بریکنگ نیوز: چاند نظر آگیا۔۔۔!!! ملک بھر میں‌ عید الفطر کل منائی جائے گی

کراچی(ویب ڈیسک)پاکستان میں ماہِ شوّال 1441 ہجری کا چاند نظر آگیا ہے، مفتی منیب الرحمان نے اعلان کیا ہے کہ ملک بھر میں کل یعنی 24 مئی کو عید منائی جائے گی۔اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق ماہ شوال کا چاند دیکھنے کے لیے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس مفتی منیب الرحمان کی زیرصدارت کراچی میں ہوا جس میں رویت ہلال کمیٹی کے ارکان،

زونل کمیٹی ممبران اور نیوی کےماہرین بھی شریک ہوئے۔ رویت ہلال کمیٹی کی تکنیکی معاونت کیلئے محکمہ موسمیات سپارکو کے ارکان بھی اجلاس میں موجود تھے۔کوئٹہ، اسلام آباد، پشاور، لاہور، سمیت دیگر علاقوں میں رویت ہلال کمیٹی کی زونل کمیٹیوں کا اجلاس بھی ہوا جس میں مختلف علاقوں سے شہادتیں وصول کی گئیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق ملک کے بیشتر علاقوں مین مطلع صاف ہے، چاند نظر آنے کا وقت 7 بج کر 55 منٹ سے 8 بج کر 9 منٹ تک ہے۔اجلاس کے بعد چیئرمین رویت ہلال کمیٹی کے چیئرمین نے اعلان کیا کہ ملک بھر میں مطلع صاف تھا، بلوچستان کے مختلف علاقوں، راولپنڈی اور سندھ کے کچھ علاقوں سے چاند کی شہادات موصول ہوئیں۔انہوں نے اعلان کیا کہ ماہ شوّال 1441 ہجری کا چاند نظر آگیا، کل بروز اتوار 24 مئی کو پاکستان بھر میں عید منائی جائے گی۔چمن سے عید کا چاند دیکھنے سے متعلق 3 شہادتیں موصول ہوئی جبکہ گوادار کے علاقے پسنی میر رحمت محلہ میں بھی مسجد کے پیش امام سمیت متعدد لوگوں نے چاند نظر آنے کی شہادت دی، اسی طرح گلگت بلتستان کے علاقے طورو رسک میں چار افراد نے چاند دیکھنے کی شہادت دی۔بلوچستان سے منتخب ہونے والے سینیٹر کہدہ بابر کا اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’پسنی سے لے کر جیونی تک چالیس سے پچاس افراد نے چاند دیکھنے کی شہادت دی، پسنی کےپیش امام مسجد نے بھی چاند دیکھا اور کل عیدکا اعلان کردیا ہے، لوگ2،3گھنٹےسے رویت ہلال کمیٹی سے رابطے کی کوشش کررہے ہیں۔اُن کا کہنا تھا کہ زونل کمیٹی کاایک ہی نمبرہےاس پربھی رابطہ نہیں ہورہا، پسنی،جیونی کےلوگ چاندکی شہادتیں دیناچاہتے ہیں، وہ ایسی صورت میں کس سے رابطہ کریں؟۔یاد رہے کہ اس سے قبل وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری اعلان کرچکے ہیں کہ سائنسی اعتبار سے چاند کی پیدائش آج ہوجائے گی اورپاکستان میں کل عید الفطر منائی جائے گی جبکہ وفاقی وزیر برائے مذہبی امور وضاحت کرچکے ہیں کہ چاند کے اعلان کا حتمی اختیار رویت ہلال کمیٹی کو ہی ہے۔