بریکنگ نیوز: عوام متوجہ ہوں۔!!! لاک ڈاؤن نے نرمی آتے ہی حکومت نے اہم ترین سرکاری ادارے میں بھرتیوں کا اعلان کر دیا

لاہور (ویب ڈیسک) وزیر اعلی پنجاب کی خواہش پر ڈیرہ غازی خان ریجن میں 565پولیس اہلکار بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اہلکاروں کی بھرتی کے لئے چار اضلاع میں نئی سیٹیں پیدا کی گئی ہیں جن پرسب انسپکٹرز، اسسٹنٹ سب انسپکٹرز، ہیڈ کانسٹیبل اور کانسٹیبل بھرتی کیے جائیں گے ،

بھرتیوں پر اخراجات کا تخمینہ 32کروڑ 60لاکھ لگایا گیا ہے ۔ انسپکٹر جنرل پولیس نے ایوان وزیر اعلی کی خواہش پر وزیر اعلی پنجاب کو سمری بھیجی جس میں موقف اپنایا کہ ڈیرہ غازی خان کے علاقے سندھ اور بلوچستان کے ساتھ منسلک ہیں اور کچھ کچا کے علاقے بھی شامل ہیں،ریجن کے اضلاع میں جرائم پر قابو پانے اور لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال کنٹرول کرنے کے لئے محکمہ پولیس میں 1130نئی پوسٹیں پیدا کی جائیں جن پر 65کروڑ 20لاکھ کے اضافی اخراجات آئیں گے ۔ محکمہ داخلہ کے ایک اہلکار نے بتایا انسپکٹر جنرل پولیس کی سمری پرمحکمہ خزانہ کی تجویز لی گئی جس نے وزیر اعلی پنجاب کو سفارشات بھجوائیں کہ 1130اہلکاروں کی بجائے 565 نئی پوسٹیں پیدا کرکے بھرتی کی جاسکتی ہے جس پر اخراجات کا تخمینہ 32کروڑ 60لاکھ ہے ۔ وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار نے معاملے کو سٹینڈنگ کمیٹی برائے خزانہ و ترقیات میں رکھنے کا حکم دیا جس پر کمیٹی نے 565 نئی اسامیوں کی منظوری دے دی ۔ منظوری میں کہا گیا محکمہ پولیس اپنے موجودہ بجٹ سے تمام اخراجات پورے کریگا۔ سب انسپکٹرز، اسسٹنٹ سب انسپکٹرز کی بھرتی پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے جبکہ ہیڈ کانسٹیبل اور کانسٹیبل کی بھرتی اضلاع کے ڈسٹرکٹ پولیس افسران کریں گے ۔کمیٹی کی سفارشات حتمی منظوری کے لئے وزیر اعلی کو بھجوا دی گئیں،منظوری ہوتے ہی محکمہ خزانہ نئی اسامیاں پیدا کرنے کا حکمنامہ جاری کرے گا اور بھرتی کا عمل بھی جلد ہی شروع ہوجائے گا۔