عیدالفطر کے بعد پنجاب کابینہ میں تبدیلیوں کا فیصلہ۔۔۔ 5 وزرا کے فارغ کیے جانے کا امکان، پَکی خبر آگئی

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب کابینہ میں اکھاڑ پچھاڑ کا فیصلہ، وزیر اعلیٰ پنجاب عید کے بعد بڑے پیمانے پر مرحلہ وار تبدیلیاں کریں گے، پانچ وزراء کے سروں پر کابینہ سے فارغ کرنے کی تلوار لٹکنے لگی۔ عیدالفطر کے بعد پنجاب کابینہ میں تبدیلیوں کا فیصلہ وزیر اعلیٰ پنجاب کرچکے ہیں،

خراب کارکردگی والےوزراء سےقلمدان واپس لیے جائیں گے،ذرائع کا کہنا ہےکہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکاوزراء کی کارکردگی رپورٹس منگوانے کا مقصد بھی کابینہ کےاندر ردوبدل کرنا ہے،ذرائع کا کہنا ہےکہ چار سےپانچ وزراء کی کارکردگی سے وزیراعظم مطمئن ہیں اورنہ ہی وزیراعلی پنجاب۔ناقص کارکردگی والے وزراء کو پہلےبھی تنبیہ کی جاچکی ہے،انکے محکموں میں بہتری کی گنجائش موجود تھی لیکن نہیں کی گئی۔ ذرائع کا کہنا ہےکہ وزراء کی کارکردگی رپورٹس وزیراعظم بھی چیک کریں گے،خراب کارکردگی والے وزراء کو ایک موقع اوردینا ہےیانہیں اس کا فیصلہ بھی کیا جارہا ہے،تاہم اس پر وزیراعلیٰ پنجاب وزیراعظم سےمشاورت سےکریں گے،ذرائع کا دعویٰ ہےکہ زیادہ امکانات اسی بات کےہیں کہ کابینہ میں نئے اراکین کو موقع دیا جائےگا،5 وزراء کے سر پر تلوار لٹک رہی ہےاور انہوں نے اپنی وزارتیں بچانے کےلیےدوڑ دھوپ شروع کردی ہے،وزرانےاپنے اپنے محکموں کو رپورٹس کی تیاری کےاحکامات دے دیئے ہیں ،کارکردگی رپورٹس عید کےفورا بعد وزیراعلی کوپیش کریں گے۔ یاد رہے کہ پنجاب کے وزیر خوراک سمیع اللہ چوہدری نے وزیرِ اعلیٰ سردار عثمان بزدار سے ملاقات کے بعد اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیاتھا۔وزیرِ اعلیٰ پنجاب کی جانب سے ان کا استعفیٰ منظور کر لیا گیاتھا۔ جبکہ وزیرِ اعلیٰ نے نسیم صادق کی کمشنر ڈیرہ غازی خان کے عہدے سے علیحدہ کرنے کی درخواست بھی قبول کرتے ہوئے انھیں او ایس ڈی بنا دیا۔ نسیم صادق نے ایف آئی اے رپورٹ آنے کے بعد عہدے سے الگ کرنے کی درخواست کی تھی۔دریں اثنا پنجاب کے سابق ڈائریکٹر فوڈ ظفر اقبال کو بھی او ایس ڈی بنا دیا گیا ہے۔ وفاقی کابینہ میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں کی گئیں اور کئی وفاقی وزراء بشمول مخدوم خسرو بختیار اور حماد اظہر کے قلمدان تبدیل کر دیے گئے تھے۔وفاقی وزیر برائے فوڈ سیکیورٹی خسرو بختیار سے ان کا قلمدان واپس لے کر سید فخر امام کو دے دیا گیا تھا۔حماد اظہر جو اب تک وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور تھے، انھیں وزارتِ صنعت و پیداوار جبکہ حماد اظہر کا اقتصادی امور کا قلمدان اب خسرو بختیار کو دے دیاگیا۔