی ہے۔ بھارت میں 3 ایسے صوبے ہیں جہاں پر علیحدگی کی تحریکیں کامیاب ہوچکی ہیں، اس کے علاوہ بھارت میں کئی تحریکیں تاحال چل رہی ہیں۔ رانا عظیم نے بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت مکمل طور پر ناکام ہوگیا ہے، بھارت کو آخری چوٹ خالصتان کے حصول کے لیے تحریک چلنے کی صورت میں لگی ہے۔ خالصتان تحریک کو لے کر چلانے والی سکھ برادری نے 2020ء میں یہ فیصلہ کیا تھا کہ “ہم خالصتان لے کر رہیں گے”۔ رانا عظیم دعوے سے کہا کہ یہ تحریک اپنے منتقی انجام تک پہنچ رہی ہے۔ بھارت کی خفیہ ایجنسیوں نے باقاعدہ طور پر نریندر مودی کو رپورٹ دی ہے کہ “خالصتان کی تحریک ،بھارتی مسلمانوں کی تحریک، علیحدگی پسند ریاستوں کی تحریک، مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی تحریک کسی صورت میں بہ زور طاقت نہیں روکی جاسکتی۔ یہ بھی لکھا گیا ہے کہ کشیدہ حالات کی وجہ نریندر مودی کے جنونی پن کے باعث ہوا ہے۔ رانا عظیم نے مزید بتایا کہ سکھوں نے تمام دکانوں پر خالصتان کی کرنسی کی تصاویر لگا دی ہیں۔ تمام سکھ افسران نے اپنے آئی ڈیز پر خالصتان لکھ دیا ہے۔ مودی نے آر ایس ایس اور فوج کا ہدایات کی ہے کہ ان تمام تحریکوں کو فوری طور پر روکا جائے۔ خالصتان کے مذہبی رہنماؤں نے واضح اعلان کردیا ہے کہ 6 جون کو بھارت کا پرچم نزر آتش کیا جائے گا۔