پی آئی اے طیارہ حادثہ ۔۔!! حکومت نے کس غفلت کا مظاہرہ کیا؟ سلیم صافی برس پڑے ، حکومتی نااہلی کا پردہ چاک کر دیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)پی آئی اے طیارہ حادثہ ،سینئر صحافی سلیم صافی حکومت پر برس پڑے ۔ تفصیلات کے مطابق ٹوئٹر پر سلیم صافی نے لکھا کہ نااہلی اور غیرذمہ داری کی انتہا۔ کورونا کی وجہ سے پی آئی اے کے جہاز تقریباً دو ماہ گرائونڈ ہوئے تھے ۔ ذمہ داری کا احساس

ہوتا تو اس دوران جہازوں کی چیکنگ اور بحالی کا کام بخوبی کیا جاسکتا تھا لیکن حادثے سے لگتا ہے کہ اس عرصے میں جہازوں کو ہاتھ نہیں لگایا گیا۔انہوں نے مزید لکھا کہ تبدیلی سرکارکاالمیہ یہ ہےکہ ہرفرد اورادارہ اپنا کام چھوڑکردوسرےکاکام کرنے لگاہے۔ہوابازی کےوزیر سرورخان ہیں لیکن خلوتوں میں بتاتے ہیں کہ ان کی وزارت کےاصل معاملات زلفی بخاری چلارہے ہیں۔کہتے ہیں کہ چیرمین کی تقرری سےبھی انکا کوئی تعلق نہیں۔یہی وجہ ہےکہ آج وزیرنظر ہی نہیں آئے ْدوسری جانب حسن اقبال نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں لکھا ”جب سے تبدیلی سرکار آئی ہے، ایک بھی خیر کی خبر نہیں۔ معیشت کریش، کرنسی کریش، صنعت کریش، زراعت کریش، برآمدات کریش، ریلوے کریش، جہاز کریش، کشمیر کریش، سی پیک کریش، امن عامہ کریش، گورننس کریش، سمندر کی گیس کریش۔۔۔ جس حکومت کی بنیاد جھوٹ، بہتان، نفرت اور تکبر پر ہو گی وہ کریش ہی ہو گی۔“

واضح رہے کہ گزشتہ روز دوپہر کو لاہور سے کراچی آنے والی پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز (پی آئی اے) کی پرواز 8303 کراچی میں لینڈنگ سے 30 سیکنڈ قبل حادثے کا شکار ہوگئی تھی۔ایوی ایشن ذرائع کے مطابق طیارے نے دوپہر 2 بج کر 40 منٹ پر جناح انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر لینڈ کرنا تھا اور لینڈنگ اپروچ پر تھا کہ کراچی ایئر پورٹ کے جناح ٹرمینل سے محض چند کلومیٹر پہلے ملیر ماڈل کالونی کے قریب جناح گارڈن کی آبادی پر گر گیا۔حادثے کے بعد جہاز میں آگ لگ گئی جس نے قریبی آبادی کو بھی لپیٹ میں لے لیا جبکہ طیارے کے مختلف حصے ٹوٹ کر آبادی میں بکھر گئے جنہوں نے مکانات کو نقصان پہنچایا تھا۔طیارے میں سوار 97 افراد کی لاشیں نکال لی گئیں جبکہ 2 مسافر اس حادثے میں محفوظ رہے۔پاک فوج، رینجرز، پولیس، سول ایوی ایشن، فائر بریگیڈ اور دیگر اداروں کی جانب سے امدادی کارروائیاں کی گئیں۔